کابل میں اغوا بنگالی خاتون جورتھ ڈی سوزا بازیاب ، اہل خانہ نے سشما کو کہا شکریہ

مرکزی وزیر خارجہ سشما سوراج نے آج صبح ٹویٹر پر ڈیسوزا کی رہائی کی اطلاع دیتے ہوئے کہا جی مجھے یہ اطلاع دیتے ہوئے خوشی ہورہی ہے کہ جوڈتھ ڈیسوزا کو رہا کرا لیا گیا ہے ۔ان کی رہائی میں تعاون کےلئے شکریہ افغانستان

Jul 23, 2016 12:50 PM IST | Updated on: Jul 23, 2016 01:19 PM IST
کابل میں اغوا بنگالی خاتون جورتھ ڈی سوزا بازیاب ، اہل خانہ نے سشما کو کہا شکریہ

نئی دہلی : کلکتہ کی رہنی والی خاتون جورتھ ڈی سوزا جن کا 40دن قبل کابل میں اغوا ہوگیا تھا انہیں بازیاب کرالیا گیا ہے میں نے ان سے بات کی ہے اور وہ آج شام کابل میں تعینات ہندوستانی سفیرکے ساتھ دہلی پہنچ رہی ہیں۔ 40 سالہ جورتھ ڈی سوزا کابل آغاخان فاؤنڈیشن میں سینئر ٹیکنیکل ایڈوائزر کے عہدہ پر کام کررہی تھی ۔کابل میں 9جون کو دفتر کے باہر اغوا کرلیا گیا تھا۔

وزیر خزانہ جورتھ ڈی سوزا نے ٹوئیٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ مجھے یہ اطلاع دینے میں خوشی محسوس ہورہی ہے جورتھ ڈی سوزا کو بازیاب کرالیا گیا ہے ۔انہوں نے افغان انتظامیہ کا بھی تعاون کرنے پر شکریہ ادا کیا ہے ۔ ڈی سوزا کے اغوا کے بعد سے ہی ہندوستانی انتظامیہ مسلسل افغانی حکام کے رابطے میں تھی ۔مرکزی وزیر خارجہ سشما سوراج نے افغان میں مقرر ہندوستانی سفیر من پریت کا شکریہ ادا کیا ہے۔ سشما سوراج نے آج صبح ٹویٹر پر ڈیسوزا کی رہائی کی اطلاع دیتے ہوئے کہا جی مجھے یہ اطلاع دیتے ہوئے خوشی ہورہی ہے کہ جوڈتھ ڈیسوزا کو رہا کرا لیا گیا ہے ۔ان کی رہائی میں تعاون کےلئے شکریہ افغانستان۔

جوڈتھ ڈی سوزا کی رہائی کی خبر ملنے کے بعدڈی سوزا کے اہل خانہ نے حکومت ہند کا شکریہ اداکرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ حکومت کی کوششوں کا ہی نتیجہ ہے ۔ جوڈتھ ڈی سوزا کی بہن اگنیس نے کہا کہ ہم حکومت ہند کا شکریہ اداکرتے ہیں اس نے ہماری بہن کو بازیاب کرالیا ہے ۔اب ہم اس کی واپسی کا انتظار کررہے ہیں ۔اس کے ساتھ ہی میڈیا سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ ہماری پرائیویسی کا احترام کریں ۔

جوڈتھ ڈی سوزا جو کابل میں ایک بین الاقوامی این جی او آغاخان کیلئے کام کرتی تھی کو 9جون کو اس کے دفتر سے باہر اغوا کرلیا گیا تھا۔ڈی سوزا کے اہل خانہ نے وزیرا عظم نریندر مودی کو خط لکھ کر اپیل کی تھی اس کی بیٹی کی بازیابی میں اہم مدد کریں ۔وزیر اعظم مودی نے افغان صدر اشرف غنی کو خط لکھ کر ڈی سوزا کی بازیابی کیلئے درخواست کی تھی۔ جورتھ ڈی سوزا کا خاندان 30سالوں سے کلکتہ میں مقیم ہیں ۔ڈی سوزا ایک سال قبل ہی کابل گئی تھیں ۔جس دن ان کا اغوا ہوا ہے اسی ہفتہ میں وہ ہندوستان واپس آنے والی تھیں۔

Loading...

Loading...