کرتارپورکاریڈور: کیپٹن امریندر نے ٹھکرا دی پاکستان کی دعوت، سدھو نے کہا "دوست نے بلایا ہے، ضرور جاوں گا"۔

سرحد پرپاکستان کی طرف سے ہونے والے دہشت گردانہ حملوں اورپنجاب میں پاکستان کے ذریعہ دہشت گردی پھیلائے جانے کووجہ قراردیتے ہوئے امریندرسنگھ نے پاکستان نہ جانے کافیصلہ کیا ہے۔

Nov 25, 2018 06:45 PM IST | Updated on: Nov 25, 2018 06:46 PM IST
کرتارپورکاریڈور: کیپٹن امریندر نے ٹھکرا دی پاکستان کی دعوت، سدھو نے کہا

پنجاب کے وزیراعلیٰ امریندر سنگھ نے پاکستان کی دعوت کو ٹھکرا دیا ہے۔

پاکستان میں کرتاپورکاریڈورکے افتتاحی تقریب میں ہندوستان کی طرف سے نمائندگی کو لے کرتذبذب برقرار ہے۔ وزیرخارجہ سشما سوراج پہلے ہی پاکستان کی دعوت کو مسترد کرچکی ہیں۔ وہیں پنجاب کے وزیراعلیٰ کیپٹن امریندرسنگھ نے سرحد کی دوسری جانب سے ہورہے دہشت گردانہ حملوں کی دہائی دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ پاکستان نہیں جائیں گے۔

وہیں پنجاب حکومت میں وزیرنوجوت سنگھ سدھو نے گیند وزارت داخلہ کے پالے میں ڈال دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں پاکستان جانے کے لئے پرجوش ہوں، ہم نے وزارت داخلہ سے اجازت طلب کی ہے۔ وزارت داخلہ کی جانب سے اگراجازت ملتی ہے تووہ پھروہ اس میں شرکت کریں گے۔ دراصل نوجوت سنگھ سدھو نے پاکستانی وزیراعظم عمران خان کی حلف برداری تقریب میں بھی شرکت کی تھی، جس پربی جے پی نے سخت اعتراض کیا تھا۔

Loading...

نیوز ایجنسی اے این آئی سے نوجوت سنگھ سدھو نے کہا کہ "کرتارپور کاریڈور پرسیاست نہیں ہونی چاہئے۔ میرے دوست نے بلایا ہے تومیں پاکستان ضرور جاوں گا۔" نوجوت سنگھ سدھو نے کہا "عمران خان نے کرتارپورکاریڈور پرفیصلہ لے کر12 کروڑسکھوں کا دل جیتا ہے۔ پاکستان دیرآیا، درست آیا"۔

دراصل نوجوت سنگھ سدھو اورپاکستان کے وزیراعظم عمران خان کی دوستی کافی قدیم ہے۔ کانگریس لیڈر سدھو نے عمران خان کی حلف برداری تقریب میں بھی شرکت کی تھی۔ دورے پرتنازعہ کے بعد سدھو نے دعویٰ کیا تھا کہ انہوں نے کرتارپور کاریڈور کھولنے کے لئے گزارش کی تھی۔ ان کے پاکستانی فوج کے گلے لگنے کا بھی ہندوستان کو فائدہ ملا، پاکستان نے کاریڈورکومنظوری دے دی۔

امریندرسنگھ نے بتایا کیوں نہیں جائیں گے پاکستان؟

پنجاب کے وزیراعلیٰ امریندرسنگھ نے پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کو ایک خط لکھ کرکہا کہ یہ تاریخی لمحہ ہے، لیکن انہوں نے پروگرام میں شرکت کرنے سے معذرت ظاہرکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس کی دو وجہ ہیں۔

پہلی وجہ یہ ہے کہ کوئی بھی ایسا دن نہیں ہے جب جموں وکشمیرمیں بارڈر پرہندوستانی فوجی مارے نہ جاتے یا زخمی نہیں ہوتے۔ حالات موافق کرنے کی راہ پربڑھنے کے بجائے ایسے واقعات میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ وہیں دوسری وجہ بتاتے ہوئے دعویٰ کیا کہ پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی نے پنجاب میں اپنی ناپاک سرگرمی شروع کردی ہیں۔

امریندرسنگھ نے دعوی کیا "مارچ 2017 سے ریاست میں آئی ایس آئی کے 19 ماڈیول کوناکام کیا گیا، 81 دہشت گردوں کو پکڑا گیا اور79 ہتھیار، پاکستانی آرڈیننس فیکٹریوں میں بنے ایچ جی -84 ٹائپ کے دیگرگرینیڈ اورکچھ آئی ای ڈی برآمد کئے گئے ہیں۔

وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ "میں امید کرتا ہوں کہ (پاکستان کے) وزیراعظم ان حالات کو سمجھیں گے۔ میرے لئے اس تاریخی موقع پرپاکستان میں موجود رہنا ممکن نہیں ہے۔ جبکہ حقیقت یہ ہے کہ گرودوراہ کرتارپور صاحب میں سرجھکانا میرا خواب رہا ہے اورمیں امید کرتا ہوں کہ جب ایک دن قتل اوررنجشیں ختم ہوجائیں گی تومیرا یہ خواب بھی پورا ہوجائے گا"۔

یہ بھی پڑھیں:   راجستھان میں رام مندر پروزیراعظم نریندرمودی نے لب کشائی کرتے ہوئے کہا "ججوں کو ڈراتی ہے کانگریس"۔

یہ بھی پڑھیں:  زمین ایکوائرکرکے اجودھیا میں رام مندرکی تعمیرکی جائے: بابا رام دیو نے بھی چھوڑا شگوفہ

یہ بھی پڑھیں:   بی جے پی نے نہیں ’شیو سینا‘ نے گرایا تھا بابری مسجد کا ڈھانچہ: اعظم خان

یہ بھی پڑھیں:   اجودھیا معاملہ: وہ چاہتے ہیں کہ ان کے بیان پربولیں تاکہ تنازعہ کھڑا کرنے کا موقع ملے: مسلم مذہبی رہنما

Loading...