ہنی مون منانے کی وجہ سے کیدارناتھ میں آئی تھی قدرتی آفت : شنکراچاریہ

دہرادون : کیا 2013 میں تباہی اتراکھنڈ میں ہنی مون منانے کی وجہ سے آئی تھی ۔ آپ بھی سوچ رہے ہوں گے کہ آخر کار یہ ہم کیا کہہ رہے ہیں ، لیکن یہ کہنا ہے اپنے بیانات سے ہمیشہ موضوع بحث رہنے والے جيوتش پيٹھ کے شنکراچاریہ سوامی سوروپانند سرسوتی کا

Apr 13, 2016 10:22 PM IST | Updated on: Apr 13, 2016 10:22 PM IST
ہنی مون منانے کی وجہ سے کیدارناتھ میں آئی تھی قدرتی آفت : شنکراچاریہ

دہرادون : کیا 2013 میں تباہی اتراکھنڈ میں ہنی مون منانے کی وجہ سے آئی تھی ۔ آپ بھی سوچ رہے ہوں گے کہ آخر کار یہ ہم کیا کہہ رہے ہیں ، لیکن یہ کہنا ہے اپنے بیانات سے ہمیشہ موضوع بحث رہنے والے جيوتش پيٹھ کے شنکراچاریہ سوامی سوروپانند سرسوتی کا۔ یہی نہیں سوامی نے لوگوں سے اپیل بھی کی ہے کہ وہ اگر اتراکھنڈ آئیں ، تو موج مستی کے لئے قطعا نہ آئیں۔

سوامی سوروپانند نے کہا ہے کہ اتراکھنڈ میں 2013 میں تباہی بھی اسی وجہ آئی، کیونکہ لوگ یہاں عقیدت کی وجہ سے کم اور ہنی مون منانے زیادہ آ رہے تھے، جس کا خمیازہ اتراکھنڈ بھگت چکا ہے۔

سوامی نے کہا کہ یہاں لوگ آکر شراب پینے لگے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ یہاں کے مذہبی عقیدے سے کھلواڑ نہ کیا جائے۔ اس لئے انہوں نے لوگوں سے کہا ہے کہ وہ یہاں عقیدت سے آئیں، جس سے کیدار بابا بھی خوش رہیں گے۔ ساتھ ہی ساتھ فائدہ بھی ملے گا۔ سوروپانند نے گنگا میں بن رہے ڈیموں کو بھی قدرتی آفت کی بنیادی وجہ قرار دیا ۔

شنکراچاریہ نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا کہ دہرادون کے جوليگراٹ ہوائی اڈے کا نام بدل کر ادی گرو شنکراچاریہ کریں ، کیونکہ اتراکھنڈ میں چاروں مٹھوں کا قیام اور اتراکھنڈ کی بنیاد بھی انہیں کے ذریعہ رکھی گئی تھی۔

Loading...

Loading...