عدالت اگر سونپ دے تو 24 گھنٹے میں نکال لیں گے رام مندر متنازعہ کا حل: یوگی آدتیہ ناتھ

وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ اب رام مندر تعمیر کے مسئلہ پر لوگوں کا صبر جواب دے رہا ہے ۔

Jan 26, 2019 10:50 PM IST | Updated on: Jan 26, 2019 11:44 PM IST
عدالت اگر سونپ دے تو 24 گھنٹے میں نکال لیں گے رام مندر متنازعہ کا حل: یوگی آدتیہ ناتھ

یوگی آدتیہ ناتھ ۔ فائل فوٹو

اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ اب رام مندر تعمیر کے مسئلہ پر لوگوں کا صبر جواب دے رہا ہے ۔ اگر سپریم کورٹ اس کا حل نہیں نکال پا رہی ہے تو یہ ذمہ داری ہمیں سونپ دے، ہم محض 24 گھنٹے میں اس مسئلہ کو حل کر دیں گے۔ انہوں نے ایک ٹی وی چینل کو دئے انٹرویو میں یہ بیان دیا ہے۔

جب وزیر اعلی یوگی سے پوچھا گیا کہ آپ رام مندرمتنازعہ کو کیسے حل  کریں گے؟ بات چیت سے یا طاقت کا استعمال کر کے؟ پوچھے گئے سوال پر یوگی مسکرائے اور کہا،  پہلے سپریم کورٹ ہمیں یہ معاملہ سونپ تو دے۔

Loading...

انڈیا ٹی وی کو دئے ایک انٹرویو میں یوگی نے کہا، ’’ میں ابھی بھی سپریم کورٹ سے اپیل کرتا ہوں کہ اس متنازعہ کا جلد سے جلد فیصلہ کر دیں۔ 30 دسمبر کو آئے الہ آباد ہائی کورٹ بینچ کے فیصلہ نے یہ واضح طور پر کہا تھا کہ بابری ڈھانچہ کو ایک ہندو مندر کو منہدم کر کے بنایا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ میں سپریم کورٹ سے گزارش کرتا ہوں کہ ہمیں جلد انصاف دیا جائے۔ اس معاملہ سے کروڑوں لوگوں کا عقیدہ جڑا ہوا ہے۔ لیکن اگر اس معاملہ میں غیر ضروری تاخیری ہوتی ہے تو انصاف کے اداروں پر سے لوگوں کا یقین ختم ہو جائےگا۔

سی ایم یوگی نے اپنی بات پوری کرتے ہوئے کہا کہ، ’’ میں کہنا چاہتا ہوں کہ عدالت کو جلد ہی اپنا فیصلہ دینا چاہئے، اور اگر ایسا نہیں کر پا رہی ہے، تو ہمیں اس مسئلہ کو سونپ دینا چاہئے۔ ہم 24 گھنٹے کے اندر رام جنم بھومی متنازعہ کو حل کر لیں گے، 25 گھنٹے نہیں لیں گے‘‘۔

Loading...