یوگی کے نئے فیصلے سے لکھنؤ کے مشہور ٹنڈے كبابی پر منڈلانے لگا بند ہونے کا خطرہ

تر پردیش حکومت کے ذریعہ مذبح کو بند کرنے کے فرمان کے بعد ریاست بھر میں انتظامیہ اور پولیس مہم چلا جا رہی ہے۔ اب تک درجنوں غیر قانونی مذبح بند ہو چکے ہیں، وہیں کئی جگہ لوگوں کی طرف سے خود ہی مذبح بند کرنے کی اطلاع ہے

Mar 23, 2017 06:50 PM IST | Updated on: Mar 23, 2017 06:51 PM IST
یوگی کے نئے فیصلے سے لکھنؤ کے مشہور ٹنڈے كبابی پر منڈلانے لگا بند ہونے کا خطرہ

لکھنو : اتر پردیش حکومت کے ذریعہ مذبح کو بند کرنے کے فرمان کے بعد ریاست بھر میں انتظامیہ اور پولیس مہم چلا جا رہی ہے۔ اب تک درجنوں غیر قانونی مذبح بند ہو چکے ہیں، وہیں کئی جگہ لوگوں کی طرف سے خود ہی مذبح بند کرنے کی اطلاع ہے۔

اس کا سیدھا اثر بیف سمیت دیگر گوشت کی سپلائی پر پڑ رہا ہے۔ صورت حال یہ ہے کہ لکھنؤ کی شناخت مانے جانے والے ٹنڈے كبابي پر بند ہونے کا خطرہ منڈلانے لگاہے۔ ٹنڈے ہی نہیں نوابوں کے شہر میں بریانی، كلچے نہاری وغیرہ کے ذائقہ کے لئے مشہور دیگر دکانوں کے کاروبار پر بھی براہ راست اثر پڑتا نظر آرہا ہے۔

چوک کے اکبری گیٹ پر واقع ٹنڈے كبابي کے ابو بکر کا کہنا ہے کہ سپلائی مکمل طور پر ٹھپ ہو چکی ہے ۔ ایسی صورت حال تھی کہ بدھ کو دکان بند تک کرنی پڑ گئی۔ آج جمعرات کو ہم نے دکان کھولی ہے ، لیکن بیف کے کباب کی جگہ ہم چکن کے کباب صارفین کے سامنے پیش کر رہے ہیں۔

یہی نہیں تھوڑا مٹن کا بھی بندوبست کرلیا ہے، جس کا کباب بنائیں گے۔ دکان میں اس کے لئے الگ اسٹیکر بھی چسپاں کیا گیا ہے۔ ابو بکر کہتے ہیں کہ لیکن مشکل یہ ہے کہ ہماری شناخت کے بیف کباب کی ڈیمانڈ اتنی زیادہ ہے ، لیکن لوگوں کو چکن کے کباب سمجھ میں ہی نہیں آ رہے ہیں۔

Loading...

اگر یہی صورت حال رہی تو دھندہ بند ہی کرنا پڑ جائے گا۔ ابو بکر کے مطابق آج تک کی تاریخ میں ٹنڈے كبابي کی دکان کبھی خالی نہیں رہی، آپ خود ہی دیکھ لیجئے، اکا دکا لوگ ہی بیٹھے ہیں۔

غیر قانونی مذبح کے خلاف کارروائی ہو رہی ہے، قانونی مذبح سے تو آپ کو سپلائی ہو رہی ہوگی؟

اس سوال پر ابو بکر نے کہا کہ فی الحال کافی کنفیوزن ہے۔ انتظامیہ اس کو لے کر صورتحال واضح نہیں کر رہی ہے۔ غیر قانونی کون اور قانونی کون ، یہ نہیں بتایا جا رہا۔ یہی وجہ ہے کہ سبھی سلاٹرہاوس روک چکے ہیں۔ شام تک فیصلہ لے لیا جائے گا کہ سلاٹر ہاوس کی طرف سے کیا کارروائی کی جائے گی ۔

اکبری گیٹ پر ہی واقع كلچے اور نہاری کے لئے مشہور رحیمس کے مالک محمد اسامہ کا کہنا ہے کہ مذبح کے خلاف کارروائی سے ہمارے کاروبار پر براہ راست اثر پڑ رہا ہے۔ بیف ملنے میں کافی دقتوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ یہی نہیں فروخت میں بھی کافی زیادہ کمی آگئی ہے۔ طرح طرح کی افواہیں پھیل رہی ہیں، کوئی بتا رہا ہے کہ مذبح والے ہڑتال پر جا رہے ہیں، تو کوئی کہہ رہا ہے کہ دکانوں پر پولیس چھاے مارے گی۔

Loading...