لکھنئو میں طالبات کے استحصال کے الزام میں مدرسے کا منتظم گرفتار

لکھنؤ۔ اترپردیش کے دارالحکومت لکھنؤ کے سعادت گنج علاقے کے ایک مدرسے کی طالبات کا جنسی استحصا ل کرنے کے الزام میں منتظم کو گرفتار کرلیا گیا۔

Dec 30, 2017 11:17 AM IST | Updated on: Dec 30, 2017 01:20 PM IST
لکھنئو میں طالبات کے استحصال کے الزام میں مدرسے کا منتظم گرفتار

مدرسہ میں قید لڑکیوں کی تصویر

لکھنؤ۔ اترپردیش کے دارالحکومت لکھنؤ کے سعادت گنج علاقے کے ایک مدرسے کی طالبات کا جنسی استحصا ل کرنے کے الزام میں منتظم کو گرفتار کرلیا گیا۔ پولیس سپرنٹنڈنٹ (مغربی) وکاس چند تریپاٹھی نے آج یہاں بتایا کہ مدرسے میں 125طالبات پڑھتی ہیں۔ طالبات نے اپنے گارجین سے منتظم کے ذریعہ پریشان کرنے اور فحش حرکتیں کرنے جیسی شکایت کی تھی۔ اس سلسلے میں طالبات نے کھڑکی سے باہر ایک خط بھی پھینکا تھا۔

افسر نے بتایا کہ طالبات کی شکایت پر کل آدھی رات کے بعد یاسین گنج جامعہ خدیجه الکبری البنات مدرسے پر چھاپہ مارکر 51طالبات کو وہاں سے نکالا گیا۔ مدرسے کے منتظم قاری طیب زیا کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

متاثرہ لڑکیوں کو فی الحال ناری نکیتن میں رکھا گیا ہے۔ مدرسہ کی جانچ کی جا رہی ہے۔ جانچ کے بعد آگے کی کارروائی کی جائے گی۔ بتا دیں کہ مدرسہ میں 125 طالبات کے نام درج ہیں لیکن چھاپہ ماری کے دوران 51 طالبات ہی موجود تھیں جنہیں آزاد کرا لیا گیا ہے۔

Loading...

Loading...