ڈاکٹر ذاکر نائک پر پابندی، تو راشٹریہ سویم سیوک سنگھ پر کیوں نہیں: مولانا عامر رشادی

جون پور: عالمی شہرت یافتہ اسلامی اسکالر ڈاکٹر ذاکر نائک پر گزشتہ چند دنوں سے انڈین میڈیا کی طرف سے مسلسل کئے جا رہے حملے کے خلاف سخت احتجاج کرتے ہوئے راشٹریہ علماء كونسل کے قومی صدر مولانا عامر رشادی نے کہا کہ ڈاکٹر ذاکر نائک پر ہندوستانی میڈیا کا حملہ صرف ایک شخص پر حملہ نہیں بلکہ یہ ڈاکٹر ذاکر نائک کی اسلامی شناخت پر حملہ ہے۔

Jul 12, 2016 12:43 PM IST | Updated on: Jul 12, 2016 12:45 PM IST
ڈاکٹر ذاکر نائک پر پابندی، تو راشٹریہ سویم سیوک سنگھ پر کیوں نہیں: مولانا عامر رشادی

جون پور: عالمی شہرت یافتہ اسلامی اسکالر ڈاکٹر ذاکر نائک پر گزشتہ چند دنوں سے انڈین میڈیا کی طرف سے مسلسل کئے جا رہے حملے کے خلاف سخت احتجاج کرتے ہوئے راشٹریہ علماء كونسل کے قومی صدر مولانا عامر رشادی نے کہا کہ ڈاکٹر ذاکر نائک پر ہندوستانی میڈیا کا حملہ صرف ایک شخص پر حملہ نہیں بلکہ یہ ڈاکٹر ذاکر نائک کی اسلامی شناخت پر حملہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر ذاکر نائک کے بہت سے بیان سے نقطہ نظر کے حساب سے اتفاق نہیں کر سکتے لیکن ان کے بیان کو دہشت گردی سے جوڑنا اور انہیں دہشت گردی کی حوصلہ افزائی کرنے والا بتانا غلط ہوگا اور اس کی سخت سے سخت مذمت ہونی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ یہ حیرت انگیز ہے کہ ہندوستانی شہری ہوکر گزشتہ دس سالوں سے پیس ٹی وی چلانے والے ڈاکٹر ذاکر نایک کے ہزاروں بیانات میں سے کسی بھی بیان پر آج تک ہندوستانی حکومت کو کوئی بھی اعتراض نہیں ہوا، لیکن اچانک بنگلہ دیش کے دہشت گردانہ حملے میں ملوث ایک دہشت گرد کی طرف سے شئیر کی گئی فیس بک پوسٹ کو بنیاد بنا کر ان کے خلاف ہندوستان میں قانونی کارروائی کرنے کے ساتھ ان کے چینل پر پابندی عائد کرنے کی بات کی جا رہی ہے۔ مولانا نے کہا کہ جس شخص کے سوشل مڈيا پر کروڑوں فالوورز ہوں اس کے کسی پوسٹ یا بیان کو کوئی بھی مشتبہ شخص شئیر کر سکتا ہے تو کیا اس مشتبہ شخص کے ساتھ ڈاکٹر ذاکر نائک کو جوڑ دیا جائے گا۔

Loading...

ہندی سیاست ڈاٹ کام کے مطابق، مولانا رشادی نے کہا کہ حکومت کو شردھا کپور کو بین کرنا چاہئے کیونکہ ایک دہشت گرد ان کا بہت بڑا فین تھا۔اس نے ان سے ملاقات بھی کی تھی۔ حکومت اور میڈیا کو ڈاکٹر ذاکر نائک پر مذہب کے نام پر نفرت پھیلانے کا الزام لگانے والوں کو پروین توگڑیا، ساکشی مہاراج، سادھوی پراچی، پرگیہ سنگھ ٹھاکر اور مسلم عورتوں سے ریپ کرنے کی بات کہنے والے آدتیہ ناتھ یوگی کے زہر اگلنے والےبیانات نظر نہیں آتے۔  انہوں نے کہا کہ اگر ڈاکٹر ذاکرنائک پر پابندی لگائی جا سکتی ہے تو آر ایس ایس پر کیوں نہیں لگائی جا رہی ہے۔

Loading...