پولیس اہلکاروں کو راکھی باندھ کرتنازع میں پھنسی ثنا تھانوی ، علما نے کی مخالفت تو دیا یہ جواب

مظفر نگر ضلع میں رکشا بندھن تہوار پر ایک مسلم لڑکی کے ذریعہ پولیس افسران کو راکھی باندھنے کو لے کر تنازع شروع ہوگیا ہے ۔

Aug 29, 2018 02:25 PM IST | Updated on: Aug 29, 2018 02:25 PM IST
پولیس اہلکاروں کو راکھی باندھ کرتنازع میں پھنسی ثنا تھانوی ، علما نے کی مخالفت تو دیا یہ جواب

ثنا تھانوی

مظفر نگر ضلع میں رکشا بندھن تہوار پر ایک مسلم لڑکی کے ذریعہ پولیس افسران کو راکھی باندھنے کو لے کر تنازع شروع ہوگیا ہے ۔ مسلم لڑکی ثنا تھانوی کے ذریعہ پولیس اہلکاروں کو راکھی باندھنے کی دیوبندی علما نے مخالفت کی ہے ۔ ادھر ثنا تھانوی نے علما کی مخالفت پر اعتراض کرتے ہوئے معاملہ کو مذہب کے چشمہ نہ دیکھنے کی اپیل کی ہے ۔

در اصل 26 اگست کو ثنا نے نئی منڈی کوتوالی پہنچ کر پولیس اہلکاروں کو راکھی باندھی تھی اور تحفہ میں ایس ایس پی اننت دیو تیواری نے اس کو نئی منڈی کوتوالی کا ایک دن کا تھانہ انچارج بنادیا تھا ، جس نے کئی دنوں تک سرخیاں بٹوری تھیں ۔ تاہم علما نے اس عمل کی مخالفت کی تھی ۔

Loading...

میڈیا کو دئے ایک بیان میں ثنا تھانوی اور اس کے اہل خانہ نے علما کے بیان پر اعتراض کیا ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ سال کے 365 دن پولیس والے ہماری حفاظت کرتے ہیں اور ہم نے ان کو راکھی باندھی ہے ، جس کو مذہب سے جوڑ کر نہیں دیکھا جانا چاہئے ۔

بقول ثنا رکشا بندھن بھائی بہن کا تہوار ہے ، جیسے بھائی بہن کی حفاظت کرتا ہے ، ویسے ہی پولیس والے بھی ہماری حفاظت کرتے ہیں اور ہم نے ان کو راکھی باندھی ہے اور جو لوگ اس کی مخالفت کررہے ہیں ان سے یہی کہنا چاہیں گے کہ برائے کرم اس کو مذہب سے نہ جوڑیں ۔

Loading...