سماج وادی پارٹی اور بھارتیہ جنتا پارٹی میں نوراکشتی: اسدالدین اویسی

فیض آباد۔ آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) کے صدر اور رکن پارلیمان اسد الدین اویسی نے راجیہ سبھا کے آئندہ انتخابات میں دلت ۔مسلم اتحاد کا اشارہ دیتے ہوئے کہا کہ اترپردیش میں اب سماج وادی پارٹی کی حکومت کےگنے چنے دن رہ گئے ہیں۔

Feb 05, 2016 10:20 AM IST | Updated on: Feb 05, 2016 10:20 AM IST
سماج وادی پارٹی اور بھارتیہ جنتا پارٹی میں نوراکشتی: اسدالدین اویسی

فیض آباد۔ آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) کے صدر اور رکن پارلیمان اسد الدین اویسی نے راجیہ سبھا کے آئندہ انتخابات میں دلت ۔مسلم اتحاد کا اشارہ دیتے ہوئے  کہا کہ اترپردیش میں اب سماج وادی پارٹی کی حکومت کےگنے چنے دن رہ گئے ہیں۔ ضلع ہیڈکوارٹر سے تقریباً 20 کلو میٹر دور بیکاپور اسمبلی حلقہ میں ہورہے ضمنی انتخابات کے سلسلہ میں بھدرسہ قصبہ کے عیدگاہ میدان میں پارٹی کے امیدوار پردیپ کوری کی حمایت میں یہاں منعقدہ انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر اویسی نے کہا کہ اترپردیش میں موجودہ حکومت اب زیادہ دن تک چلنے والی نہیں ہے۔ انہوں نے دعوی کیا کہ 2017 میں ہونے والے اسمبلی انتخابات میں ایس پی حکومت واپس نہیں آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ سماج وادی پارٹی اور بھارتیہ جنتا کے مابین نوراکشتی چل رہی ہے۔ ایس پی کو ریاست میں تقریباً چار سال حکمرانی کےہوگئے ہیں لیکن عوام سے کئے گئے وعدے ابھی تک پورے نہیں ہوئے ہیں اور نہ ہی اس حکومت میں کوئی کام ہوا۔

مسٹر اویسي نے کہا کہ ابھی حال ہی میں سماج وادی پارٹی نے قانون ساز کونسل کی خالی 36 نشستوں کے لئے 31 امیدواروں کا اعلان کیا ہے لیکن سب سے تعجب کی بات یہ ہے کہ اس میں کسی دلت کو ٹکٹ نہیں دیا گیا۔ اس سے صاف پتہ چلتا ہے کہ یہ حکومت دلتوں کی کتنی ہمدرد ہے۔ مسٹر اویسي نے مرکز میں نریندر مودی حکومت پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کی سیاست سرمایہ داروں اور صنعت کاروں کے ہاتھ میں آ گئی ہے۔ مرکز کی حکمران بی جے پی حکومت عوام کے لئے کچھ نہیں کر رہی ہے۔ ان کے رہنما معاشرے کو توڑنے والے بیان دیتے ہیں لیکن وزیر اعظم اپنے لیڈروں کو کچھ نہیں کہہ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ریاست میں کسان، دلت، غریب بھوک سے مر ر ہے ہیں اور سماج وادی پارٹی کے لوگ اپنے لیڈر کی سالگرہ پر کروڑوں روپے خرچ کر کے غریبوں کا مذاق اڑا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آزادی کے بعد سے اب تک پچاس ہزار مسلمان اپنا گھر چھوڑنے پر مجبور ہو گئے ہیں۔

Loading...

Loading...