مودی حکومت نے آئینی اداروں کونظراندازکیا -پنیا

رائےپور: کانگریس کے چھتیس گڑھ کےانچارج اور قومی ترجمان پی ایل پونیا نے مودی حکومت پر گزشتہ چار سالوں میں آئینی اداروں کو نظر انداز کرنے کا الزام لگاتےہوئےکہا کہ وہ انتخابی وعدوں کو پورا کرنے میں پوری طرح ناکام رہے ہیں۔

May 26, 2018 02:51 PM IST | Updated on: May 26, 2018 02:51 PM IST
مودی حکومت نے آئینی اداروں کونظراندازکیا -پنیا

رائےپور:  کانگریس کے چھتیس گڑھ کےانچارج اور قومی ترجمان پی ایل پونیا نے مودی حکومت پر گزشتہ چار سالوں میں آئینی اداروں کو نظر انداز کرنے کا الزام لگاتےہوئےکہا کہ وہ انتخابی وعدوں کو پورا کرنے میں پوری طرح ناکام رہے ہیں۔

مسٹرپونیانےمودی حکومت کے چار سالہ مدت کے دوران آج ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئےکہا کہ ملک میں بے روزگاری میں اضافہ ہوا ہے،مہنگائی بےلگام ہوگئی ہے،کسانوں کی لاگت کادوگنی قیمت دینےمیں ناکام رہےہیں۔بدعنوانی عروج پرہے،دفاعی بجٹ میں کمی آئی ہےاور خارجہ پالیسی بھی بدترہو چکی ہے۔ انہوں نے مودی حکومت کی نقطہ چینی کرتےہوئےان کی خامیاں بیان کی اور کہا کہ یہ ایک غدار حکومت ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی اکثریت کے بعد بھی اچھی حکومت چلانے میں ناکام رہے۔ ہر شخص کے اکاؤنٹ میں 15 لاکھ نہیں آیا۔ ہر طبقے کے ساتھ دھوکہ ہوا۔ یو پی اے نے اپنا کام کیا۔اپنےکام میں جن دھن کا استعمال کرتے ہوئے ایسا جشن کبھی نہیں منايا۔انهوںنے الزام لگایا کہ سرکاری نوکریوں میں بی جے پی اور آر ایس ایس کے لوگوں کوبھرا جا رہا هے۔الیکشن کمیشن کےمعتبریت پر بھی سوال اٹھائے ۔گورنر کے عہدے کاکس طرح سےاستعمال کیاجارہا ہے سب جانتےہیں۔اپنے سیاسی مخالفین کو ای ڈی اور سی بی آئی کے ذریعے پریشان کرنے کا کھیل کھیلاجا رہا ہے۔

Loading...

مسٹر پونیا نے کہا کہ ہر شعبے میں نوٹ بندی کےبعدبےروزگاری میں اضافہ ہواہے۔ حکومت ہر سال دوکروڑنوجوانوں کو ملازمت فراہم کرنے میں ناکام رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ لوک پال بل پاس ہو گیا لیکن مضبوط لوک پال کی تقرری اب تک نہیں ہو سكي۔لوكپال کی تقرری کے لئے انہیں فرصت نےهے۔انهوںنے پوچھا کہ بیرون ممالک میں جمع 80 لاکھ کروڑ روپے کا کالا دھن 100 دن میں واپس لا کر ہر شخص کے اکاؤنٹ 15لاکھ جمع کرنے کے وعدےکا کیاہوا۔؟

Loading...