سونیا گاندھی اور کانگریس پر رائے بریلی کے لوگوں کو اب بھی ہے یقین

لکھنؤ : سونیا گاندھی کے پارلیمانی حلقے رائے بریلی میں آج بھی اقلیتی طبقہ کے لوگوں کو ان سے کافی امیدیں وابستہ ہیں۔ رائے بریلی کے لوگوں کا کہنا ہے کہ یہاں ترقی کا جو بھی کام ہواہے ، وہ کانگریس کے دور اقتدار میں ہی ہوا ہے۔

Feb 13, 2016 11:39 PM IST | Updated on: Feb 13, 2016 11:39 PM IST
سونیا گاندھی اور کانگریس پر رائے بریلی کے لوگوں کو اب بھی ہے یقین

لکھنؤ : سونیا گاندھی کے پارلیمانی حلقے رائے بریلی میں آج بھی اقلیتی طبقہ کے لوگوں کو ان سے کافی امیدیں وابستہ ہیں۔ رائے بریلی کے لوگوں کا کہنا ہے کہ یہاں ترقی کا جو بھی کام ہواہے ، وہ کانگریس کے دور اقتدار میں ہی ہوا ہے۔

فی الحال یہاں کے بیشتر منصوبےسیاسی انتقام کی زد میں ہیں۔جو بھی اسکیمیں اور پروجیکٹ سونیا گاندھی نے نافذ کی تھیں ، وہ منجدھار میں ہیں۔ مودی کی سربراہی والی موجودہ مرکزی حکومت سے رائے بریلی کے لوگوں کو کوئی امید ہی نہیں۔

رائے بریلی کو کانگریس کا گڑھ کہاجاتا ہے ۔ اسی حلقہ سے سونیا گاندھی نے غیر معمولی کامیابی کے ساتھ پارلیمنٹ کا رخ کیا تھا۔ منصوبے اور خواب بہت تھے لیکن بی جے پی کی حکومت آنے کے بعد اس علاقے کو مکمل طور پر فراموش کر دیا گیا۔

لوگوں سےبات کرنے پر معلوم ہوتا ہے کہ ابھی بھی یہاں کے لوگ سونیا گاندھی یا یوں کہیں کہ کانگریس میں یقین رکھتے ہیں اور یہ بخوبی سمجھ رہے ہیں کہ موجودہ اقتدار میں اس علاقہ کو اسی لئے نظرانداز کیا جارہا ہے ، کیوں کہ یہ کانگریس کا علاقہ ہے۔ لیکن اس کیفیت اور ان حالات کو یہاں کے ووٹر بھی سمجھ رہے ہیں۔ لہٰذا کہاجاسکتاہے کہ رائے بریلی کے لوگون کے زخم اور غم سوچے سمجھے ہیں ، اس لئے انہیں تکلیف بھی کم ہی ہے۔

Loading...

Loading...