پھوٹ ڈال کر اقتدار میں برقرار رہنے کی سیاست کر رہے ہیں مودی: راہل گاندھی

اترپردیش میں اسمبلی الیکشن سے پہلے شروع ہوئی اپنی کسان ریلی کے آخری اور 26 ویں دن مسٹر گاندھی نے یہاں گھنٹہ گھر پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’وزیر اعظم مودی نے شاید سچ نہ بولنے کی قسم کھا رکھی ہے۔

Oct 06, 2016 05:59 PM IST | Updated on: Oct 06, 2016 07:07 PM IST
پھوٹ ڈال کر اقتدار میں برقرار رہنے کی سیاست کر رہے ہیں مودی: راہل گاندھی

میرٹھ ۔ کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی نے آج کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی نفرت پھیلا کر اور آپس میں پھوٹ ڈال کر اقتدار میں برقرار رہنے کی سیاست کر رہے ہیں۔

اترپردیش میں اسمبلی الیکشن سے پہلے شروع ہوئی اپنی کسان ریلی کے آخری اور 26 ویں دن مسٹر گاندھی نے یہاں گھنٹہ گھر پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’وزیر اعظم مودی نے شاید سچ نہ بولنے کی قسم کھا رکھی ہے۔ وہ مسلسل ملک کے عوام کو گمراہ کرکے ان کی توجہ بنیادی مسائل سے ہٹانے کی کوشش میں لگے ہوئے ہیں۔

مسٹر گاندھی نے الزام لگایا کہ ملک کے عوام کے مابین پھوٹ ڈال کر، آپسی بھائی چارہ ختم کرکے اور نفرت پھیلا کر طویل عرصہ تک سیاست نہیں کی جاسکتی جو وزیر اعظم کا بنیادی ایجنڈا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کالا دھن اور کسانوں کے قرض کی معافی جیسے تمام معاملوں میں مودی حکومت ناکام ثابت ہوئی ہے۔ آج اس کسان کو انکم ٹیکس کے نوٹس مل رہے ہیں جس نے کبھی کوئی ٹیکس نہیں دیا ہے کیوں کہ وہی اس ملک کے ’اَنّداتا‘ ہیں۔

بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کی سربراہ مایاوتی اور سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے سربراہ ملائم سنگھ یادو کو سخت تنقید کا نشانہ بناتےہوئے کانگریس کے نائب صدر نے کہا کہ مایاوتی جی اور ملائم جی نے اترپردیش کو بہت نقصان پہنچایا ہے۔ مرکزی جانچ بیورو (سی بی آئی) چونکہ مودی جی کے ہاتھوں کی کٹھ پتلی بنی ہوئی ہے اس لئے ملائم اور مایاوتی بھی ڈرے ہوئے ہیں۔ انہوں نے اس بات کا اعادہ کیا کہ ان کی پارٹی کی حکومت آنے پر کسانوں کا قرض معاف ہوگا اور بجلی کی شرح بھی نصف کم کردی جائے گی۔ کسان یاترا کے آج میرٹھ میں آخری مرحلہ میں روڈ شو کےد وران راہل گاندھی کے ساتھ دہلی کی سابق وزیر اعلی شیلا دیکشت، راج ببر، ممبر پارلیمنٹ راجا سنجے سنگھ، پرمود تیواری، ریٹائرڈ آئی اے ایس افسر پی ایل پونیا اور سابق وزیر ڈاکٹر معراج الدین احمد بھی موجود تھے۔

Loading...

واضح رہے کہ مسٹر گاندھی نے چھ ستمبر کو دیوریا سے غازی آباد تک تقریباً 2500 کلومیٹر طویل کسان یاترا کا آغاز کیا تھا اور آج آخری مرحلہ میں یہ ریلی غازی آباد میں ختم ہوگئی۔ ریلی کے دوران انہوں نے ریاست کے 140 اسمبلی حلقوں کے لوگوں سے رابطہ کیا، جس میں 26 روڈ شو ہوئے اور 26 کھاٹ سبھائیں ہوئیں۔

Loading...