راہل گاندھی نے لی چٹکی، کہا : مودی جی آپ نے تو ہندوستان کو دو حصوں میں تقسیم کردیا

کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی نے دھرم شالہ میں نوٹ بندی کے لئے مرکزی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ فیصلہ غریب مخالف ہے، جو 50 کارپوریٹ کمپنیوں کو فائدہ پہنچانے کے لئے لیا گیا ہے۔

Dec 24, 2016 08:03 PM IST | Updated on: Dec 24, 2016 08:03 PM IST
راہل گاندھی نے لی چٹکی، کہا : مودی جی آپ نے تو ہندوستان کو دو حصوں میں تقسیم کردیا

دھرم شالہ : کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی نے دھرم شالہ میں نوٹ بندی کے لئے مرکزی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ فیصلہ غریب مخالف ہے، جو 50 کارپوریٹ کمپنیوں کو فائدہ پہنچانے کے لئے لیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نوٹ بندی ملک کی نقد معیشت پر بمباری ہے۔

انہوں نے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کوئی نوٹ کالا دھن ہے یا نہیں، یہ اس پر منحصر ہے کہ وہ کس کے ہاتھ میں ہے۔ جس کے ہاتھ میں ہے وہ ایماندار شخص ہے یا خراب۔ انہوں نے کہا کہ ایک طرف ایماندار آدمی ہے، تو دوسری طرف بدعنوان آدمی۔ مودی مانتے ہیں اگر بینک نوٹ بدعنوان آدمی کے ہاتھ میں جاتا ہے، تو وہ کالا ہو جاتا ہے، اس کا رنگ بدل جاتا ہے، گویا کوئی جادو ہو۔

راہل نے کہا کہ کوئی نوٹ بے ایمان نہیں ہوتا، بے ایمان تو اسے رکھنے والا ہوتا ہے۔ مودی جی نے ڈھائی سال میں کتنے بے ایمانوں کے خلاف کارروائی کی؟ الٹے نوٹ کو بند کر دیا، بے ایمانوں کو نہیں۔ راہل نے 40 منٹ کی اپنی تقریر میں کہا کہ کانگریس کیش لیس نظام کے خلاف نہیں ہے، لیکن یہ مسلط نہیں جانا چاہئے اور یہ ایک 'بہانہ نہیں ہونا چاہئے۔

ریاست میں وزیر اعلی ویر بھدر سنگھ کے دور اقتدار کے چار سال پورے ہونے کے موقع پر منعقدہ ریلی سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نوٹ بندی غریبوں، کسانوں اور متوسط طبقے کے ہندوستانیوں کے خلاف اٹھایا گیا قدم ہے۔

Loading...

وزیر اعظم نریندر مودی پر چٹکی لیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مودی جی، آپ نے تو ہندوستان کو دو حصوں میں تقسیم کر دیا ہے، ایک طرف ایک فیصد امیر لوگ ہیں تو دوسری طرف متوسط اور غریب طبقے کے 99 فیصد لوگ۔ مودی کے دوست سپر امیر لوگ موج کر رہے ہیں اور غریب اپنے خون پسینے کی کمائی حاصل کرنے کے لئے قطاروں میں کھڑا ہوکر مر رہا ہے۔

Loading...