شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی کو اسلام سے خارج کیا گیا ، مددگاروں کے بھی بائیکاٹ کی اپیل

لکھنو میں جمعہ کی نماز کے دوران مولانا کلب جواب نے کہا جو لوگ وسیم رضوی کے مدد گار ہیں ان کا بھی بائیکاٹ ہونا چاہئے ۔

Aug 31, 2018 05:41 PM IST | Updated on: Aug 31, 2018 05:43 PM IST
شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی کو اسلام سے خارج کیا گیا ، مددگاروں کے بھی بائیکاٹ کی اپیل

شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی: فائل فوٹو۔

شیعہ کے سب سے بڑے عالم دین آیت اللہ سید علی الحسینی السیستانی کے فتوی کو قبول نہیں کرنے کی وجہ سے شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی کو اسلام سے خارج کردیا گیا ہے۔ یہ اطلاع شیعہ عالم دین مولانا کلب جواد نے دی۔ جمعہ کو لکھنو میں جمعہ کی نماز کے دوران مولانا کلب جواد نے کہا کہ جو لوگ وسیم رضوی کے مددگار ہیں ، ان کا بھی بائیکاٹ ہونا چاہئے۔ اس دوران ایس پی چھوڑ کر بی جے پی کا دامن تھامنے والے بکل نواب پر بھی طنز کسا گیا۔

جواد نے وزیر محسن رضا پر بھی اشاروں ہی اشاروں میں نشانہ سادھا۔ انہوں نے کہا کہ مندروں میں جاکر سیاسی فائدے کیلئے ایسے لوگ گھنٹہ بجا رہے ہیں اور اسلام کو بدنام کررہے ہیں۔ ان لوگوں کی وجہ سے شیعہ برادری کا مذاق اڑ رہا ہے۔ کلب جواد نے کہا کہ مسجد کی جگہ پر صرف مسجد ہی بن سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وسیم رضوی خود کو گرفتاری سے بچانے کیلئے ایسی بیان بازی کررہے ہیں۔

خیال رہے کہ سیستانی کے فتوی پر وسیم رضوی نے کہا تھا کہ شیعہ وقف بورڈ پر بابری کیس کے مدعی کی حمایت کرنے کیلئے بین الاقوامی سطح سے دباو ڈالا جارہا ہے۔ سیستانی کا فتوی اسی سلسلہ کا ایک حصہ ہے۔ شیعہ وقف بورڈ ہندوستانی قوانین کے تحت ہی کام کرے گا نہ کہ کسی دہشت گردی یا فتوی کے دباو میں ، ہم سیستانی کے ذریعہ جاری فتوی کو قبول نہیں کرسکتے ، کیونکہ یہ انہیں گمراہ کرکے لیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا تھا کہ اجودھیا میں رام مندر کی تعمیر ہندووں کی آستھا سے جڑی ہوئی ہے اور شیعہ وقف بورڈ ملک اور سماج کی ترقی کو لے کر سنجیدہ ہے۔ ہندووں کو ان کا حق ملنا چاہئے اور مسلمانوں کو دوسروں کا حق چھیننے سے دور رہنا چاہئے۔ شیعہ وقف بورڈ اپنے فیصلہ سےپیچھے نہیں ہٹے گا ، خواہ دنیا کے سبھی مسلمان ہماری مخالفت میں کیوں نہ کھڑے ہوجائیں۔

Loading...

Loading...