مظفر نگر میں فائرنگ کے بعد کشیدگی ، کئی زخمی ، پولیس نے کیا لاٹھی چارج

مظفر نگر: اترپردیش کے انتہائی حساس مظفر نگر شہر کے کوتوالی علاقہ میں کل دو فریقوں کےدرمیان معمولی بات پر ہوئی فائرنگ اور پتھراو کے بعد حالات مزیدہ کشیدہ ہوگئے ہیں ۔ جہاں پولیس نے دونوں طرف کے چند لوگوں کو پوچھ تاچھ کے لئے حراست میں لے لیا ، وہیں اکثریتی طبقہ کے نوجوان تھانہ میں داخل ہو کر ہر ہر مہادیو کا نعرہ لگانے لگے ، جس کی وجہ سے حالات مزید کشیدہ ہوگئے۔ بتایا جاتا ہے کہ تھانہ میں بھی اقلیتی اور اکثریتی طبقوں کے درمیان جھڑپ ہوئی ہے۔ کشیدگی کے پیش نظر علاقہ میں سیکورٹی سخت کردی گئی ہے اور پولیس فورس کو تعینات کیا گیا ہے

Mar 18, 2016 03:29 PM IST | Updated on: Mar 18, 2016 06:38 PM IST
مظفر نگر میں فائرنگ کے بعد کشیدگی ، کئی زخمی ، پولیس نے کیا لاٹھی چارج

مظفر نگر: اترپردیش کے انتہائی حساس مظفر نگر شہر کے کوتوالی علاقہ میں کل دو فریقوں کےدرمیان معمولی بات پر ہوئی فائرنگ اور پتھراو کے بعد حالات مزیدہ کشیدہ ہوگئے ہیں ۔ جہاں پولیس نے دونوں طرف کے چند لوگوں کو پوچھ تاچھ کے لئے حراست میں لے لیا ، وہیں اکثریتی طبقہ کے نوجوان تھانہ میں داخل ہو کر ہر ہر مہادیو کا نعرہ لگانے لگے ، جس کی وجہ سے حالات مزید کشیدہ ہوگئے۔ بتایا جاتا ہے کہ تھانہ میں بھی اقلیتی اور اکثریتی طبقوں کے درمیان جھڑپ ہوئی ہے۔ کشیدگی کے پیش نظر علاقہ میں سیکورٹی سخت کردی گئی ہے اور پولیس فورس کو تعینات کیا گیا ہے

پولیس ذرائع کے مطابق کوتوالی نگر علاقہ کے نیا بانس میں رہنے والے ویشو اور عاقب کے درمیان معمولی سی بات پر کہا سنی ہونے پر دونوں فرقوں کے لوگ موقع پر جمع ہوگئے اور دونوں طرف سے فائرنگ اور پتھراو کیا گیا تھا، اس واقعہ میں چار لوگ پتھر لگنے سے زخمی ہوگئے تھے ۔ تاہم فائرنگ میں کوئی زخمی نہیں ہوا تھا۔

واقعہ کے بعد علاقے میں کشیدگی پھیل گئی ۔ اسی کے مدنظر پولیس تعینات کردی گئی۔ انہوں نے بتایاکہ دونوں فرقوں کے آٹھ دس لوگوں کو پولیس نے پوچھ تاچھ کے لئے حراست میں لےلیا ہے۔

دریں اثنا نوجوانوں کو حراست میں لینے کے خلاف مظفر نگر شہرسے بی جے پی کے ممبر اسمبلی کپِل دیو اگروال اپنے حامیوں کے ساتھ کل رات دھرنے پر بیٹھ گئے تھے۔ پولیس کی جانب سے لوگوں کو چھوڑنے کی یقین دہانی کے بعد انہوں نے کل رات دو بجے کے قریب دھرنا ختم کردیا تھا۔

Loading...

لوگوں کی گرفتاری کے خلاف احتجاج میں بیوپاریوں نے بازار بند رکھنے کا اعلان کیاتھا ، تاہم بعد میں اس کو واپس لے لیا گیا ۔ اگروال نے بتایا کہ آج صبح پولیس نے حراست میں لئے گئے پانچ لوگوں کو چھوڑ دیا گیا ہے۔ ان کا الزام ہے کہ پولیس کی جانب سے خواتین کے خلاف طاقت استعمال کرنے سے حالات بگڑے۔ فی الحال شہر میں حالات ٹھیک ہیں۔ پولیس کا گشت جاری ہے ۔ انہوں نے ملزمان کو جلد پکڑنے کا مطالبہ کیا ہے۔

Loading...