بساهڑا گاؤں میں کشیدگی برقرار، مہیش شرما نے روی کے اہل خانہ سے کی ملاقات

یوپی کے گریٹر نوئیڈا کے بساهڑہ گاؤں میں اخلاق قتل کیس ایک ملزم کی موت کے بعد سے کشیدگی برقرار ہے۔جمعہ کی صبح بھی لوگ روی کی لاش کے ساتھ مظاہرہ کر رہے ہیں۔

Oct 07, 2016 12:27 PM IST | Updated on: Oct 07, 2016 03:55 PM IST
بساهڑا گاؤں میں کشیدگی برقرار، مہیش شرما نے روی کے اہل خانہ سے کی ملاقات

یوپی کے گریٹر نوئیڈا کے بساهڑا گاؤں میں اخلاق قتل کیس کے ایک ملزم کی موت کے بعد سے کشیدگی برقرار ہے۔ اس درمیان جمعہ کو مرکزی وزیر ڈاکٹر مہیش شرما نے روی کے اہل خانہ سے ملاقات بھی کی۔ مہیش شرما نے 11 لوگوں کی ایک ٹیم سے الگ سے بھی ملاقات کی۔ لواحقین کا کہنا ہے کہ جب تک ان کے مطالبات پورے نہیں ہوں گے ، تب تک لاش کی آخری رسومات ادا نہیں کی جائے گی۔اس درمیان روی کو لاش کو کو شہیدوں کی طرح ترنگے میں لپیٹ فریزر میں رکھا گیا ہے ۔

اس درمیان انتظامیہ نے لكسر جیل کے ایک جیلر بی ایس مکند کو ہٹاتے ہوئے انہیں لکھنؤ ہیڈکوارٹر سے اٹیچ کر دیا ہے ۔ قبل ازیں جمعرات کو لواحقین نے موم بتی مارچ نکال کر روی کی موت کے خلاف احتجاج کیا ۔ ان کا کہنا تھا کہ جب تک مطالبہ پورا نہیں ہوگا ، تب تک لاش کی آخری رسومات نہیں کی جائے گی۔

اہل خانہ کا کہنا ہے کہ روی کی بیوہ کو ایک کروڑ روپے، ایک سرکاری نوکری، کیس کی سی بی آئی جان ، جیلر اور اخلاق کے بھائی جان محمد کے خلاف ایف آئی آر درج کی جائے۔جبکہ گوتم بدھ نگر کے ڈی ایم این پی سنگھ کے مطابق ریاستی حکومت نے روی کی بیوہ کو 10 لاکھ روپے دینے کے لئے تیار ہے ۔ تاہم روی کے اہل خانہ نے اسے ٹھکرا دیا ۔سی بی آئی جانچ سے متعلق انہوں نے کہا کہ اگر اہل خانہ تحریری طور پر اس کا مطالبہ کرتے ہیں ، تو حکومت اسے مرکزی حکومت کو منتقل کر دے گی۔

Loading...

Loading...