ڈومریا گنج کے ترینا گاوں میں کشیدگی اب بھی برقرار، صورت حال کو معمول پر لانے کی کوششیں جاری

ڈومریاگنج۔ ڈومریاگنج حلقہ کے موضع ترینا میں ہولی کے دن شرپسندوں کے ذریعہ ہندوستان کی قدیم تاریخی جامع مسجد میں رنگ پھینکے جانے پر پیدا شدہ تنازع کو لے کر کشیدگی اب بھی برقرار ہے۔

Mar 14, 2017 07:08 PM IST | Updated on: Mar 14, 2017 07:10 PM IST
ڈومریا گنج کے ترینا گاوں میں کشیدگی اب بھی برقرار، صورت حال کو معمول پر لانے کی کوششیں جاری

سابق رکن اسمبلی کمال یوسف ملک لوگوں سے صورت حال کے بارے میں جانکاری لیتے ہوئے۔

ڈومریاگنج۔ ڈومریاگنج حلقہ کے موضع ترینا میں ہولی کے دن شرپسندوں کے ذریعہ ہندوستان کی قدیم تاریخی جامع مسجد میں رنگ پھینکے جانے پر پیدا شدہ تنازع کو لے کر کشیدگی اب بھی برقرار ہے۔ اس کے مدنظر، پورے گاؤں کے لوگ خوف ودہشت میں ہیں۔ وہیں، شہ زوروں کے ذریعہ مسلم طبقہ کو  ڈرانے اور دھمکی دینے کی بھی اطلاعات ہیں۔ خیال رہے کہ گاؤں کے موجودہ پردھان کلیم احمد کو ہندویواواہنی کے شرپسندوں نے گزشتہ روز پولیس کے سامنے پولیس کی گاڑی سے کھینچ کرلاٹھی ڈنڈوں سے ان پر حملہ کردیا تھا جس سے ان کی حالت بدستور نازک بنی ہوئی ہے۔

کلیم احمد شرپسندوں کے خوف سے اپنا گھربارچھوڑکرایک دوسرے گاؤں میں مقیم ہونے پر مجبور ہیں۔ علاوہ ازیں، ڈومریاگنج حلقہ کے کئی اور مواضعات میں بھی ہولی کے رنگ کو لے کر کشیدگی کی خبریں ہیں۔ تاہم علاقہ کے امن پسند لوگوں کی طرف سے صورت حال کو پر امن کرنے کی کوششیں جاری ہیں۔ سیاسی لیڈران نے بھی علاقہ میں امن وامان قائم رکھنے کی اپیل کی ہے۔

Loading...

غور طلب ہے کہ ڈومریاگنج حلقہ کے موضع ترینا میں ہولی کے رنگ نے گزشتہ روز فرقہ وارانہ رنگ اختیارکرلیا تھا۔ ہندوستان کی قدیم تاریخی مساجد میں شمارمغلیہ دورکی شاہی جامع مسجد میں شدت پسندوں نے رنگ پھینک دیا تھا جس کے مد نظر دونوں گروپوں میں پہلے تو معمولی کہا سنی ہوئی اورپھر بعد میں معاملہ نے طول پکڑ لیا۔ ایک مسلم نوجوان کواکثریتی فرقہ سے تعلق رکھنے والوں نے مارمارکرنیم مردہ کر دیا جبکہ متعدد افراد زخمی ہوئے ہیں۔ حد تواس وقت ہو گئی جب شرپسندوں نے گاؤں کے پردھان کلیم احمد کوپولیس کی گاڑی سے زبردستی نکال کربھارت بھاری چوراہے پرپولیس کے سامنے لاٹھی ڈنڈوں سے مارکرلہولہان کردیا اورپولیس کھڑی خاموش تماشائی بنی رہی ۔ بالآخر زخمیوں کوعلاج کے لیے بستی ریفرکردیاگیا ہے۔

سابق رکن اسمبلی کمال یوسف ملک پولیس اہلکاروں سے بات چیت کرتے ہوئے سابق رکن اسمبلی کمال یوسف ملک پولیس اہلکاروں سے بات چیت کرتے ہوئے

انتخابی نتائج آتے ہی ہندوتواوادیوں کے حوصلے بلند ہوگئے ہیں اس وجہ سے علاقہ میں فرقہ وارانہ فساد جیسا ماحول بن گیا ہے۔ ادھرسیاسی لیڈران روٹیاں سینکنے میں مصروف ہوگئے ہیں ۔ گاؤں میں کئی تھانوں کے پولیس اورتحصیلدارتعینات کردیئے گئے ہیں ۔ علاقہ میں امن وامان بنائے رکھنے کے لیے سابق ریاستی وزیراورڈومریاگنج کے سابق رکن اسمبلی کمال یوسف ملک نے متعلقہ مواضعات کا دورہ کیا اوردونوں فریقوں سے مل کرامن وامان  بنائے رکھنے کی اپیل کی۔ انہوں نے کہا کہ ہم سب ایک ساتھ رہتے ہیں۔ بیرونی شرپسندوں کے جھانسے میں نہ آ کرہمیں امن وامان سے رہنے کی ضرورت ہے۔ پیس پارٹی کے اشوک سنگھ نے بھی تریناگاؤں کا دورہ کیااوراتحاد واتفاق بنائے رکھنے کی اپیل کی ۔

Loading...