سستے گھر پروجیکٹ پر ٹیکس چھوٹ رہے گی جاری ، بجٹ میں اعلان ممکن

سستے گھر پروجیکٹ پر مل رہی ٹیکس چھوٹ جاری رہنے کا امکان ہے ۔ سستے گھر پروجیکٹ پر مل رہی چھوٹ کی میعاد 31 مارچ کو ختم ہورہی ہے ۔

Jan 16, 2019 06:25 PM IST | Updated on: Jan 16, 2019 06:25 PM IST
سستے گھر پروجیکٹ پر ٹیکس چھوٹ رہے گی جاری ، بجٹ میں اعلان ممکن

علامتی تصویر

سستے گھر پروجیکٹ پر مل رہی ٹیکس چھوٹ جاری رہنے کا امکان ہے ۔ سستے گھر پروجیکٹ پر مل رہی چھوٹ کی میعاد 31 مارچ کو ختم ہورہی ہے ۔ سی این بی سی آواز کو ملی جانکاری کے مطابق اس میعاد کو بڑھایا جارہا ہے ، جس کا اعلان یکم فروری کو پیش ہونے والے عبوری بجٹ میں کیا جاسکتا ہے ۔

حکومت نے سستے مکانات کیلئے سال 2016 میں ایک اعلان کیا تھا کہ جو بھی سستے مکانات پروجیکٹ لے کر کمپنیاں آئیں گی ، ان کے فائدے پر حکومت ٹیکس نہیں لے گی ۔ یعنی 100 فیصدی ٹیکس چھوٹ ہوگی ۔ اب اس کی میعاد 31 مارچ 2019 کو ختم ہورہی ہے ، لیکن سستے مکانات کا جو ہدف رکھا گیا تھا وہ ابھی تک پورا نہیں ہوپایا ہے اور حکومت کی توجہ ابھی بھی برقرار ہے ۔ ذرائع کے مطابق سستے گھر بنانے والی کمپنیوں کو ملنے والی ٹیکس چھوٹ مستقبل میں بھی جاری رہے گی ۔

Loading...

اکتیس مارچ 2019 کے بعد بھی ایسا پروجیکٹ شروع کرنے والی کمپنیوں کو انکم ٹیکس ایکٹ کے سیکشن 80 آئی بی اے کے تحت ٹیکس میں چھوٹ جاری رہے گی ۔ اس میں شرط یہ ہے کہ اگر کمپنی ممبئی ، دہلی ، کولکاتہ یا چنئی میں گھر بناتی ہے اور گھر کا زیادہ سے زیادہ سائز 30 ورگ میٹر ہے تو ایسے پروجیکٹ چھوٹ کے دائرے میں رہیں گے ۔ یعنی ایسے پروجیکٹ میں کمپنی کو جو منافع ہوگا اس پر حکومت ٹیکس نہیں لے گی ۔ دوسرے شہروں میں گھروں کا سائز اگر 60 ورگ میٹر ہے تو بھی پروجیکٹ پر چھوٹ جاری رہے گی ۔

اس کا اعلان یکم فروری کوہونے والے عبوری بجٹ میں کیا جائے گا ۔ اس کے پیچھے یہ بھی دلیل دی جارہی ہے کہ 31 مارچ تک یہ اسکیم ہے ، اگر بجٹ میں اعلان نہیں کیا گیا ، تو ہاوسنگ سیکٹر میں غیر یقینی کا ماحول پیدا ہوجائے گا ۔

Loading...