گنے کے کھیت میں 14 سالہ لڑکی کی اجتماعی آبروریزی ، پکڑے جانے کے ڈر سے بعد میں کردیا قتل

ایس پی ہردوئی کے مطابق ان ملزمین نے متاثرہ لڑکی کی پہلے اجتماعی آبروریزی کی اور پھر پکڑے جانے کے ڈر سے گنے کے کھیت میں ہی لڑکی کا منہ دباکر قتل کردیا ۔ قتل کے بعد لاش کو وہیں چھپا کر فرار ہوگئے ۔

Dec 08, 2018 07:03 PM IST | Updated on: Dec 08, 2018 07:03 PM IST
گنے کے کھیت میں 14 سالہ لڑکی کی اجتماعی آبروریزی ، پکڑے جانے کے ڈر سے بعد میں کردیا قتل

علامتی تصویر

اترپردیش کے ہردوئی میں 14 سالہ لڑکی کی اجتماعی آبروریزی کے بعد قتل کے معاملہ میں پولیس نے چار ملزمین کو گرفتار کرکے جیل بھیج دیا ہے ۔ ایس پی ہردوئی کے مطابق ان ملزمین نے متاثرہ لڑکی کی پہلے اجتماعی آبروریزی کی اور پھر پکڑے جانے کے ڈر سے گنے کے کھیت میں ہی لڑکی کا منہ دباکر قتل کردیا ۔ قتل کے بعد لاش کو وہیں چھپا کر فرار ہوگئے ۔

خیال رہے کہ کوتوالی حلقہ کے گاوں میڈ میں 22 نومبر کو ایک 14 سال کی لڑکی کی گنے کے کھیت میں نیم عریاں حالت میں لاش ملی تھی ۔ لاش دیکھ کر لگ رہا تھا کہ لڑکی کے ساتھ گھنونے طریقے سے درندگی کی گئی تھی ۔ پولیس نے لاش کو قبضے میں لے کر اس کا پوسٹ مارٹم کرایا اور پوسٹ مارٹم رپورٹ آنے کے بعد یہ ثابت ہوگیا کہ نابالغ لڑکی کی آبروریزی کی گئی تھی ۔

پولیس نے اس معاملہ میں قتل ، آبروریزی اور پوسکو ایکٹ کے تحت معاملہ درج کرکے تفتیش شروع کردی تھی ۔ علاوہ میں تفتیش کے دوران پولیس کو کئی ثبوت بھی ملے ، جس کے بعد پولیس نے علاقہ کے ہی چار نوجوانوں کو ملزم بنایا ۔ علاقہ کے ہی رہنے والے رام جی (19) ، جتیش یادو (21) ، آلوک یادو (19) اور اتیندر عرف گولو (20) کو پولیس نے گرفتار کرلیا ہے۔

Loading...

یہ بھی پڑھیں : باپ نے اپنی ہی نابالغ بیٹی کو کیا چارمرتبہ حاملہ ، نشیلی اشیا کھلا کر دوسال سے کررہا تھا ریپ

 

 

Loading...