اترپردیش مدرسہ بورڈ کے نتائج پرمدارس انتظامیہ نے بچوں کو جان بوجھ کر فیل کرنے کا سنگین الزام لگایا

اترپردیش مدرسہ بورڈ کے امتحانات کے نتائج کے اعلان کے بعد سنگین الزامات عائد کئے گئے ہیں۔ جان بوجھ کر بچوں کو ایک مضمون میں فیل کئے جانے کا الزام عائد ہے۔

Aug 07, 2018 09:47 PM IST | Updated on: Aug 07, 2018 10:04 PM IST
اترپردیش مدرسہ بورڈ کے نتائج پرمدارس انتظامیہ نے بچوں کو جان بوجھ کر فیل کرنے کا سنگین الزام لگایا

یوپی مدرسہ بورڈ کے طلبا امتحان دیتے ہوئے: فائل فوٹو

اترپردیش مدرسہ بورڈ کے امتحانات کے نتائج میں سنگین خامیاں اجاگر ہوئیں۔  بڑی تعداد میں ایک ہی مضمون میں بچوں کے فیل ہونے کا ہے معاملہ  سامنے آیا ہے۔ کئی اضلاع سے ایک ہی مضمون میں فیل ہونے کی بات آ ئی ہے۔ یہی نہیں دیگر مضامین میں اچھی نمبرات لانے والے طلبا بھی فیل ہوئے ہیں۔

اس معاملے کے لئے دینی مدارس نے یو پی مدرسہ بورڈ کو ذمہ دار ٹھرایا ہے۔ انہوں نے کہا مدرسہ بورڈ کی بد نظمی کی وجہ سے بچوں کا مستقبل برباد ہو رہا ہے۔  واضح رہے کہ یو پی مدرسہ بورڈ نے گرچہ اپنے سالانہ امتحانات کے نتایج کا اعلان کر دیا ہے۔ لیکن اس بار کے نتایج میں سنگین خامیاں سامنے آ رہی ہیں۔

Loading...

امتحان کے نتائج میں صرف ایک مضمون میں فیل ہونے والے طلبا و طالبات کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے۔ ایسی بھی شکایت کی ہے بچوں نے دیگر مضامین نے تو اچھے نمبرات حاصل کئے ہیں۔ لیکن صرف ایک مضمون میں ان کو کم نمبردیا گیا ہے۔ اس بار امتحانات میں حکومت کی جانب سے سخت انتظامات کئے گئے تھے۔

واضح رہے کہ اس بار امتحانات میں  نقل پرروک لگانے کے لئےغیرمعمولی انتظامات کرنے کا دعویٰ کیا گیا تھا، لیکن ان سب دعوؤں کے با وجود مدرسہ بورڈ کے کے نتائج میں سنگین خامیاں سامنے آئیں ہیں۔

حکومت کی طرف سے امتحان میں غیرمعمولی سختیوں کے سبب اس باربڑے پیمانے پر ڈراپ آوٹ بھی سامنے آ یا ہے۔ دینی مدارس کا الزام ہے کہ حکومت نے امتحان کرانے سے پہلے دینی مدارس کے ذمہ داروں سے کوئی صلاح مشورہ نہیں کیا۔ مدرسہ بورڈ نے گرچے نتائج کا اعلان کردیا ہے، لیکن بڑی تعداد میں ایک مضمون میں طلبا اورطالبات کےفیل ہونے کے معاملے نے مدرسہ بورڈ اورانتظامیہ کو سوالوں گھیرے میں کھڑا کر دیا ہے ۔

 (الہ آباد سے مشتاق عامر کی رپورٹ)

Loading...