ایس پی - بی ایس پی میں اتحاد کا " فارمولہ " طے ، وزیر اعظم مودی کی سیٹ پر ہوگا مشترکہ امیدوار

اترپردیش میں ایس پی اور بی ایس پی میں اتحاد اب طے ہوگیا ہے ۔ بی ایس پی سپریمو مایا وتی اور سماجوادی پارٹی کے قومی صدر اکھلیش یادو 12 جنوری یعنی ہفتہ کو اس کا باضابطہ اعلان کریں گے ۔

Jan 11, 2019 02:44 PM IST | Updated on: Jan 11, 2019 02:44 PM IST
ایس پی - بی ایس پی میں اتحاد کا

ایس پی - بی ایس پی میں اتحاد کا " فارمولہ " طے ، وزیر اعظم مودی کی سیٹ پر ہوگا مشترکہ امیدوار

اترپردیش میں ایس پی اور بی ایس پی میں اتحاد اب طے ہوگیا ہے ۔ بی ایس پی سپریمو مایا وتی اور سماجوادی پارٹی کے قومی صدر اکھلیش یادو 12 جنوری یعنی ہفتہ کو اس کا باضابطہ اعلان کریں گے ۔ وزیر اعظم مودی کے پارلیمانی حلقہ وارانسی پر اتحاد مشترکہ طور پر امیدوار میدان میں اتارے گا ۔ ذرائع کے حوالے سے خبر ہے کہ ایس پی اور بی ایس پی 37-37 سیٹوں پر اپنے امیدوار کھڑے کرے گی ۔ وہیں دو سیٹوں پر راشٹریہ لوک دل کےا میدوار میدان میں اتریں گے ۔

اتحاد کے تحت راہل گاندھی کیلئے امیٹھی اور سونیا گاندھی کیلئے رائے بریلی کی سیٹیں چھوڑی جائیں گی ۔ اس سلسلہ میں اپنا دل ( ایس ) کی انوپریہ پٹیل کی سیٹ پر بھی اتحاداپنا امیدوار نہیں اتارے گا ۔ اوم پرکاش راج بھر کی سہیل دیو پارٹی کیلئے بھی ایک سیٹ ایس پی -بی ایس پی اتحاد چھوڑے گی ۔ ہفتہ کو پریس کانفرنس میں سیٹوں کی تقسیم کا بھی اعلان کیا جاسکتا ہے۔ ابھی قیاس آرائی کی جارہی ہے کہ دونوں پارٹیاں 37-37 سیٹوں پر الیکشن لڑسکتی ہیں ۔ رائے بریلی اور امیٹھی کی سیٹیں کانگریس کیلئے چھوڑی جاسکتی ہیں ، جبکہ آر ایل ڈی کو تین سیٹیں دی جاسکتی ہیں ۔

ذرائع کے مطابق دیگر ساتھیوں کے مہاگٹھ بندھن میں شامل نہیں ہونے کی صورت میں ایک ایک سیٹیں ایس پی اور بی ایس پی آپس میں تقسیم کرلیں گی ۔ کانگریس پارٹی کو فی الحال دو سے زیادہ سیٹیں دینے سے دونوں لیڈروں نے انکار کردیا ہے ۔ مانا جارہا ہے کہ ایس پی - بی ایس پی کے ساتھ آر ایل ڈی کا اتحاد طے ہے ۔ حالانکہ کانگریس پر تذبذب برقرار ہے ۔ اطلاعات کے مطابق کانگریس پارٹی سیٹیں بڑھانے کا مطالبہ کررہی ہیں ، لیکن دونوں پارٹیاں اس کیلئے تیار نہیں ہیں ۔ مایا وتی کانگریس کو زیادہ بھاو نہیں دے رہی ہیں ۔

Loading...

Loading...