اتراکھنڈ میں پھر برسی تباہی ، 30 ہلاک ، حالات پر قابو پانے کیلئے فوج طلب

دہرادون: مانسون شروع ہوتے ہی اتراکھنڈ سے بری خبریں آنی شروع ہو گئی ہیں۔ اونچائی والے علاقوں میں ہو رہی تیز بارش سے معمولات زندگی درہم برہم ہے ، تو نچلے علاقوں میں مداكني دریا کے طغیان پر ہونے سے گاؤں والوں سمیت اسکول کے بچوں کو جان خطرے میں ڈال کر ٹرالیاں سے سفر کرنا پڑ رہا ہے۔

Jul 01, 2016 12:13 PM IST | Updated on: Jul 01, 2016 01:32 PM IST
اتراکھنڈ میں پھر برسی تباہی ، 30 ہلاک ، حالات پر قابو پانے کیلئے فوج طلب

دہرادون : مانسون شروع ہوتے ہی اتراکھنڈ سے بری خبریں آنی شروع ہو گئی ہیں۔ بالائی علاقوں میں ہو رہی تیز بارش سے معمولات زندگی درہم برہم ہوگئی ۔ دریا پر جگہ جگہ بنے عارضی پل بہہ گئے ہیں۔ اتراکھنڈ میں بارش اور بادل پھٹنے سے بڑے پیمانے پر تباہی ہوئی ہے۔ اب تک 30 لوگوں کی موت کی خبر آئی ہے۔ بہت سے لوگ ملبے میں دبے ہوئے ہیں۔

الكندا اور منداکنی دریاؤں سمیت تمام ندیاں طغیانی پر ہیں۔ دریاؤں کے کنارے واقع بستیوں میں لوگوں کو الرٹ کردیا گیا ہے۔ چار دھام سفر میں جگہ جگہ رکاوٹ پیدا ہوگئی ہے۔ سری نگر گڑھوال کے بالائی اضلاع میں بارش سے شہر میں الكندا دریا کی سطح آب میں اضافہ ہوگیا ہے۔ الكندا کی سطح آب اس وقت 534.04 میٹر ہے ، جبکہ 535 میٹر پر خطرے کا انتباہ ہے۔

ادھر ڈیڑھ ماہ بعد موسم گرما کی چھٹی ​​ختم ہونے کے بعد اسکول بھی کھل چکے ہیں، محدود ٹرالياں ہونے کی وجہ سے بچوں کو وقت سے پہلے ہی اسکول کے لئے گھروں سے نکلنا پڑھ رہا ہے اور بارش میں کھڑے ہو کر انتظار کرنا پڑ رہا ہے۔ کئی جگہ پہاڑی سے پتھروں کے گرنے سے طویل جام بھی لگ گیا ہے۔ دیو پرياگ کے پاس تودے گرنے کی وجہ سے بدری ناتھ - رشی کیش ہائی وے کو بند کر دیا گیا ہے۔ چار دھام یاترا بھی جگہ جگہ رکی ہوئی ہے۔

اتراکھنڈ میں سرحدی پتھورا گڑھ ضلع کے ڈڈی ڈی هاٹ اسمبلی کے بستاڈي علاقہ میں بادل پھٹنے سے تین بچوں سمیت 5 ہلاک اور 25 سے زائد افراد کے لاپتہ ہونے کی خبر ہے۔ بادل پھٹنے کے بعد شدید اکثریت سے 8 مکانات بھی منہدم ہو گئے ہیں۔ پتھورا گڑھ میں زندگی بری طرح درہم برہم ہوگئی ہے۔ بہت سے گھروں میں ملبہ داخل ہوگیاہے تو بہت سے گھر پانی میں بہہ گئے ہیں۔ ضلع انتظامیہ محدود وسائل کے ساتھ امدادی کاموں میں مصروف ہے۔

Loading...

ادھر چمولی میں بھی شدید بارش ہوئی ہے۔ بارش سے وابستہ واقعات میں گھاٹ کے علاقے میں 6 لوگوں کے دب جانے کی اطلاع ہے جبکہ چمولی ضلع کے گھاٹ ترقیاتی بلاک میں مداكني دریا میں سیلاب آنے سے 7 افراد لاپتہ ہوگئے ہیں۔ وہیں 6 سے زائد رہائشی عمارتیں بھی پانی میں بہہ گئی ہیں۔

بھاری بارش کی وارننگ

محکمہ موسمیات نے اتراکھنڈ کے سب سے زیادہ مقامات پر ہلکی سے درمیانہ بارش کے ساتھ ہی کئی مقامات خاص طور پر نینی تال، اودھم سنگھ نگر اور چمپاوت اضلاع میں اگلے 24 گھنٹوں کے دوران بھاری بارش کی وارننگ جاری کی گئی ہے۔ محکمہ موسمیات کی طرف سے جاری ریلیز میں نینی تال، اودھم سنگھ نگر، چمپاوت، الموڈا، پوڈي، ہری دوار، دہرادون اور ٹہری اضلاع میں جمعہ صبح سے 72 گھنٹوں کے دوران بعض مقامات پر بھاری سے بہت بھاری بارش اور دیگر پانچ اضلاع میں بھاری بارش کی وارننگ دی گئی ہے۔

Loading...