تابوت میں بیٹی کی لاش لے کر شہر میں گھوم رہا ہے ایک کنبہ

کنبہ کا الزام ہے کہ اس کی بیٹی کو سسرال والوں نے زہر دے کر مار ڈالا ہے ۔ لیکن پولیس کارروائی نہیں کر رہی ہے ۔

Jul 26, 2016 10:42 AM IST | Updated on: Jul 26, 2016 10:42 AM IST
تابوت میں بیٹی کی لاش لے کر شہر میں گھوم رہا ہے ایک کنبہ

جیند : ہریانہ کے جیند شہر میں ایک بار پھر انسانیت شرمسار ہوگئی ۔  یہاں ایک خاندان انصاف کی آس لے کر اپنی بیٹی کی لاش کو لے کر گلی گلی گھوم رہا ہے ۔ کنبہ کا الزام ہے کہ اس کی بیٹی کو سسرال والوں نے زہر دے کر مار ڈالا ہے ۔ لیکن پولیس کارروائی نہیں کر رہی ہے ۔ کنبہ اپنی لاڈلی کی لاش کو ایک فریزر میں لے کر گھوم رہا ہے اور لوگوں کو بتا رہا ہے کہ بیٹی پیدا مت کرنا ، نہیں تو یہی حال ہوگا ۔

جیند کی گھاسو گاؤں کی رہنے والی ایک لڑکی کی شادی 6 سال پہلے جیند کے اوچانا کے رہنے والے سچن سے ہوئی تھی لیکن شادی کے بعد سے ہی اسے پریشان کیا جانے لگا ۔ اہل خانہ کا الزام ہے کہ لڑکی کے سسرال والوں نے پہلے اس کو زہر دیا اور پھر ریلوے لائن پر مرنے کے لئے چھوڑ دیا ۔ لڑکی کے اہل خانہ کو جب اطلاع ملی ، تو وہ اسے فوری طور پر اسپتال لے گئے ، لیکن اس کو بچایا نہیں جا سکا ۔ اہل خانہ نے معاملے کی پولیس میں شکایت کی ، لیکن وہاں بھی ان کی نہیں سنی گئی ، جس کے بعد مجبور ہوکر اہل خانہ کو یہ راستہ اختیار کرنا پڑا۔

Loading...

ایک طرف یہ کنبہ اپنی بیٹی کے لئے انصاف مانگ رہا ہے ، تو دوسری طرف کھٹر صاحب کی ہریانہ پولیس کا یہ غیر انسانی چہرہ بھی دیکھنے کو ملا ۔ ہریانہ پولیس کے افسران کنبہ کو تسلی دینے کے اور ان کی شکایت پر کارروائی کرنے کی بجائے اپنے رعب سے اس کنبہ کو ڈرانے کی کوشش کر رہے ہیں ۔ معاملہ میڈیا میں آنے کے بعد ہریانہ پولیس کا پرانا جواب ہے کہ معاملہ درج کر لیا گیا ہے ، لیکن حقیقت یہ ہے کہ معاملہ درج کرنے کے باوجود ابھی تک کسی کی گرفتاری نہیں ہوئی ہے ۔

Loading...