ہوم » نیوز » اسپورٹس

آئی پی ایل کے وہ 8 بلے باز، جنہوں نے دو الگ الگ ٹیموں کے لئے لگائی ہیں سنچری

انڈین پریمیئر لیگ 2020 (IPL 2020) کا آغاز 19 ستمبر سے متحدہ عرب امارات میں ہو رہا ہے۔ ٹورنامنٹ شروع ہونے سے پہلے جانئے اس کے بے حد دلچسپ حقائق کے بارے میں۔

  • Share this:
آئی پی ایل کے وہ 8 بلے باز، جنہوں نے دو الگ الگ ٹیموں کے لئے لگائی ہیں سنچری
آئی پی ایل کے وہ 8 بلے باز، جنہوں نے دو الگ الگ ٹیموں کے لئے لگائی ہیں سنچری

انڈین پریمیئر لیگ 2020 (IPL 2020) کا آغاز آئندہ ماہ 19 ستمبر سے ہونے والا ہے۔ کورونا وائرس کے سبب اس بار یہ ٹورنامنٹ ہندوستان سے باہر دبئی میں کھیلا جا رہا ہے۔ یہ تیسرا موقع ہے جب دنیا کی سب سے بڑی کرکٹ لیگ ملک سے باہر ہو رہی ہے۔ 2009 میں آئی پی ایل کا انعقاد جنوبی افریقہ میں کیا گیا تھا۔ وہیں 2014 میں ٹورنامنٹ کا آدھا حصہ متحدہ عرب امارات میں ہی منعقد کیا گیا تھا۔ ٹورنامنٹ کے آغاز سے پہلے نیوز 18 آپ کو بتا رہا ہے کہ آئی پی ایل کے دلچسپ حقائق کے بارے میں۔ اس رپورٹ میں ہم آپ کو بتائیں گے ان بلے بازوں کے بارے میں، جنہوں نے دو الگ الگ ٹیموں سے کھیلتےہوئے آئی پی ایل میں سنچری لگائی ہیں۔


8 بلے بازوں نے لگائی ہیں دو الگ الگ ٹیموں سے سنچری


آئی پی ایل کے 12 سیزن (IPL 2020) میں اب تک کل 57 سنچریاں لگ چکی ہیں۔ اس ٹورنامنٹ میں کل 13 ٹیمیں کھیلی ہیں، جس میں سب سے زیادہ 12 سنچری رائل چیلنجرس بنگلور کی طرف سے لگی ہیں۔ دوسرے نمبر پر کنگس الیون پنجاب ہے، جس کی طرف سے کل 10 سنچریاں لگ چکی ہیں۔ لیکن آپ کو بتا دیں کہ اس ٹورنامنٹ کی تاریخ میں صرف 8 ہی بلے باز ایسے ہیں، جنہوں نے دو الگ الگ ٹیموں سے کھیلتے ہوئے آئی پی ایل میں سنچری لگائی ہیں۔


ایڈم گلکرسٹ نے آئی پی ایل میں دو الگ الگ ٹیموں سے کھیلتے ہوئے سنچری لگائی ہیں۔ آسٹریلیا کے اس سابق عظیم بلے باز نے اپنی پہلی سنچری سال 2008 میں دکن چارجرس، حیدرآباد کی طرف سے کھیلتے ہوئے لگائی تھی۔ انہوں نے ممبئی کے وانکھیڑے اسٹیڈیم میں ممبئی انڈینس کے خلاف محض 47 گیندوں میں ناٹ آوٹ 109 رنوں کی اننگ کھیلی تھی۔ اس کے بعد ایڈم گلکرسٹ نے 17 مئی، 2011 کو ایک اور آئی پی ایل سنچری لگائی۔ اس بار انہوں نے کنگنس الیون پنجاب کے لئے کھیلتےہوئے رائل چیلنجرس بنگلور کے خلاف سنچری لگائی۔ ایڈم گلکرسٹ نے 55 گیندوں میں 106 رنوں کی اننگ کھیلی۔

ایڈم گلکرسٹ نے آئی پی ایل میں دو الگ الگ ٹیموں سے کھیلتے ہوئے سنچری لگائی ہیں۔
ایڈم گلکرسٹ نے آئی پی ایل میں دو الگ الگ ٹیموں سے کھیلتے ہوئے سنچری لگائی ہیں۔


ویریندر سہواگ کے نام بھی آئی پی ایل میں دو الگ الگ ٹیموں سے کھیلتے ہوئے سنچری لگانے کا ریکارڈ ہے۔ سہواگ نے 5 مئی 2011 کو دہلی ڈیئر ڈیولس کے لئے کھیلتے ہوئے 119 رنوں کی اننگ کھیلی تھی۔ سہواگ نے یہ بے مثال اننگ دکن چارجرس کے خلاف ہی کھیلی تھی۔ اس کے تین سال بعد ویریندر سہواگ نے ایک اور آئی سنچری لگائی۔ اس بار انہوں نے چنئی سپر کنگس کے خلاف 58 گیندوں میں 122 رن بنائے۔ یہ سنچری ویریندر سہواگ نے کنگس الیون پنجاب کی طرف سے کھیلتے ہوئے لگائی۔



 ویریندر سہواگ کے نام بھی آئی پی ایل میں دو الگ الگ ٹیموں سے کھیلتے ہوئے سنچری لگانے کا ریکارڈ ہے۔

ویریندر سہواگ کے نام بھی آئی پی ایل میں دو الگ الگ ٹیموں سے کھیلتے ہوئے سنچری لگانے کا ریکارڈ ہے۔



 کرس گیل نے آئی پی ایل میں 3-2 نہیں بلکہ سب سے زیادہ 6 سنچریاں لگائی ہیں۔ کرس گیل نے رائل چیلنجرس بنگلور کے لئے 5 آئی پی ایل کھیلے ہیں، جبکہ کنگس الیون پنجاب کے لئے کھیلتے ہوئے انہوں نے ایک سنچری لگائی ہے۔ کرس گیل نےسال 2011 میں آرسی بی کے لئے دو سنچری لگائی۔ ان کی پہلی آئی پی ایل سنچری کولکاتا نائٹ رائیڈرس کے خلاف ہے، اس کے بعد انہوں نے کنگس الیون پنجاب کے خلاف لگائی۔ کرس گیل نے 2012 دہلی ڈیئر ڈیولس کے خلاف ایک بار پھر سنچری لگائی۔ غضب کی بات یہ رہی کہ سال 2018 میں کرس گیل نے کنگس الیون پنجاب کی طرف سے کھیلتے ہوئے سن رائزرس حیدرآباد کے خلاف سنچری لگائی۔



  کرس گیل نے آئی پی ایل میں 3-2 نہیں بلکہ سب سے زیادہ 6 سنچریاں لگائی ہیں۔

کرس گیل نے آئی پی ایل میں 3-2 نہیں بلکہ سب سے زیادہ 6 سنچریاں لگائی ہیں۔



ڈیوڈ وارنر نے آئی پی ایل میں کل 4 سنچریاں لگائی ہیں۔ اس آسٹریلیائی سلامی بلے باز نے دہلی ڈیئر ڈیولس اور سن رائزرس حیدرآباد کے لئے 2-2 سنچری لگائی ہیں۔ ڈیوڈ وارنر نے پہلی آئی پی ایل سنچری دہلی ڈیئرڈیول کی طرف سے سال 2010 میں لگائی۔ انہوں نے کولکاتا نائٹ رائیڈرس کے خلاف 69 گیندوں میں ناٹ آوٹ 107 رنوں کی اننگ کھیلی۔ 2012 میں ڈیوڈ وارنر نے دہلی کے خلاف کھیلتے ہوئے 109 رنوں کی اننگ کھیلی۔ ان کی یہ سنچری دکن چارجرس کے خلاف نکلی۔ سال 2017 میں ڈیوڈ وارنر نے سن رائزرس حیدرآباد کے لئے کھیلتے ہوئے 59 گیندوں میں 126 رنوں کی اننگ کھیلی۔ ڈیوڈ وارنر نے یہ سنچری کولکاتا نائٹ رائیڈرس کے خلاف لگائی۔ اس کے بعد گزشتہ سیزن میں انہوں نے رائل چیلنجرس بنگلور کے خلاف 55 گیندوں میں 100 رنوں کی اننگ کھیلی۔


شین واٹسن نے بھی آئی پی ایل میں 4 سنچریاں لگائی ہیں۔ انہوں نے دو سنچری راجستھان رائلس اور 2 سنچری چنئی سپرکنگس کے لئے لگائی ہیں۔ شین واٹسن نے پہلی سنچری چنئی سپرکنگس کے خؒاف 2013 میں لگائی تھی۔ اس کے بعد انہوں نے 2015 میں کولکاتا نائٹ رائیڈرس کے خلاف سنچری لگائ۔ شین واٹسن کی ٹیم بدلی اور انہوں نے چنئی سپرکنگس کے لئے کھیلتے ہوئے راجستھان رائلس اور سن رائزرس حیدرآباد کے خلاف سنچری لگادی۔

اے بی ڈیویلیئرس نے بھی دو ٹیموں دہلی ڈیئر ڈیولس اور رائل چیلنجرس بنگلور کے لئے سنچری لگائی ہے۔ ڈیویلیئرس نے آئی پی ایل میں تین سنچری لگائی ہے۔ پہلی سنچری انہوں نے 2009 میں چنئی سپرکنگس کے خلاف لگائی تھی۔ انہوں نے 54 گیندوں میں ناٹ آوٹ 105 رنوں کی اننگ کھیلی تھی۔ اس کے بعد 2015 میں اے بی ڈیویلیئرس نے بنگلور کے لئے کھیلتے ہوئے سنچری لگائی۔ انہوں نے ممبئی انڈینس کے خلاف محض 59 گیندوں میں ناٹ آوٹ 133 رن بنائے۔ 2016 میں ڈیویلیئرس نے گجرات لائنس کے خلاف 52 گیندوں میں ناٹ آوٹ 129 رنوں کی اننگ کھیلی۔

 
Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 19, 2020 05:51 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading