உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Asia Cup 2022: پاکستان کی نظر مسلسل دوسری جیت کے ساتھ فائنل کی طرف، افغانستان بھی کم نہیں

    ایشیا کپ 2022: پاکستان کی نظر مسلسل دوسری جیت کے ساتھ فائنل کی طرف

    ایشیا کپ 2022: پاکستان کی نظر مسلسل دوسری جیت کے ساتھ فائنل کی طرف

    Asia Cup 2022: پاکستان نے ایشیا کپ کے سپر-4 میں بہترین شروعات کی ہے۔ ٹیم نے پہلے میچ میں ہندوستان کو شکست دی تھی۔ اس کی نظر مسلسل دوسری جیت پر ہے، لیکن افغانستان کی بھی کارکردگی اب تک اچھی رہی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      شارجہ: بابر اعظم (Babar Azam) کی قیادت میں پاکستان نے سپر-4 میں بہترین آغاز کیا ہے۔ ٹیم نے ٹی20 ایشیا کپ (Asia Cup 2022) کے اپنے پہلے مقابلے میں ہندوستان کو 5 وکٹ سے شکست دی۔ ہر ٹیم کو سپر-4 میں تین مقابلے کھیلنے ہیں۔ پاکستانی ٹیم کو اپنے دوسرے مقابلے میں بدھ 7 ستمبر کو افغانستان سے مد مقابل ہونا ہے۔ ٹیم یہ میچ جیت کر فائنل کی طرف قدم بڑھانا چاہے گی۔ افغانستان کو سپر-4 کے پہلے مقابلے میں سری لنکا سے شکست ملی تھی، لیکن پاکستانی ٹیم اسے ہلکے میں نہیں لینا چاہے گی۔ افغانستان نے گروپ راونڈ میں سری لنکا اور بنگلہ دیش دونوں کو پٹخنی دی تھی اور گروپ بی میں ٹاپ پر ہی تھی۔

      بابر اعظم اس میچ سے پھر پرانا فارم حاصل کرنا چاہیں گے۔ پہلے تین میچ میں وہ کچھ خاص نہیں کرسکے ہیں۔ پہلے میچ میں انہوں نے ہندوستان کے خلاف 10 رن بنائے تھے۔ پھر ہانگ کانگ کے خلاف 14 اور ٹیم انڈیا کے خلاف 14 رن بنائے تھے۔ یعنی وہ کسی بھی میچ میں 20 رن کا اعدادوشمار نہیں چھو سکے ہیں۔ دوسری طرف محمد رضوان بہترین فارم میں ہیں۔ وہ 3 میں سے 2 میچوں میں نصٖ سنچری لگاچکے ہیں۔ گزشتہ میچ میں انہوں نے ہندوستان کے خلاف نصف سنچری لگاکر ٹیم کو جیت دلائی تھی۔

       بابر اعظم اس میچ سے پھر پرانا فارم حاصل کرنا چاہیں گے۔ پہلے تین میچ میں وہ کچھ خاص نہیں کرسکے ہیں۔

      بابر اعظم اس میچ سے پھر پرانا فارم حاصل کرنا چاہیں گے۔ پہلے تین میچ میں وہ کچھ خاص نہیں کرسکے ہیں۔


      فارم میں ہیں گیند باز

      پاکستان کے تیز گیند بازوں کے علاوہ اسپنرس بہترین فارم میں ہیں۔ بائیں ہاتھ کے اسپنر محمد نواز نے سب سے زیادہ 7 وکٹ حاصل کئے ہں۔ ان کی اکنامی بھی بہترین ہے۔ آخری میچ میں انہوں نے ہندوستان کے خلاف بلے سے 42 رن بناکر ٹیم کو جیت دلانے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔ وہیں لیگ اسپنر شاداب خان 6 وکٹ حاصل کئے ہیں۔ ان کی اکنامی 6 سے کم کی ہے، جو بہترین ہے۔ تیز گیند باز نسیم شاہ بھی 5 وکٹ حاصل کرچکے ہیں۔ فخر زماں، خوش دل شاہ اور آصف علی نے ملے مواقع پر خود کو ثابت کیا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      ASIA CUP 2022: بابر اعظم کے ‘تاج‘ کو خطرہ؟ سوریہ کمار اور رضوان T20I رینکنگ میں نکل سکتے ہیں آگے

      یہ بھی پڑھیں۔

      ASIA CUP 2022: کرکٹ کی خاطر چھوڑی پڑھائی، تیز گیند باز سے بنا اسپنر، اب ہندوستان کو دیا گہرا زخم

      یہ بھی پڑھیں۔

      Asia Cup 2022: ارش دیپ کو ہدف بناکر ہندوستان میں فرقہ وارانہ تشدد شروع کرنا چاہتا تھا پاکستان

      افغانستان کے بلے باز فارم میں

      افغانستان کی بات کی جائے، تو اس نے پہلے میچ میں سری لنکا کو 8 وکٹ سے اور پھر بنگلہ دیش کو 7 وکٹ سے شکست دی تھی۔ سپر-4 کے مقابلے میں بھی اس نے سری لنکا کے خلاف 175 رنوں کا پُرچیلنج اسکور بنایا تھا۔ حالانکہ گیند باز اس اسکور کا بچاو نہیں کرسکے تھے۔ رحمان اللہ گرباز ایک نصف سنچری کے سہارے 135 رن بناچکے ہیں۔ حالانکہ دیگر کوئی بلے باز نصف سنچری نہیں لگا سکا ہے۔ ابراہیم زادران نے بھی 97 رن بنائے ہیں۔

      راشد خان کی کارکردگی اوسط سے نیچے

      لیگ اسپنر راشد خان اب تک امید کے مطابق کارکردگی نہیں پیش کرسکے ہیں۔ انہوں نے تین میچوں میں 4 وکٹ حاصل کئے ہیں۔ دوسری طرف آف اسپنر مجیب الرحمن نے اب تک کمال کی گیند بازی کی ہے۔ انہوں نے 10 کی اوسط سے سب سے زیادہ 7 وکٹ حاصل کئے ہیں۔ اکنامی 6 سے کم کا ہے۔ دیگر گیند بازوں نے ٹھیک ٹھاک کارکردگی رہی ہے۔ ایسے میں ایک بار پھر دلچسپ مقابلے کی امید کی جارہی ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: