உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستانی اسپنر شاداب خان نے ایشیا کپ فائنل میں شکست کی ذمہ داری لیتے ہوئے مانگی معافی

    پاکستانی آل راونڈر شاداب خان نے ایشیا کپ فائنل میں شکست کے بعد معافی مانگی۔

    پاکستانی آل راونڈر شاداب خان نے ایشیا کپ فائنل میں شکست کے بعد معافی مانگی۔

    Asia Cup Final: سری لنکا کے لئے کرکٹ کے میدان پر اس کے 11 کھلاڑی اتوار کو ہیرو بن کر ابھرے، جنہوں نے پاکستان کو 23 رنوں سے شکست دے کر چھٹی بار ایشیا کپ جیتا اور ملک کے باشندوں کے چہروں پر مسکان بکھیر دی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      دبئی: دبئی انٹرنیشنل اسٹیڈیم میں اتوار کو سری لنکا کے خلاف ایشیا کپ 2022 کے فائنل میں اپنی ٹیم کی شکست کے بعد پاکستان کے آل راونڈر کھلاڑی شاداب خان نے اس کی پوری ذمہ داری لی ہے۔ داسن شناکا کی قیادت والی سری لنکائی ٹیم نے فائنل میچ میں پاکستان کو 23 رنوں سے شکست دے کر چھٹا ایشیا کپ خطاب اپنے نام کیا۔ ہار کے بعد، شاداب خان نے مقابلے میں کیچ چھوڑنے کے لئے معافی مانگی اور کہا کہ وہ اس نتیجے کی پوری ذمہ داری لیتے ہیں۔

      شاداب خان نے ٹوئٹ کیا، ’میچ جیتنے کے لئے کیچ ضروری ہوتے ہیں۔ میں معافی مانگتا ہوں اور ہار کی پوری ذمہ داری لیتا ہوں۔ میں نے اپنی ٹیم کو میچ میں نیچے کردیا۔ نسیم شاہ، حارث روف، محمد نواز اور پورا گیند بازی اٹیک کمال کا تھا۔ محمد رضوان نے کافی جدوجہد کیا۔ پوری ٹیم نے اپنی بہتر کارکردگی پیش کی۔ سری لنکا کو مبارکباد‘۔ یہ یاد رکھنا بے حد اہم ہے کہ شاداب خان نے فائنل میں سری لنکا کے خلاف دو کیچ چھوڑے اور اننگ کے آخر میں ایک چھکا لگایا۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      ایشیا کپ میں ملی شکست کے بعد امیزون پر فروخت ہو رہی ہے پاکستانی جھنڈے والی بکنی! پڑھ کر رہ جائیں گے حیران


      یہ بھی پڑھیں۔

      ایشیا کپ 2022 فائنل: سری لنکا سے کیوں ملی ہار؟ پاکستان کے کپتان بابر اعظم نے بتائیں غلطیاں


      فائنل میں ایک وقت پانچ وکٹ 58 رن پر گنوانے کے بعد بھانوکا راج پکشے کے 45 گیندوں پر ناٹ آوٹ 71 رنوں کی مدد سے سری لنکا نے چھ وکٹ پر 170 رن بنائے۔ راج پکشے کا ساتھ وانندو ہسرنگا نے نبھایا، جنہوں نے 21 گیندوں میں 36 رنوں کی اننگ کھیلی۔ ان دونوں نے 58 رنوں کی طوفانی شراکت داری کی۔ جواب میں پاکستانی ٹیم 147 رنوں پر آوٹ ہوگئی، جبکہ ایک وقت اس کا اسکور دو وکٹ پر 93 رن تھا۔ تیز گیند باز پرمود مدھوشان نے چار اوور میں 34 رن دے کر 4 اور لیگ اسپنر وانندو ہسرنگا نے 4 اوور میں 27 رن دے کر تین وکٹ حاصل کئے۔

      وانندو ہسرنگا نے 17ویں اوور میں تین وکٹ حاصل کرکے پاکستان کی امیدوں پر پانی پھیر دیا۔ اس سے پہلے مدھوشان نے بابر اعظم (5) اور فخر زماں (0) کو آوٹ کرکے سری لنکا کا شکنجہ کس دیا تھا۔ محمد رضوان نے 49 گیندوں میں 55 رن بنائے، جبکہ افتخار احمد نے 31 گیندوں میں 32 رن جوڑے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: