உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ایشیا کپ میں بغیر کوئی گیند پھینکے پاکستانی گیند باز نے لٹائے 8 رن، سالوں پرانا قصہ سن کر رہ جائیں گے حیران

    ایشیا کپ میں بغیر کوئی گیند پھینکے پاکستانی گیند باز نے لٹائے 8 رن

    ایشیا کپ میں بغیر کوئی گیند پھینکے پاکستانی گیند باز نے لٹائے 8 رن

    ایشیا کپ میں 1984 سے اب تک ایسے کئی ریکارڈ بنے ہیں، جنہیں جان کر لوگ سوچنے پر مجبور ہوجاتے ہیں۔ ایک ایسا ہی نہ چاہنے والا ریکارڈ پاکستان کے سابق میڈیم پیسر عبدالرحمٰن (Abdur Rehman) کے نام درج ہے۔ دراصل، سال 2014 میں بغیر کوئی گیند پھینکے 8 رن لٹا دیئے تھے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی: ایشیا کپ 2022 (Asia Cup 2022) کا آغاز ہوچکا ہے۔ اس مشہور ٹورنا منٹ کا پہلا ایڈیشن سال 1984 میں کھیلا گیا تھا۔ تب یہ ٹورنا منٹ ونڈے فارمیٹ میں کھیلا جاتا تھا۔ حالانکہ گزشتہ کچھ وقت سے اب یہ ٹی20 فارمیٹ میں کھیلا جا رہا ہے۔ ایشیا کپ کی سب سے کامیاب ٹیم ہندوستان ہے۔ ہندوستان نے اس ٹورنا منٹ میں سب سے زیادہ سات بار خطاب پر اپنا قبضہ جمایا ہے۔ وہیں دوسری سب سے کامیاب ٹیم سری لنکا ہے۔ سری لنکا نے پانچ بار خطاب اپنے نام کیا ہے۔ اس کے بعد پاکستانی ٹیم کا نمبر آتا ہے۔ ہندوستان کی سب سے بڑی حریف ٹیم پاکستان اس ٹورنا منٹ میں دو بار کامیابی حاصل کرچکی ہے۔

      ایشیا کپ میں 1984 سے اب تک ایسے کئی ریکارڈ بنے ہیں، جنہیں جان کر لوگ سوچنے پر مجبور ہوجاتے ہیں۔ ایک ایسا ہی نہ چاہنے والا ریکارڈ پاکستان کے سابق میڈیم پیسر عبدالرحمٰن (Abdur Rehman) کے نام درج ہے۔ دراصل، سال 2014 ایشیا کپ کے آٹھویں مقابلے میں پاکستانی ٹیم کا مقابلہ بنگلہ دیش کے ساتھ چل رہا تھا۔ اس مقابلے میں پاکستانی ٹیم نے 11واں اوور عبدالرحمٰن کو تھمایا۔ اس اوور میں پاکستانی تیز گیند باز نے کچھ ایسا کیا، جس کے بعد ان کا نام ایشیا کپ کے ریکارڈ بک میں درج ہوگیا۔

      عبدالرحمٰن نے اپنے اس اوور کی پہلی گیند بلے باز کے سر کے اوپر سے ڈالا۔ دراصل، گیند بازی کے دوران ان کے ہاتھ سے گیند پھسل گئی اور گیند بلے باز کے سر کے اوپر سے نکل گیا۔
      عبدالرحمٰن نے اپنے اس اوور کی پہلی گیند بلے باز کے سر کے اوپر سے ڈالا۔ دراصل، گیند بازی کے دوران ان کے ہاتھ سے گیند پھسل گئی اور گیند بلے باز کے سر کے اوپر سے نکل گیا۔


      عبدالرحمٰن نے اپنے اس اوور کی پہلی گیند بلے باز کے سر کے اوپر سے ڈالا۔ دراصل، گیند بازی کے دوران ان کے ہاتھ سے گیند پھسل گئی اور گیند بلے باز کے سر کے اوپر سے نکل گیا۔ اس گیند پر اپوزیشن ٹیم کو نو بال کے طور پر ایک رن حاصل ہوئی۔ اگلی گیند انہوں نے فل ٹاس ڈالی، جو کمر سے کافی اوپر تھی۔ امپائر نے اسے بھی نوبال قرار دیا اور اپوزیشن ٹیم نے اس گیند پر ایک سنگل بھی حاصل کیا۔

      کرکٹ کے میدان میں اکثر دیکھا جاتا ہے کہ اگر گیند باز دو گیند مسلسل کمر کی اونچائی سے زیادہ پھینکتا ہے تو اسے ہٹا دیا جاتا ہے۔ حالانکہ امپائر نے عبدالرحمٰن کے خلاف تھوڑی نرمی برتی، لیکن وہ یہاں بھی ناکام رہے۔ پاکستانی تیز گیند باز نے تیسری گیند بھی کمر سے اوپر ڈالی۔ امپائر نے اسے ایک بار پھر نو بال قرار دے دیا۔ یہی نہیں انہیں تیسری گیند پر چوکا بھی لگانا پڑا، جس کی وجہ سے انہیں پانچ رن لٹانے پڑے۔

       

      عبدالرحمٰن کی مسلسل خراب گیند سے پریشان ہوکر آخر کار امپائر کو انہیں ہٹانا پڑا۔ انہوں نے اس اوور میں تین گیند پھینکے، جو تینوں نو بال رہیں۔ اس دوران اپوزیشن ٹیم کو کل آٹھ رن حاصل ہوئے۔ اس طرح عبدالرحمٰن ایشیا کپ میں بغیر کوئی گیند پھینکے آٹھ رن لٹانے والے گیند باز بن گئے۔

      عبدالرحمٰن کی گیند بازی

      پہلی گیند، نو بال: ایک رن

      دوسری گیند، نو بال: ایک رن+ بلے بازوں نے بھاگ کر ایک رن لئے= دو رن

      تیسری گیند، نو بال: ایک رن+چوکا= پانچ رن
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: