اپنا ضلع منتخب کریں۔

    انڈونیشیا میں فٹبال میچ کے دوران بھیانک ہنگامہ آرائی، کم از کم 127 افراد ہلاک، کئی افراد زخمی، مچی بھگدڑ

    لیگ نے فسادات کے بعد ایک ہفتے کے لیے کھیلوں کو معطل کر دیا ہے

    لیگ نے فسادات کے بعد ایک ہفتے کے لیے کھیلوں کو معطل کر دیا ہے

    انڈونیشیا کی فٹ بال ایسوسی ایشن (PSSI) نے ہفتے کی رات دیر گئے ایک بیان جاری کرتے ہوئے اس واقعے پر افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ ایک ٹیم ملنگ کے لیے روانہ ہو گئی ہے تاکہ کھیل کے بعد کیا ہوا اس کی تحقیقات شروع کی جائے گی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • inter, IndiaIndonesia Indonesia
    • Share this:
      خبر رساں ادارے روئٹرز نے انڈونیشیا پولیس کے حوالے سے خبر دی ہے کہ انڈونیشیا میں فٹبال میچ کے دوران تشدد کے بعد بھگدڑ مچنے سے کم از کم 127 افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے۔ یہ واقعہ ہفتے کی رات مشرقی جاوا میں ملنگ ریجنسی کے کنجوروہان اسٹیڈیم میں انڈونیشیا کی ٹاپ لیگ بی آر آئی لیگا ون (BRI Liga 1) کے فٹ بال میچ کے دوران پیش آیا۔

      افنتا نے اتوار کو ایک بیان میں کہا کہ اس واقعے میں 127 افراد کی موت ہوئی، جن میں سے دو پولیس اہلکار ہیں۔ چونتیس افراد اسٹیڈیم کے اندر اور باقی اسپتال میں دم توڑ گئے۔ سوشل میڈیا پر پوسٹ کی گئی ویڈیو فوٹیج میں لوگوں کو ملنگ کے اسٹیڈیم کی پچ پر بھاگتے ہوئے اور باڈی بیگز کی تصاویر کو دکھایا گیا ہے۔

      مشرقی جاوا صوبے میں انڈونیشیا کے پولیس چیف نیکو افینٹا نے صحافیوں کو بتایا کہ اریما ایف سی اور پرسیبا سورابایا کے درمیان میچ کے بعد ہارنے والے حامیوں کے پچ پر حملہ کرنے کے بعد حکام کو آنسو گیس فائر کرنا پڑی، جس کے نتیجے میں بھگدڑ مچ گئی اور دم گھٹنے کے واقعات ہوئے۔

      بیان میں کہا گیا کہ فٹ بال ایسوسی ایشن کو کنجوروہان اسٹیڈیم میں اریما کے حامیوں کی حرکتوں پر افسوس ہے۔ ہمیں واقعے کے لیے متاثرہ خاندانوں اور تمام فریقین سے افسوس ہے اور معافی مانگتے ہیں۔ اس کے لیے پی ایس ایس آئی نے فوری طور پر ایک تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی اور فوری طور پر ملنگ کے لیے روانہ ہو گئے۔


      انڈونیشیا کی فٹ بال ایسوسی ایشن (PSSI) نے ہفتے کی رات دیر گئے ایک بیان جاری کرتے ہوئے اس واقعے پر افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ ایک ٹیم ملنگ کے لیے روانہ ہو گئی ہے تاکہ کھیل کے بعد کیا ہوا اس کی تحقیقات شروع کی جائے گی۔لیگ نے فسادات کے بعد ایک ہفتے کے لیے کھیلوں کو معطل کر دیا ہے جس میں کم از کم 127 افراد ہلاک اور 180 زخمی ہو گئے تھے۔ اریما ایف سی ٹیم کو اس سیزن کے بقیہ مقابلے کی میزبانی سے بھی منع کر دیا گیا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: 





      لیگ کے مالک پی ٹی ایل آئی بی کے صدر ڈائریکٹر احمد ہادیان لوکیتا نے کہا کہ ہم نے اس فیصلے کا اعلان پی ایس ایس آئی کے چیئرمین کی طرف سے ہدایت ملنے کے بعد کیا۔ ہم ہر چیز کا احترام کرتے ہوئے اور پی ایس ایس آئی کی جانب سے تفتیشی عمل کا انتظار کرتے ہوئے ایسا کر رہے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: