ہوم » نیوز » اسپورٹس

پاکستان کرکٹ ٹیم میں چل رہا تھا من مرضی کا کھیل، کپتان بے بس، کوئی دوسرا منتخب کرتا تھا پلیئنگ الیون

آئی سی سی کرکٹ عالمی کپ کے سیمی فائنل میں نہیں پہنچ پانےکےبعد پاکستان کرکٹ ٹیم کی ایک بڑی سچائی سامنےآئی ہے۔

  • Share this:
پاکستان کرکٹ ٹیم میں چل رہا تھا من مرضی کا کھیل، کپتان بے بس، کوئی دوسرا منتخب کرتا تھا پلیئنگ الیون
سرفرازاحمد نہیں مکی آرتھر پلیئنگ الیون منتخب کرتے تھے۔

آئی سی سی کرکٹ عالمی کپ 2019 میں ناکامی کےبعد سے پاکستان کرکٹ ٹیم میں کئی تبدیلیاں ہوگئی ہیں۔ پاکستان کےہیڈ کوچ مکی آرتھرسمیت پورے معاون اسٹاف کوہٹا دیا گیا ہے۔ کپتان سرفرازاحمد کی کپتانی پرسوال کھڑے کئےگئے۔ حالانکہ اب پاکستان کےسابق گیند بازی کوچ اظہرمحمود نےبڑا انکشاف کیا ہے۔ اظہرمحمود نےبیان دیا ہےکہ پاکستان کی پلیئنگ الیون منتخب کرنےکا حق کپتان کے پاس تھا ہی نہیں۔


پاکستان کا کپتان بے بس


پاکستان کےسابق گیند بازی کوچ اظہرمحمود نےانکشاف کیا کہ ٹیم کی پلیئنگ الیون کپتان  سرفرازاحمد نہیں بلکہ کوچ مکی آرتھرمنتخب کرتےتھے۔ سال2017 میں چمپئنزٹرافی جیتنےکے بعد سے پلیئنگ الیون مکی آرتھرہی چنتے تھے۔ اظہرمحمود کے اس انکشاف سے واضح ہوگیا ہے کہ پاکستانی کرکٹ ٹیم کا کپتان پوری طرح بے بس ہے۔


اظہرمحمود اورسرفرازاحمد۔
اظہرمحمود اورسرفرازاحمد۔


یہی نہیں اظہرمحمود نےعالمی کپ کےلئےمنتخب کی گئی پاکستانی ٹیم پربھی سوال کھڑے کئے۔ انہوں نےکہا کہ عثمان شینواری کوعالمی کپ میں موقع ملنا چاہئےتھا کیونکہ ان کی کارکردگی شاندارتھی، لیکن انہیں موقع نہیں دیا گیا۔ واضح رہےکہ عثمان شینواری بائیں ہاتھ کے تیزگیند بازہیں اورانہوں نے 15 میچ میں 28 وکٹ اپنےنام کئے ہیں۔ ان کی فٹنس بھی اچھی ہے، اس کےباوجود 25 سال کےاس گیند بازکوپاکستان کی عالمی کپ ٹیم میں جگہ نہیں ملی۔

گرانٹ فلاور نے بھی عائد کئے تھے بڑے الزامات۔
گرانٹ فلاور نے بھی عائد کئے تھے بڑے الزامات۔


گرانٹ فلاورنے بھی عائد کئے تھے الزامات

اظہرمحمود صرف نہیں پانچ سالوں تک پاکستان کے بلے بازی کوچ رہے گرانٹ فلاورنے بھی پی سی بی اورپاکستان کےسابق کھلاڑیوں پردھوکہ دہی کےالزامات عائد کئےتھے۔ گرانٹ فلاورنےبلے بازی کوچ عہد ے سےہٹائےجانےکے بعد الزام لگایا کہ انہیں پاکستان کے کئی سابق کھلاڑیوں نےدھوکہ دیا۔ اس کےعلاوہ انہوں نے پی سی بی کوسیاست سے متاثربتایا تھا۔ یہی نہیں گرانٹ فلاورنے پاکستان میں آزادی اورسیکورٹی کی بےحد کمی ہونے کی بھی بات کہی تھی۔
First published: Aug 20, 2019 08:56 PM IST