ہوم » نیوز » اسپورٹس

شکیب الحسن- محمود اللہ کے خراب برتاو سے مایوس بنگلہ دیشی امپائر کا عہدے سے استعفیٰ

بنگلہ دیشی امپائر منیرالزماں (Moniruzzaman) نے حال ہی میں شروع ہوئے ڈھاکہ پریمیئر لیگ (Dhaka Premier League T20) میں محمود اللہ (Mahmudullah) کے ساتھ ہوئے تنازعہ کے بعد عہدہ چھوڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔

  • Share this:
شکیب الحسن- محمود اللہ کے خراب برتاو سے مایوس بنگلہ دیشی امپائر کا عہدے سے استعفیٰ
شکیب الحسن- محمود اللہ کے خراب برتاو سے مایوس بنگلہ دیشی امپائر منیرالزماں نے چھوڑا عہدہ

نئی دہلی: بنگلہ دیشی امپائر منیرالزماں (Moniruzzaman) نے حال ہی میں شروع ہوئے ڈھاکہ پریمیئر لیگ (Dhaka Premier League T20) میں محمود اللہ (Mahmudullah) کے ساتھ ہوئے تنازعہ کے بعد عہدہ چھوڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔ منیرالزماں اور مرشد علی خان موجودہ وقت میں بنگلہ دیش کے آئی سی سی امرجنگ پینل میں شامل ہیں۔ بنگلہ دیش کے اسٹار آل راونڈر شکیب الحسن (Shakib al Hasan) پر حال ہی میں ایک امپائر پر بھڑکنے کے لئے جرمانہ اور پابندی لگا دی گئی تھی، جبکہ محموداللہ کو میدان پر غلط برتاو کے لئے 20 ہزار بنگلہ دیشی روپئے کا جرمانہ لگایا گیا تھا۔ محموداللہ پر جس میچ میں جرمانہ لگایا، اس مقابلے میں منیرالزماں ٹی وی امپائر تھے۔


محموداللہ سے ہوا تھا تنازعہ


محموداللہ تنازعہ سے مایوس منیرالزماں نے کرک بز سے کہا، ’میرے لئے اب بہت ہوگیا اور میں اب امپائرنگ نہیں کرنا چاہتا۔ میرے کچھ عزت نفس ہے اور میں اس کے ساتھ رہنا چاہتا ہوں‘۔ انہوں نے کہا کہ شکیب الحسن اور محموداللہ کے ان کے تئیں برتاو نے ان کے اس فیصلہ میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ امپائر نے کہا، ’امپائر غلطیاں کرسکتے ہیں، لیکن اگر ہمارے ساتھ اس طرح کا برتاو کیا جاتا ہے، تو اب ایسا کرنے کا کوئی مطلب نہیں ہے کیونکہ میں اس میں صرف پیسے کے لئے نہیں ہوں‘۔


غازی ٹینک کرکٹرس کے کپتان محموداللہ کو پرائم بینک کرکٹ کلب کے خلاف میچ کے دوران لیول-2 جرائم کا قصوروار پایا گیا۔ محمود اللہ نے امپائر کے ذریعہ اپیل مسترد کئے جانے کے بعد اپنی ناراضگی ظاہر کی اور نااتفاقی دکھانے کے لئے بغل کی پچ پر لیٹ گئے۔ امپائر کے کہنے کے باوجود انہوں نے مبینہ طور پر کھیل کو آگے بڑھانے سے انکار کردیا۔

شکیب الحسن کے برتاو سے ہوئے مایوس

اس مسئلے پر منیرالزماں نے کہا، ’میں شکیب الحسن کے میچ میں شامل نہیں تھا۔ جس طرح سے اس نے برتاو کیا، وہ میرے لئے برداشت کرنا بہت مشکل تھا۔ محموداللہ والے میچ میں میں ٹی وی امپائر تھا اور حادثہ کو قریب سے دیکھ رہا تھا۔ اس نے مجھے حیران کردیا۔ میں نے امپائرنگ نہیں کرنے کا فیصلہ کیا‘۔

منیرالزماں بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ (بی سی بی) کے ملازم بھی نہیں ہیں۔ منیرالزماں نے کہا، ’میں بی سی بی کا ملازم نہیں ہوں اور امپائروں کو بورڈ سے ملنے والے پیسے کو دیکھتے ہوئے میں اسے نہیں لے سکتا۔ میں اسے کھیل کے لئے پیار سے کر رہا تھا، کیونکہ مجھے صرف میچ فیس ملتی تھی۔ میں خوش قسمت ہوں کہ اب تک میرے ساتھ کچھ بھی انہونی نہیں ہوئی، لیکن کون جانتا ہے کہ آئندہ میچ میں میری توہین ہوجائے اور میں یہ سوچ کر اپنی نیند نہیں کھونا چاہتا کہ کل میچ میں کیا ہوگا‘۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jun 30, 2021 09:26 AM IST