உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    حسن علی سمیت پاکستان کے 3 تیز گیند بازوں نے انگلینڈ میں مچایا کہرام، بلے بازوں کے لئے مصیبت

    حسن علی سمیت پاکستان کے 3 تیز گیند بازوں نے انگلینڈ میں مچایا کہرام

    حسن علی سمیت پاکستان کے 3 تیز گیند بازوں نے انگلینڈ میں مچایا کہرام

    County Championship Division One: حسن علی سمیت پاکستان کے تین تیز گیند بازوں نے کاونٹی چمپئن شپ میں اپنی گیند بازی سے مخالف ٹیموں کو پست کردیا ہے۔ حسن علی ابھی سب سے زیادہ وکٹ لے کر ٹاپ پر چل رہے ہیں۔

    • Share this:
      لندن: حسن علی (Hasan Ali) نے کاونٹی چمپئن شپ میں اب تک کمال کی کارکردگی پیش کی ہے۔ ایک مقابلے میں (County Championship Division One) اس تیز گیند باز نے ہیمپ شائر کے خلاف 45 رن دے کر 5 وکٹ حاصل کئے۔ وہ اب تک 5 اننگوں میں دو بار 5 وکٹ لینے کا کارنامہ کرچکے ہیں۔ ان کے علاوہ پاکستان کے دو اور تیز گیند باز حارث روف (Haris Rauf) اور محمد عباس (Mohammad Abbas) نے بھی اب تک اچھی کارکردگی پیش کی ہے۔ یہ تینوں تیز گیند باز سب سے زیادہ وکٹ لینے والے ٹاپ-10 کھلاڑیوں کی فہرست میں بھی شامل ہیں۔ اس کے علاوہ ڈویژن-2 میں شاہین آفریدی بھی اپنی چھاپ چھوڑنے میں جمع ہوئے ہیں۔

      لنکا شائر سے کھیل رہے حسن علی نے اب تک 5 اننگوں میں 12 کی اوسط سب سے زیادہ 19 وکٹ لئے ہیں۔ 47 رن دے کر 6 وکٹ ان کا بہترین کارکردگی رہی ہے۔ ان کی اکنامی 2.30 کا ہے۔ 27 سال کے حسن علی کے اوور آل فرسٹ کیریئر کی بات کریں تو اس میچ سے پہلے تک 60 میچ میں 23 کی اوسط سے 260 وکٹ حاصل کر چکے ہیں۔ اس سے ان کی اچھی کارکردگی کو سمجھا جاسکتا ہے۔ 17 بار 5 اور 4 بار 10 وکٹ حاصل کرنے کا کارنامہ انجام دیا ہے۔ 107 رن دے کر 8 وکٹ ان کی بہترین کارکردگی ہے۔



      حارث روف بھی پیچھے نہیں

      حارث روف موجودہ سیزن میں یارک شائر سے کھیل رہے ہیں۔ وہ اب تک تین میچ میں 26 کی اوسط سے 14 وکٹ لے چکے ہیں۔ 65 رن دے کر 5 وکٹ ان کی بہترین کارکردگی رہی ہے۔ وہ اوور آل سب سے زیادہ وکٹ لینے کے معاملے میں ابھی ساتویں نمبر پر ہیں۔ وہیں ہیمپ شائر سے کھیل رہے محمد عباس نے اب تک چار میچ میں 12 وکٹ حاصل کئے ہیں۔ ان کا اوسط 21 کا ہے۔ 22 رن دے کر 4 وکٹ ان کی بہترین کارکردگی رہی ہے۔

      وہیں بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز نے کاونٹی چمپئن شپ کے ڈویژن-2 میں اپنی چھاپ چھوڑی ہے۔ وہ اب تک 2 میچ میں 7 وکٹ لے چکے ہیں۔ 35 رن دے کر 3 وکٹ ان کی بہترین کارکردگی رہی ہے۔ وہ مسلسل دو میچ میں ہیٹ ٹرک لینے سے محروم رہ گئے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: