உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندستان۔پاکستان کے مقابلے میں آصف علی کا کیچ چھوڑنے پر ارشدیپ کے ساتھ شخص نے کی قابل اعتراض حرکت، ہندستانی صحافی نے لگائی کلاس

    کھلاڑی ایک ایک کر کے بس میں سوار ہو رہے تھے۔ اسی وقت جب ارشدیپ ٹیم بس میں سوار ہونے لگے تو پاس کھڑا ایک شخص ان کی ویڈیو بنا رہا تھا اور اس نے ہندوستانی تیز گیند باز کو برا بھلا کہنا شروع کر دیا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      ارشدیپ سنگھ Arshdeep Singh  نے پاکستان کے خلاف سپر 4 میچ میں آصف علی کا کیچ چھوڑ دیا تھا۔ اس کے بعد انہیں سوشل میڈیا پر کافی ٹرول کیا گیا۔ ان کے ویکیپیڈیا کے پیج سے بھی کافی چھیڑ چھاڑ کی گئی۔ ابھی تنازع ختم نہیں ہوا تھا کہ ارشدیپ کو ایک بار پھر بدتمیزی کا سامنا کرنا پڑا۔

      دراصل سری لنکا کے خلاف سپر-4 میچ ہارنے کے بعد ہندوستانی ٹیم دبئی انٹرنیشنل کرکٹ اسٹیڈیم سے ہوٹل واپسی کی تیاری کر رہی تھی۔ کھلاڑی ایک ایک کر کے بس میں سوار ہو رہے تھے۔ اسی وقت جب ارشدیپ ٹیم بس میں سوار ہونے لگے تو پاس کھڑا ایک شخص ان کی ویڈیو بنا رہا تھا اور اس نے ہندوستانی تیز گیند باز کو برا بھلا کہنا شروع کر دیا۔


      یہ بد دماغ شخص یہیں نہیں رکا اور بھارتی فاسٹ بولر سے کچھ ایسا کہہ دیا جسے سن کر ارشدیپ کچھ دیر وہیں رک گئے اور یہ کہنے والے شخص کو غصے سے دیکھنے لگے۔ حالانکہ چند لمحوں بعد وہ بس میں سوار ہو گئے۔

      Pakistan۔Sri lanka سے ملی ہار کے بعد روہت شرما کی کپتانی پر اٹھے یہ بڑے سوال


      گوتم گمبھیر نے جسے باہر نکالنے کی دی صلاح، وہی رہا ہندستان کا سب سے کامیاب گیندباز



      جب یہ سب کچھ ارشدیپ کے ساتھ ہو رہا تھا۔ تب ایک ہندوستانی اسپورٹس جرنلسٹ بھی پاس ہی کھڑا تھا۔ وہ یہ سارا واقعہ اپنے موبائل میں بھی ریکارڈ کر رہا تھا۔ اس کے بعد بھارتی صحافی نے اس بد دماغ شخص کی کلاس لینا شروع کر دی۔ اس شخص سے کہا کہ تم جانتے ہو تم کس کو گالی دے رہے ہو؟ وہ انڈیا کا کھلاڑی ہے اور کوئی کھلاڑی کے ساتھ ایسا سلوک کیسے کر سکتا ہے؟ اس پر ارشدیپ سنگھ کو گالی دینے والا شخص کچھ دیر تک گھبرا گیا۔ تاہم اس کے بعد ان کا لہجہ بدل گیا اور انہوں نے ارشدیپ سنگھ کو اپنا کھلاڑی کہنا شروع کردیا۔ حالانکہ اس کے چہرے کو دیکھ کر یہ واضح تھا کہ اسے اپنی کہی ہوئی بات پر کوئی پچھتاوا نہیں تھا۔ جس کے بعد بھارتی صحافی نے اس شخص کی شکایت وہاں موجود سکیورٹی اہلکاروں سے کی اور بتایا کہ وہ ہندستانی کھلاڑی کو گالیاں دے رہا ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: