உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بریتھ ویٹ نے میدان پر بلے باز کو گیند ماری، ملی سزا، IPL میں کرتے ایسی حرکت تو بچ جاتے

    T20 Blast: ٹی20 بلاسٹ کے دوران کارلوس بریتھ ویٹ (Carlos Brathwaite) نے ایک بڑی غلطی کردی۔ اس کا خمیازہ ان کے ساتھ ساتھ ٹیم کو بھی بھگتنا پڑا۔ برمنگھم بیئرس اور ڈربی شائرکے میچ کے دوران یہ حادثہ ہوا۔

    T20 Blast: ٹی20 بلاسٹ کے دوران کارلوس بریتھ ویٹ (Carlos Brathwaite) نے ایک بڑی غلطی کردی۔ اس کا خمیازہ ان کے ساتھ ساتھ ٹیم کو بھی بھگتنا پڑا۔ برمنگھم بیئرس اور ڈربی شائرکے میچ کے دوران یہ حادثہ ہوا۔

    T20 Blast: ٹی20 بلاسٹ کے دوران کارلوس بریتھ ویٹ (Carlos Brathwaite) نے ایک بڑی غلطی کردی۔ اس کا خمیازہ ان کے ساتھ ساتھ ٹیم کو بھی بھگتنا پڑا۔ برمنگھم بیئرس اور ڈربی شائرکے میچ کے دوران یہ حادثہ ہوا۔

    • Share this:
      لندن: کارلوس بریتھ ویٹ (Carlos Brathwaite) نے ٹی20 بلاسٹ کے دوران ایک بڑی غلطی کردی۔ اس کا خمیازہ ان کے ساتھ ساتھ ٹیم کو بھی بھگتنا پڑا۔ برمنگھم بیئرس اور ڈربی شائرکے میچ کے دوران یہ حادثہ ہوا۔ برمنگھم نے پہلے کھیلتے ہوئے 7 وکٹ پر 159 رن بنائے تھے۔ جواب میں ڈربی شائر کا اسکور ایک وکٹ پر 111 رن تھا۔ 13واں اوور کپتان اور تیز گیند باز بریتھ ویٹ ہی ڈال رہے تھے۔ بلے باز وائنے میڈسن نے گیند باز کی طرف سے شاٹ کھیل کر رن لینے کی کوشش کی، لیکن اس درمیان بریتھ ویٹ نے گیند اٹھاکر وکٹ کی طرف مار دیا۔ تاہم گیند میڈسن کو لگ گئی۔ اس کے بعد امپائروں نے ٹیم پر 5 رن کی پنالٹی لگائی۔ آئیے بتاتے ہیں کہ آخر انہیں یہ سزا کیوں ملی۔

      کارلوس بریتھ ویٹ کو کرکٹ کے ضوابط بنانے والے ادارے ایم سی سی کے ضوابط ان فیئر پلے کے تحت سزا ملی اور مخالف ٹیم کے اسکور میں 5 رن جوڑ دیئے گئے۔ ضوابط 42.3.1، کسی کھلاڑی، امپائر یا کسی دیگر شخص پر نازیبا اور خطرناک طریقے سے گیند پھینکنے کے حادثہ سے متعلق ہے۔ حالانکہ یہ ضابطہ انٹرنیشنل کرکٹ اور دیگر فرنچائزی ٹی20 ٹورنا منٹ جیسے آئی پی ایل کا حصہ نہیں ہے۔


      ڈیمیرٹ پوائن اور سزا کا ضابطہ

      انٹرنیشنل کرکٹ میں اس معاملے پر گیند باز پر ڈیمیرٹ پوائنٹ کے ساتھ جرمانہ بھی لگایا جاتا ہے۔ آئی پی ایل میں کھلاڑی کو وارننگ ملتی ہے اور جرمانہ دینا ہوتا ہے۔ تاہم ٹی20 بلاسٹ اور پاکستان سپر لیگ نے ایم سی سی کے ضوابط کو اپنایا ہے۔ اس لئے بریتھ ویٹ اور ان کی ٹیم پر 5 رنوں کی سزا ملی۔

      امپائروں نے کارلوس بریتھ ویٹ کے تھرو کو لاپرواہی والا مانا۔ میڈسن نے میچ کے بعد ای سی بی کو بتایا کہ میں اپنی کریز پر تھا اور بریتھ ویٹ کو دیکھا تک نہیں۔ مجھے معلوم ہے کہ یہ ایک سخت مقابلہ تھا، لیکن اگر اس نے مجھے سر کے پچھلے حصے پر گیند ماری ہوتی، جیسا کہ امپائروں نے مانا، تو پریشانی ہوسکتی تھی۔ کیونکہ گیند پھینکنے سے پہلے ہی میں کریز میں واپس آگیا تھا۔

      بریتھ ویٹ کا وکٹ بھی نہیں دلا سکا جیت

      میچ میں برمنگھم بیئرس کی طرف سے سیم ہین نے سب سے زیادہ ناٹ آوٹ 73 رن بنائے۔ انہوں نے 40 گیندوں کا سامنا کیا۔ 7 چوکے اور ایک چھکا لگایا۔ ایڈم ہوس نے 20 اور بریتھ ویٹ نے 18 رن بنائے۔ سیم کانرس نے سب سے زیادہ 3 وکٹ حاصل کئے۔ جواب میں ڈربی شائر نے ہدف کو 18.1 اوور میں تین وکٹ پر حاصل کرلیا۔ یعنی ابھی 11 گیند کا کھیل باقی تھی۔ میڈسن نے سب سے زیادہ 55 رن بنائے۔ اس کے علاوہ کپتان شان مسعود نے بھی 45 رنوں کا تعاون دیا۔ ویسٹ انڈیز کے بریتھ ویٹ نے ایک وکٹ بھی حاصل کیا، لیکن وہ ٹیم کو جیت نہیں دلا سکے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: