உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    IND vs PAK کے درمیان سیریز کرانے کی تیاری، مقام بھی طے ، صرف اس بات کا ہے انتظار

    IND vs PAK کے درمیان سیریز کرانے کی تیاری، وینیو بھی فکس، صرف اس بات کا ہے انتظار (AFP)

    IND vs PAK کے درمیان سیریز کرانے کی تیاری، وینیو بھی فکس، صرف اس بات کا ہے انتظار (AFP)

    IND vs PAK Cricket Series : ہندوستان اور پاکستان کے درمیان 2012 ۔ 13 کے بعد سے دوطرفہ سیریز نہیں کھیلی گئی ہے ، لیکن کرکٹ فینس کو ہمیشہ دونوں ممالک کے درمیان کرکٹ میچ کا انتظار رہتا ہے ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : ہندوستان اور پاکستان کے درمیان 2012 ۔ 13 کے بعد سے دوطرفہ سیریز نہیں کھیلی گئی ہے ، لیکن کرکٹ فینس کو ہمیشہ دونوں ممالک کے درمیان کرکٹ میچ کا انتظار رہتا ہے ۔ جب بھی یہ دو ملک کرکٹ کے میدان میں آمنے سامنے ہوتے ہیں تو دلچسپی شباب پر ہوتی ہے اور دنیا کی نظریں اس میچ پر ٹکی ہوتی ہیں ۔ حال ہی میں ختم ہوا ٹی ٹوینٹی ورلڈ کپ اس بات کا ثبوت ہے ۔ ورلڈ کپ میں ہندوستان اور پاکستان کے مقابلے کو دنیا بھر میں تقریبا 16 کروڑ سے زیادہ لوگوں نے دیکھا تھا اور یہ سب سے زیادہ دیکھا جانے والا ٹی ٹوینٹی میچ بن گیا تھا ۔ اسی جنون کو دیکھتے ہوئے دبئی کرکٹ کونسل نے ہندوستان ۔ پاکستان کے درمیان اپنے یہاں سیریز کرانے کی پیش کی ہے ۔

      دبئی کرکٹ کونسل کے چیئرمین عبد الرحمان فلک ناز نے کہا کہ وہ مستقبل میں ہندوستان اور پاکستان سیریز کی میزبانی کرنے کیلئے تیار ہیں ۔ خلیج ٹائمس نے فلک ناز کے حوالے سے کہا کہ سب سے اچھی بات یہ ہوگی کہ ہندوستان اور پاکستان کے میچ یہاں ( دبئی) ہوں ۔ جب پہلے شارجہ میں ہندوستان اور پاکستان کے مقابلے ہوتے تھے تو یہ جنگ جیسا ہوتا تھا۔ لیکن یہ اچھی لڑائی تھی اور کھیل اس کے مرکز میں تھا ۔ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان خراب رشتوں کا اثر کرکٹ پر بھی پڑا ہے اور گزشتہ کچھ سالوں سے دونوں ٹیمیں صرف آئی سی سی کے ایونٹ میں ایک دوسرے سے میچ کھیلتی ہیں ۔

      عبد الرحمان نے مزید کہا کہ مجھے یاد ہے کہ راج کپور ایک مرتبہ اپنے کنبہ کے ساتھ آئے تھے ۔ ایوارڈس نائٹ کے دوران انہوں نے مائیک لیا اور کہا تھا کہ شارجہ میں ہندوستان اور پاکستان کی یہ لڑائی کتنی شاندار ہے ۔ کرکٹ لوگوں کو ایک ساتھ لاتا ہے ۔ کرکٹ نے ہمیں ساتھ لایا ہے اور ہمیں اس کو ایسے ہی رہنے دینا چاہئے ۔ تو ہم یہی کرنا چاہتے ہیں ۔ اگر ہم ہندوستان کو سال میں ایک یا دو مرتبہ پاکستان کے خلاف یہاں آنے اور کھیلنے کیلئے رضامند کرسکیں تو یہ واقعتا شاندار ہوگا ۔ ہم کرکٹ کی بہتری کیلئے کام کرنا چاہتے ہیں ۔ اب صرف بی سی سی آئی کی ہری جھنڈی کا انتظار ہے ۔

      انہوں نے بی سی سی آئی کو دبئی میں مستقل طور پر آئی پی ایل کا انعقاد کرنے کی دعوت دی ہے ۔ رحمان کے مطابق یو اے ای نے 2020 میں کورونا کے دور میں آئی پی ایل کا کامیاب طریقہ سے انعقاد کیا تھا اور اس سال بھی لیگ کا دوسرا مرحلہ مرحلہ یو اے ای میں ہی ہوا تھا ۔ اس کے علاوہ بی سی سی آئی کی میزبانی میں ٹی ٹوینٹی ورلڈ کپ کا انعقاد بھی یو اے ای اور عمان میں ہوا تھا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: