ہوم » نیوز » اسپورٹس

پاکستان کی شرمناک شکست کے بعد بھڑک گئے شعیب اختر، کہا- اب لوگ کرکٹ دیکھنا بند کر رہے ہیں

England vs Pakistan: سابق تیز گیند باز شعیب اختر (Shoaib Akhtar) نے کہا کہ پاکستانی ٹیم میں کوئی ایسا کھلاڑی نہیں، جسے آپ پیسے دے کر دیکھنا چاہیں گے۔ پاکستان کو پہلے ونڈے میں انگلینڈ نے 9 وکٹ سے بڑی شکست دی ہے۔

  • Share this:
پاکستان کی شرمناک شکست کے بعد بھڑک گئے شعیب اختر، کہا- اب لوگ کرکٹ دیکھنا بند کر رہے ہیں
پاکستان کی شرمناک شکست کے بعد بھڑک گئے شعیب اختر، کہا- اب لوگ کرکٹ دیکھنا بند کر رہے ہیں

نئی دہلی: انگلینڈ کی کام چلو ٹیم نے پہلے ونڈے میچ میں پاکستان (England vs Pakistan) کو 9 وکٹ سے شکست دے کر تین میچوں کی سیریز میں 0-1 کی سبقت حاصل کرلی ہے۔ انگلینڈ نے مہمان ٹیم کو 35.2 اوور میں 141 رنوں پر سمیٹنے کے بعد ڈیوڈ ملان (ناٹ آوٹ 68 رن) اور جیک کراولے (ناٹ آوٹ 58 رن) کے درمیان دوسرے وکٹ کے لئے 120 رنوں کی اٹوٹ شراکت سے یہ ہدف محض 21.5 اوور میں ایک وکٹ کے نقصان پر حاصل کرلیا۔ ملان نے 69 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے 8 چوکے لگائے جبکہ کراولے نے 50 گیندوں میں 7 چوکوں کی مدد سے ناٹ آوٹ 58 رن بنائے۔ انگلینڈ نے واحد وکٹ فل سالٹ (07) کے طور پر گنوایا، جنہیں شاہین شاہ آفریدی نے آوٹ کیا۔ پاکستان کی شرمناک شکست پر سابق تیز گیند باز شعیب اختر (Shoaib Akhtar) بری طرح ناراض ہوگئے ہیں۔


شعیب اختر نے پاکستانی نیوز چینل پر ایک ڈیبیٹ کے دوران کہا کہ وکٹ کچھ خاص نہیں تھا، ثاقب محمود نے بہت اچھی گیند بازی کی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی ٹیم میں پہلے جیسی صلاحیت نہیں رہی۔ کپتان بابر اعظم کی بلے بازی پر شعیب اختر نے کہا، ’وہ اچھا کھلاڑی لیکن جلد ہی اسے فنیشر کا کردار نبھانا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ٹیم کی حالت یہ ہو گئی ہے کہ بابر اعظم اور فخر زخمی نہیں چلیں گے تو ٹیم 150 رن بھی نہیں بنا پائے گی۔ شعیب اختر نے کہا کہ پاکستانی ٹیم یہ حالت بورڈ کی غلط پالیسی اور سلیکشن کے سبب ہے۔ پاکستانی ٹیم میں کوئی ایسا کھلاڑی نہیں، جسے آپ پیسے دے کر دیکھنا چاہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ لوگ اب پاکستان کا میچ دیکھنا بند کر رہے ہیں۔


 شعیب اختر نے پاکستانی نیوز چینل پر ایک ڈیبیٹ کے دوران کہا کہ وکٹ کچھ خاص نہیں تھا، ثاقب محمود نے بہت اچھی گیند بازی کی۔

شعیب اختر نے پاکستانی نیوز چینل پر ایک ڈیبیٹ کے دوران کہا کہ وکٹ کچھ خاص نہیں تھا، ثاقب محمود نے بہت اچھی گیند بازی کی۔


وہیں پاکستان کے سابق کرکٹر رمیز راجہ زیادہ ناراض نظر آئے۔ اپنے یو ٹیوب چینل پر رمیز راجہ نے کہا کہ پاکستان کی ٹیم ہی ایک معمولی ٹیم کو دنیا کے سامنے بڑی ٹیم بناکر پیش کرسکتی ہے۔ یہ انگلینڈ کی بی ٹیم تھی اور دو دن پہلے انگلینڈ کے پاس پورے پلیئر نہیں تھے۔ پاکستان نے بہت خراب کارکردگی کی، اس پچ پر 400 رن بن سکتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی بلے بازوں کی تکنیک غلط تھی، کریز سے کھیل رہے تھے جبکہ انگلینڈ میں یا تو آپ کو باہر نکل کر کھیلنا ہوتا یا بیک فٹ پر جاکر شاٹ لگانا ہوتا ہے۔ ایسا لگا جیسے پہلی بار یہ بلے باز انگلینڈ میں بلے بازی کر رہے ہیں۔ اس میچ میں کراولے نے فارم میں واپسی کے اشارے دیئے۔ اس پر رمیز راجہ نے کہا کہ پاکستانی ٹیم کی یہ خاصیت ہے کہ جو آوٹ آف فارم ہوتا ہے وہ بھی ہمارے خلاف فارم میں آجاتا ہے۔

رمیز راجہ نے کہا کہ پاکستان کی ٹیم ہی ایک معمولی ٹیم کو دنیا کے سامنے بڑی ٹیم بناکر پیش کرسکتی ہے۔
رمیز راجہ نے کہا کہ پاکستان کی ٹیم ہی ایک معمولی ٹیم کو دنیا کے سامنے بڑی ٹیم بناکر پیش کرسکتی ہے۔


واضح رہے پہلی بار ٹیم کی کپتانی کر رہے بین اسٹوکس چوٹ سے ابھرنے کے عمل میں تھے، لیکن اس کے باوجود اس میچ میں کھیلے۔ انہوں نے ایک اوور ہی پھینکا۔ ٹیم کے کھلاڑیوں کے کورونا وائرس سے متاثر ہونے کے سبب انگلینڈ کام چلاو ٹیم کے ساتھ کھیل رہی ہے، جس سے اس میچ میں پانچ کھلاڑیوں نے ونڈے ڈیبیو کیا۔ پاکستان نے پہلے ہی اوور میں اپنے دو وکٹ گنوا دیے تھے۔ اس کے لئے فخر زماں نے 47 رن اور شاداب خان نے 30 رن کی اننگ کھیلی۔ صہیب مقود 19 رن بناکر آوٹ ہوئے جبکہ محمد رضوان نے 13 اور شاہین شاہ آفریدی نے 12 رن بنائے۔

انگلینڈ کے ثاقب محمود نے 42 رن دے کر چار وکٹ حاصل کئے جبکہ لوئس گریگری اور میٹ پارکنسن کو دو دو وکٹ ملے۔ انگلینڈ کے لئے برائیڈن کارس، جارک کراولے، لوئس گریگری، فل سالٹ اور جان سمپسن نے ونڈے میں ڈیبیو کیا۔ دوسرا میچ 10 جولائی کو لارڈس میں کھیلا جائے گا۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 09, 2021 01:06 PM IST