உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستانی دکان میں کی نوکری، IPL کھیلنے کیلئے گڑگڑانا تک پڑا، آج برس رہے ہیں کروڑوں روپے

    پاکستانی دکان میں کی نوکری، IPL کھیلنے کیلئے گڑگڑانا تک پڑا، آج برس رہے ہیں کروڑوں روپے (PTI)

    پاکستانی دکان میں کی نوکری، IPL کھیلنے کیلئے گڑگڑانا تک پڑا، آج برس رہے ہیں کروڑوں روپے (PTI)

    IPL 2022 : آج بھلے ہی وہ کروڑوں کما رہے ہیں ، لیکن ایک وقت ایسا تھا جب وہ ایک چھوٹی سی دکان پر 12 گھنٹے کام کرتے تھے اور انہیں روزانہ 1500 روپے ملتے تھے، وہ بھی امریکہ جیسے ملک میں

    • Share this:
      نئی دہلی : ہرشل پٹیل کو رائل چیلنجرز بنگلورو نے آئی پی ایل 2022 کی میگا نیلامی سے پہلے ریلیز کردیا تھا۔ جبکہ گزشتہ سیزن میں انہوں نے سب سے زیادہ 32 وکٹیں حاصل کی تھیں۔ آر سی بی کے اس فیصلے پر سبھی حیران تھے۔ لیکن نیلامی میں  آر سی بی نے ہرشل کو 10.75 کروڑ کی قیمت میں خریدا ۔ پچھلے سیزن میں ہرشل کو بطور سیلری 20 لاکھ روپے ملے تھے اور ایک جھٹکے میں وہ 50 گنا زیادہ تنخواہ پر آر سی بی کے ساتھ شامل ہوگئے۔ حالانکہ ہرشل کے لیے ہمیشہ سے سب کچھ انتا چمکدار نہیں تھا ۔ آج بھلے ہی وہ کروڑوں کما رہے ہیں ، لیکن ایک وقت ایسا تھا جب وہ ایک چھوٹی سی دکان پر 12 گھنٹے کام کرتے تھے اور انہیں روزانہ 1500 روپے ملتے تھے، وہ بھی امریکہ جیسے ملک میں۔ انہیں اپنی زندگی میں کئی بار ریجیکشن کا سامنا کرنا پڑا۔ ایک مرتبہ انہیں بیچ آئی پی ایل سے ہی گھر بھیج دیا گیا تھا ۔ لیکن ہر مرتبہ یہ گیند باز حالات سے لڑا اور چیمپئن بن کر ابھرا۔

       

      یہ بھی پڑھئے : کے ایل راہل پر لگ سکتی ہے ایک میچ کی پانبدی، ایل ایس جی کو بھاری پڑسکتی ہے ایک اور غلطی، جانئے پورا معاملہ


      ہرشل پٹیل نے 'بریک فاسٹ ود چیمپئنز' شو میں اپنی زندگی سے وابستہ ان اچھوتے پہلوؤں کے بارے میں کھل کر بات کی۔ انہوں نے بتایا کہ ان کا کنبہ امریکہ کیسے گیا اور وہ ایک پاکستانی دکاندار کی پرفیوم شاپ پر کیسے کام کرتے تھے ، جہاں انہیں 14 سال پہلے 35 ڈالر یومیہ یعنی تقریباً 1500 روپے ملتے تھے۔ یہ رقم امریکہ میں زندگی گزارنے کیلئے کافی کم تھی۔ لیکن وہ ان حالات سے بھی نہیں گھبرائے اور لڑتے رہے ۔

      ہرشل 2017 میں آر سی بی کے ساتھ تھے۔ پھر ایک دن ٹیم کے کوچنگ اسٹاف میں شامل ڈینیل ویٹوری نے انہیں بلاکر کہا کہ وہ اگلے 4-5 میچوں میں نہیں کھیلیں گے۔ ٹیم کو جب بھی ان کی ضرورت ہوگی ، انہیں بلالیا جائے گا۔ انہیں بیچ لیگ سے گھر بھیج دیا گیا تھا ۔ حالانکہ اس سیزن میں آر سی بی پلے آف میں نہیں پہنچ پائی تھی۔ اس کے بعد ہرشل نے ویٹوری کو میسیج کرکے ایک میچ کھلانے کی درخواست کی تھی ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : میچ میں ہوا تنازع، کوچ کپتان سب امپائر سے بھڑے، اسٹیڈیم میں مچا 'چیٹر چیٹر' کا شور، دیکھئے ویڈیو


      ہرشل نے اس انٹرویو میں بتایا کہ بچپن سے میں نے اپنے والد کو ہفتے میں ساتوں دن کام کرتے دیکھا ہے۔ سردی، گرمی، برسات کوئی بھی ہو وہ کام کرتے تھے ۔ میرے والدین 2008 میں امریکہ گئے تھے۔ تب میری عمر 17 سال تھی اور یہ معاشی کساد بازاری کا سال تھا۔ اس وقت ہندوستان کے لوگوں کو، جن کی تعلیم بہت اچھی نہیں تھی اور جو وہاں کی زبان نہیں جانتے تھے، انہیں وہاں جا کر برسوں مزدوری کرنی پڑتی تھی ۔ اب اگر امریکہ پہنچ گئے تو کام تو کرنا تھا۔ کیونکہ خاندان اور اس کی ذمہ داری اٹھانی تھی۔

      چنانچہ میں نے نیو جرسی میں ایک پاکستانی شخص کی پرفیوم کی دکان پر کام کرنا شروع کردیا۔ انگریزی نہیں آتی تھی، کیونکہ تمام پڑھائی گجراتی میڈیم میں ہوئی تھی۔ وہ علاقہ جہاں یہ دکان تھی۔ لاطینی اور افریقی امریکی وہاں رہتے تھے۔ اس کی انگریزی بول چال باقی امریکیوں سے بالکل الگ تھی۔ میں نے آہستہ آہستہ اس گینگسٹر کی انگریزی سیکھ لی۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: