ہوم » نیوز » اسپورٹس

ورلڈ کپ کی تیاری میں ہندوستان سے ایک قدم آگے نکلا پاکستان ، میگا ایونٹ میں ٹیم انڈیا کیلئے بنا بڑا خطرہ !۔

آج دنیا بھر کی ٹاپ ٹیمیں خوہ وہ انگلینڈ ہو ، جنوبی افریقہ ہو یا پھر ٹیم انڈیا ان سبھی میں ایک چیز مشترک ہے کہ ان کے کھلاڑی کافی فٹ ہیں۔

  • Share this:
ورلڈ کپ کی تیاری میں ہندوستان سے ایک قدم آگے نکلا پاکستان ، میگا ایونٹ میں ٹیم انڈیا کیلئے بنا بڑا خطرہ !۔
فائل فوٹو

کرکٹ کے میدان میں کسی بھی کھلاڑی کا با صلاحیت ہونا ہی کافی نہیں ہے بلکہ اس صلاحیت کو بروئے کار لانے کیلئے اچھی فٹنس کی بھی ضرورت ہے ۔ آج دنیا بھر کی ٹاپ ٹیمیں خوہ وہ انگلینڈ ہو ، جنوبی افریقہ ہو یا پھر ٹیم انڈیا ان سبھی میں ایک چیز مشترک ہے کہ ان کے کھلاڑی کافی فٹ ہیں۔ پاکستان کی بات کریں تو اس ٹیم کے کھلاڑی پہلے زیادہ فٹ نہیں مانے جارہے تھے ، لیکن اب اس ٹیم کی فٹنس پر بڑا انکشاف ہوا ہے ۔ آئی سی سی سے بات چیت کرتے ہوئے پاکستان کے کنڈیشننگ اور اسٹرینتھ کوچ گران لوڈین نے کہا موجودہ پاکستانی ٹیم کی فٹنس ٹاپ لیول کی ہوگئی ہے ۔

پاکستان کے فٹنس کوچ نے کہا کہ ان کی ٹیم کی تیاریوں کا ایک اہم حصہ یو یو ٹیسٹ ہے ، جس میں ان کے کھلاڑیو کی کارکردگی میں کافی زیادہ سدھار آیا ہے ۔ لڈین نے جانکاری دی کہ پہلے پاکستانی ٹیم کو یو یو ٹیسٹ پاس کرنے کیلئے 17.1 کا اسکور کرنا ہوتا تھا ، جو بعد میں 17.4ہوگیا ۔ لڈین نے جانکاری دی کہ اب پاکستانی ٹیم کا اوسط یو یو ٹیسٹ اسکور بڑھ کر 18:1 ایک ہوگیا ہے ۔ یہی نہیں پاکستان کے کھلاڑی محمد رضوان کا یو یو ٹیسٹ اسکور 21 ہے اور حسن علی کا یو یو ٹیسٹ اسکور بھی 20 ہے۔

وہیں اگر ہندوستانی ٹیم کی فٹنس کی بات کریں تو اس کا ہر کھلاڑی کافی فٹ ہے ۔ کپتان وراٹ کوہلی ، ایم ایس دھونی ، ہاردک پانڈیا ، کے ایل راہل یہ سبھی کھلاڑی کافی تیز طرار ہیں ۔حالانکہ یو یو ٹیسٹ کے اعداد و شمار پر جائیں تو پاکستان کے کھلاڑی موجودہ ہندوستانی ٹیم سے آگے نظر آرہے ہیں ۔ دراصل ہندوستانی ٹیم کا یو یو ٹیسٹ میں پاس ہونے کا اسکور 16.1 ہے جو کہ پاکستان سے کافی کم ہے ۔ ویسے ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی کا یو یو ٹیسٹ میں بیسٹ اسکور 19 ہے ، لیکن ان سے اچھا اسکور پاکستان کے کھلاڑیوں کا ہے ۔

کیا ہے یو یو ٹیسٹ ؟

کھلاڑیوں کی فٹنس جانچنے کیلئے یو یو ٹیسٹ بیپ ٹیسٹ کا ایڈوانسڈ ورزن ہے ۔ 20،20 میٹر کی دوری پر دو لائنیں بناکر کون رکھ دئے جاتےہیں ۔ ایک جانب کی لائن پر کھلاڑی کا پاوں پیچھے کی جانب ہوتا ہے اور دوسری کی طرف وہ دوڑنا شروع کرتا ہے ۔ ہر منٹ کے بعد رفتار مزید بڑھانی ہوتی ہے ۔ اگر کھلاڑی وقت پر لائن تک نہیں پہنچ پاتا ہے تو اس کو دو بیپس کے اندر لائن تک پہنچنا ہوتا ہے ۔ اگر وہ ایسا کرنے میں ناکام ہوتا ہے تو اس کو فیل مانا جاتا ہے۔

یویو ٹیسٹ میں کس ٹیم کیلئے کتنا اسکور ضروری ؟۔
آسٹریلیا : کھلاڑیوں کیلئے 20.1 اسکور کرنا ضروری
ویسٹ انڈیز: کھلاڑیوں کیلئے 19 اسکور کرنا ضروری
انگلینڈ : کھلاڑیوں کیلئے 19 اسکور کرنا ضروری
نیوزی لینڈ :کھلاڑیوں کیلئے 19 اسکور کرنا ضروری
جنوبی افریقہ :کھلاڑیوں کیلئے 18 اسکور کرنا ضروری
سری لنکا : کھلاڑیوں کیلئے 17.4اسکور کرنا ضروری
پاکستان : کھلاڑیوں کیلئے 17.4اسکور کرنا ضروری
ہندوستان : کھلاڑیوں کیلئے 16.1 اسکور کرنا ضروری

First published: May 13, 2019 08:27 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading