உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان میں 29 سال بعد ہوگا آئی سی سی کا بڑا ایونٹ، 2025 میں اس ٹورنامنٹ کی کرے گا میزبانی

    پاکستان میں 29 سال بعد ہوگا آئی سی سی کا بڑا ایونٹ،2025 میں اس ٹورنامنٹ کی کرے گا میزبانی ۔ (PCB/Twitter)

    پاکستان میں 29 سال بعد ہوگا آئی سی سی کا بڑا ایونٹ،2025 میں اس ٹورنامنٹ کی کرے گا میزبانی ۔ (PCB/Twitter)

    پاکستان کو اس مرتبہ آئی سی سی ایونٹ کی میزبانی کا حق بھی مل گیا ہے۔ 2024 سے 2031 کے درمیان دو آئی سی سی ون ڈے ورلڈ کپ ، 4 ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ اور 2 چیمپئنز ٹرافی کھیلی جانی ہے ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے 2024 سے 2031 تک ہونے والے مردوں کے آٹھ ٹورنامنٹس اور آرگنائزرس کے ناموں کی فہرست جاری کر دی ہے۔ 17 رکن ممالک نے 2024 سے 2031 تک ہونے والے مردوں کے آٹھ وائٹ بال آئی سی سی ایونٹس کی میزبانی کے لیے اپنی دعویداری پیش کی تھی۔ اس میں پاکستان کو اس مرتبہ آئی سی سی ایونٹ کی میزبانی کا حق بھی مل گیا ہے۔ 2024 سے 2031 کے درمیان دو آئی سی سی ون ڈے ورلڈ کپ ، 4 ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ اور 2 چیمپئنز ٹرافی کھیلی جانی ہے ۔ ان میں سے پاکستان کو 2025 میں ہونے والی چیمپئنز ٹرافی کی میزبانی کا حق مل گیا ہے۔

      دراصل یہ پاکستان کے لیے خاص موقع ہے، کیونکہ پاکستان نے 1996 کے ورلڈ کپ فائنل کے بعد سے کسی بھی آئی سی سی ایونٹ کی میزبانی نہیں کی۔ سیکورٹی خدشات نے ایک دہائی سے زیادہ عرصے سے پاکستان میں کھیلی جانے والی بین الاقوامی کرکٹ کی تعداد کو کافی حد تک محدود کر دیا ہے۔ اس ملک نے اصل میں 2008 میں چیمپئنز ٹرافی کی میزبانی کی تھی ، لیکن اسے جنوبی افریقہ منتقل کر دیا گیا تھا۔ پھر 2009 میں لاہور میں سری لنکائی ٹیم کی بس پر حملہ کے بعد پاکستان کو آئی سی سی کے کسی ایونٹ کی میزبانی نہیں ملی۔

      پاکستان نے 2011 کے ورلڈ کپ کی مشترکہ میزبانی کی تھی لیکن سیکورٹی وجوہات کی بنا پر 2011 کا ورلڈ کپ صرف ہندوستان، سری لنکا اور بنگلہ دیش میں مشترکہ طور پر کھیلا گیا۔ 2015-2023 راونڈ میں کسی بھی عالمی ایونٹ کی میزبانی یا شریک میزبانی میں ناکام رہنے کے بعد پاکستان کو اب 2024-2031 راونڈ میں بین الاقوامی کرکٹ کی میزبانی کا حق مل گیا ہے۔


      3 مارچ 2009 (سری لنکا کی بس ٹیم پر حملہ)

      ٹیسٹ میچ کے تیسرے دن سے قبل کھلاڑی اور میچ آفیشلز سری لنکائی ٹیم کی بس میں جا رہے تھے۔ اس وقت لاہور میں قذافی اسٹیڈیم کے قریب دہشت گردوں نے حملہ کردیا۔ اس حملے میں سری لنکا کے چھ کھلاڑی زخمی ہوئے اور ریزرو امپائر کو شدید چوٹیں آئیں۔ فائرنگ کے نتیجے میں چھ سیکورٹی اہلکار اور دو شہری ہلاک ہوگئے تھے اور اس کی وجہ سے یہ ٹیسٹ میچ اور پورا دورہ منسوخ کر دیا گیا تھا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: