உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوستانی تیز گیند باز جھولن گوسوامی عالمی نمبر دو ون ڈے گیندباز بنیں

    ہندوستانی تیز گیند باز جھولن گوسوامی عالمی نمبر دو ون ڈے گیندباز بنیں

    ہندوستانی تیز گیند باز جھولن گوسوامی عالمی نمبر دو ون ڈے گیندباز بنیں

    تجربہ کار ہندوستانی تیز گیند باز جھولن گوسوامی اتوار کو آسٹریلیا کے خلاف تیسرے ون ڈے میں شاندار کارکردگی کی بدولت عالمی نمبر دو ون ڈے گیندباز بن گئی ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      دبئی: تجربہ کار ہندوستانی تیز گیند باز جھولن گوسوامی اتوار کو آسٹریلیا کے خلاف تیسرے ون ڈے میں شاندار کارکردگی کی بدولت عالمی نمبر دو ون ڈے گیندباز بن گئی ہیں۔ جھولن گوسوامی تیسرے ون ڈے میں 10 اوورز میں 37 رنز دے کر تین وکٹ لینے کی کارکردگی سے دومقامات کے فائدے کے ساتھ آئی سی سی کی جانب سے منگل کو جاری ویمن ون ڈے رینکنگ میں دوسرے نمبر پر پہنچ گئی ہیں۔ گواسوامی کوآل راونڈرس رینکنگ میں بھی فائدہ ہوا ہے اوروہ دسویں مقام پر آگئی ہیں۔

      اس درمیان ہندوستانی کپتان متھالی راج بیٹنگ رینکنگ میں ٹاپ پوزیشن سے پھسل کر تیسری پوزیشن پر آگئی ہیں۔ ان کی جگہ جنوبی افریقہ کی لیزیل لی نے پہلے نمبرپر قبضہ کیا ہے، جبکہ آسٹریلیا کی ایلیسا ہیلی نے ہندوستان کے خلاف تین ون ڈے میچوں کی سیریز میں شاندار کارکردگی کی وجہ سے دوسرے نمبر پر پہنچ گئی ہیں۔ ہندوستانی سلامی بلے باز اسمرتی مندھاناکو بھی رینکنگ میں فائدہ ہوا ہے۔ آسٹریلیا کے خلاف سیریز میں بالترتیب 16، 86 اور 22 رنز بنانے کے بعد وہ ایک مقام کے فائدے سئ چھٹے نمبر پر آگئی ہیں۔

      جھولن گوسوامی نمبر 1 کے مقام سے ایک قدم دور

      آسٹریلیا کے خلاف سیریز میں جھولن گوسوامی نے چار وکٹ حاصل کئے تھے، جس میں آخری مقابلے میں 37 رن دے کر تین وکٹ بھی شامل ہیں۔ ہندوستان نے تیسرے ونڈے میں آسٹریلیا کو شکست دے کر اس کے مسلسل 26 یک روزہ جیت کی مہم پر روک لگی۔ ہندوستان نے حالانکہ سیریز 2-1 سے گنوا دی۔ جھولن گوسوامی آل راونڈر کھلاڑیوں کی فہرست میں بھی تین مقام کے فائدے سے 10 ویں مقام پر پہنچ گئی ہیں۔ ان کے 251 پوائنٹ ہیں۔ آسٹریلیا کی جیس یوناسین 760 پوائنٹ کے ساتھ ٹاپ پر برقرار ہیں جبکہ جھولن گوسوامی کے 727 پوائنٹ ہیں۔ آسٹریلیا کی ہی میگن شوٹ ایک مقام کے نقصان سے 717 پوائنٹ کے ساتھ تیسرے مقام پر ہیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: