உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    IND vs WI: ہندوستان کا اسٹار بلے باز اب گیند باز بننے کیلئے تیار، جانئے وجہ

    IND vs WI: ہندوستان کا اسٹار بلے باز اب گیند باز بننے کیلئے تیار، جانئے وجہ (AP)

    IND vs WI: ہندوستان کا اسٹار بلے باز اب گیند باز بننے کیلئے تیار، جانئے وجہ (AP)

    India vs West Indies 2nd T20I: ناٹ آوٹ اننگز کھیل کر ہندوستان کو کچھ اچھی جیت دلانے والے بلے باز سوریہ کمار یادو (SuryaKumar Yadav) نے کہا کہ وہ فنیشر کے کردار کا لطف اٹھا رہے ہیں ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : ناٹ آوٹ اننگز کھیل کر ہندوستان کو کچھ اچھی جیت دلانے والے بلے باز سوریہ کمار یادو (SuryaKumar Yadav) نے کہا کہ وہ فنیشر کے کردار کا لطف اٹھا رہے ہیں ۔ ویسٹ انڈیز (India vs West Indies) کے خلاف بدھ کو پہلے ٹی ٹوینٹی میں ہندوستان نے کپتان روہت شرما  (Rohit Sharma) کی 40 رن کی تیز رفتار اننگز کے بعد تین وکٹ جلدی گنوادئے ، لیکن سوریہ کمار نے 18 گیندوں میں 34 رن کی اننگز کھیل کر ٹیم کو جیت دلادی ۔ ہندوستان نے آخر میں چھ وکٹ سے آسان جیت درج کی ۔

      سوریہ کمار یادو نے میچ کے بعد ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ ’’میرے خیال میں آخر تک کریز پر رہنا اور اپنی ٹیم کو جیت دلانا میرے لئے اہم تھا۔‘‘ پچھلے مہینے کیپٹ ٹاون میں جنوبی افریقہ کے خلاف تیسرئ ون ڈے کے ساتھ اس فارمیٹ میں ٹیم میں واپسی کرنے والے سوریہ کمار 32 گیندوں پر 39 رنز کی اننگز کے دوران اچھی لے میں نظر آئے ۔ تاہم 288 رنز کے ہدف کے تعاقب میں ہندوستان کو شکست کا منہ دیکھنا پڑا اور ٹیم کا 0-3 سے سوپڑا صاف ہوگیا ۔

      یہ بھی پڑھیں : 50 مرتبہ 50 سے زیادہ رنوں کی اننگز، 11 کروڑ روپے بھی ملے ، مگر نہیں کھیلے گا IPL 2022 !

      اس 31 سالہ کھلاڑی نے کہا کہ ’’میں نے کئی مرتبہ اس طرح کی صورتحال کا سامنا کیا ہے اور جب بھی میں 20-25 رنز باقی رہتے ہوئے آؤٹ ہوتا ہوں تو ہوٹل لوٹنے کے بعد مجھے کافی برا لگتا ہے۔‘‘ سوریہ کمار کو وینکٹیش ایئر کا دوسرے اینڈ پر اچھا ساتھ ملا ، جنہوں نے 13 گیندوں میں ناٹ آؤٹ 24 رنز بنائے۔ سوریہ کمار نے ایئر کی جارحانہ اننگز کی تعریف کی ۔ دونوں نے 26 گیندوں میں 48 رنز کی ناقابل شکست شراکت داری کی ۔

      انھوں نے کہا کہ جب بھی ضرورت ہوگی تو وہ گیند بازی کیلئے بھی تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب بھی روہت کو میری ضرورت ہوگی ، میں تیار ہوں ، میں کوشش کر رہا ہوں ، جب بھی ہم پریکٹس سیشن میں حصہ لیتے ہیں تو ہم نیٹ میں گیند بازی کرتے ہیں۔ جب ہمارے گیند باز آخر میں بیٹنگ کرتے ہیں تو ہمارے پاس گیند بازی کرنے کیلئے کافی گیند باز نہیں ہوتے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: