ہوم » نیوز » اسپورٹس

وراٹ کوہلی کو لے کر ٹیم پین نے کہا : وہ میرے لئے کسی دوسرے کھلاڑی جیسے ہی ہیں

پین نے اے بی سی اسپورٹس کو بتایا کہ وراٹ میرے لئے دوسرے کھلاڑی کی طرح ہیں اور مجھے ان سے کوئی پریشانی نہیں ہے ۔ سچ کہوں تو میرا اس سے کوئی خاص رشتہ نہیں ہے ، میں اسے ٹاس کے وقت دیکھتا ہوں اور اس کے خلاف کھیلتا ہوں ، بس اتنا ہی ہے ۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 15, 2020 08:51 PM IST
  • Share this:
وراٹ کوہلی کو لے کر ٹیم پین نے کہا : وہ میرے لئے کسی دوسرے کھلاڑی جیسے ہی ہیں
وراٹ کوہلی کو لے کر ٹیم پین نے کہا : وہ میرے لئے کسی دوسرے کھلاڑی جیسے ہی ہیں

آسٹریلیا کے ٹیسٹ کپتان ٹم پین نے کہا ہے کہ ہم ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی سے نفرت کرنا پسند کرتے ہیں اور ایک کرکٹ شائقین کی حیثیت سے ہم ان کی بیٹنگ دیکھنا بھی پسند کرتے ہیں ۔ ہندوستانی ٹیم دو ماہ سے زیادہ کے طویل دورے پر آسٹریلیا پہنچ چکی ہے اور اس وقت کوارنٹائن میں ہے۔ اس دورے میں ہندوستان کو تین ون ڈے ، تین ٹی ٹوئنٹی اور چار ٹیسٹ کھیلنے ہیں ۔ آسٹریلیائی کھلاڑیوں نے ہندستانی کھلاڑیوں پر دباؤ ڈالنے کے لئے سیریز سے قبل بیان بازی شروع کردی ہے۔


پین نے اے بی سی اسپورٹس کو بتایا کہ وراٹ میرے لئے دوسرے کھلاڑی کی طرح ہیں اور مجھے ان سے کوئی پریشانی نہیں ہے ۔ سچ کہوں تو میرا اس سے کوئی خاص رشتہ نہیں ہے ، میں اسے ٹاس کے وقت دیکھتا ہوں اور اس کے خلاف کھیلتا ہوں ، بس اتنا ہی ہے ۔


انہوں نے کہا کہ لیکن بطور کرکٹ پرستار ہم وراٹ کا بیٹ دیکھنا پسند کرتے ہیں۔ ہم اسے بیٹنگ کرتے دیکھنا پسند کرتے ہیں ، لیکن ہم اسے پسند نہیں کرتے کہ وہ بہت زیادہ رنز بنائے ۔ تاہم اس مرتبہ وراٹ پہلے ٹیسٹ کے بعد وطن واپس لوٹیں گے کیونکہ سال کے آغاز میں ان کی اہلیہ اپنے پہلے بچے کو جنم دینے والی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ آسٹریلیا اور ہندوستان کے مابین سخت مقابلہ ہوگا ۔ وراٹ یقینی طور پر ایک زبردست حریف ہے اور اسی طرح میں ہوں ۔ ہمارے درمیان کئی بار الفاظ کی جنگ ہوچکی ہے ، اس لئے نہیں کہ ہم دونوں اپنی ٹیموں کے کپتان ہیں بلکہ اس کے علاوہ اور بھی وجہ ہو سکتی تھی ۔



اہم بات یہ ہے کہ وراٹ نے اپنی پہلی سنچری آسٹریلیا کے خلاف سن 2012 میں ایڈیلیڈ میں اسکور کی تھی ۔ انہوں نے 2014 کے دورے پر چار میچوں کی سیریز میں 692 رنز بنائے تھے جس میں چار سنچریاں شامل تھیں۔

پین نے کہا کہ میں ایماندار رہوں گا یہ ایک بہت بڑی لڑائی ہوگی ۔ آخری بار اس نے یہاں ٹیسٹ سیریز میں ہمیں شکست دی ۔ اس سیریز میں آپ کو ایک کھلاڑی کی حیثیت سے خود کو ٹیسٹ کرنا ہوگا ۔ 27 نومبر سے شروع ہونے والی ون ڈے سیریز کے بعد دونوں ٹیموں کے درمیان بارڈر-گواسکر ٹرافی کے تحت ٹی ٹوئنٹی سیریز اور اس کے بعد چار میچوں کی ٹیسٹ سیریز ہوگی ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Nov 15, 2020 08:50 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading