ہوم » نیوز » اسپورٹس

Ind vs Eng: جیت کے بعد وراٹ کوہلی کا بڑا بیان ، کہا : نہیں گرے گی ہندوستانی کرکٹ کی سطح

وراٹ نے کہا کہ پہلے میچ میں ٹاس بہت اہم تھا اور بولر مقابلہ میں ہی نہیں تھے۔ ہم نے عمدہ گیندبازی اورفیلڈنگ کی، لہذا سیریز میں واپسی کرنا دل کو چھو لینے کے مترادف تھا۔ ہماری بینچ اسٹرینتھ بہت مضبوط ہے اور یہ ہندوستانی کرکٹ کے لئے اچھا اشارہ ہے۔

  • Share this:
Ind vs Eng: جیت کے بعد وراٹ کوہلی کا بڑا بیان ، کہا : نہیں گرے گی ہندوستانی کرکٹ کی سطح
Ind vs Eng: جیت کے بعد وراٹ کوہلی کا بڑا بیان ، کہا : نہیں گرے گی ہندوستانی کرکٹ کی سطح ۔ فائل فوٹو ۔ اے پی ۔

ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی نے چوتھے اور آخری ٹیسٹ میں انگلینڈ کے خلاف تاریخی فتح کے بعد کہا ہے کہ چنئی میں دوسرے ٹیسٹ میں واپسی کرنا ان کے لئے سب سے خوشگوار لمحہ تھا۔ پہلے ٹیسٹ کی شکست مایوس کن تھی۔ وراٹ نے کہا کہ پہلے میچ میں ٹاس بہت اہم تھا اور بولر مقابلہ میں ہی نہیں تھے۔ ہم نے عمدہ گیندبازی اورفیلڈنگ کی، لہذا سیریز میں واپسی کرنا دل کو چھو لینے کے مترادف تھا۔ ہماری بینچ اسٹرینتھ بہت مضبوط ہے اور یہ ہندوستانی کرکٹ کے لئے اچھا اشارہ ہے۔ خراب حالات میں بھی ہمارے کھیل کی سطح نہیں گری اور میچ کے نازک وقت میں رشبھ پنت اور واشنگٹن سندر نے عمدہ شراکت قائم کرکے اس کی مثال پیش کی۔


ہندوستانی کپتان نے کہا کہ چنئی میں پہلا میچ ہارنے کے بعد ہمیں اپنی باڈی لینگویج کو بہتر بنانے کی ضرورت تھی جو ہم نے کی ۔ بین الاقوامی سطح پر ہرکرکٹ ٹیم بہتر ہے، اس لئے ہمیں اسے شکست دینے کے لئے سخت محنت کرنے کی ضرورت ہے۔ چاہے مقابلہ گھریلو میدان پر ہی کیوں نہ ہو۔ اس ذہنیت کے ساتھ کھیلنا ضروری تھا اور یہی ہماری ٹیم کی خصوصیت بنی۔


انہوں نے کہاکہ روہت نے چنئی میں دوسرے ٹیسٹ میچ میں یادگار اننگز کھیلی اورسالوں سے ہمارے سب سے زیادہ قابل اعتماد کھلاڑی روی چندرن اشون اپنی عمدہ کارکردگی کی بدولت مین آف دی سیریزمنتخب ہوئے۔ اب ہم ورلڈ ٹیسٹ چیمپیئن شپ کے فائنل میں ہیں، جس کے تعلق سے طویل عرصے سے قیاس آرائیاں تھیں، لیکن اب یہ سچ ہوگیا ہے۔


وہیں اگر چوتھے ٹیسٹ میچ کے اسکور کی بات کریں تو پہلی اننگز میں انگلینڈ کی ٹیم 75 اوورس میں صرف 205 رن ہی بناسکی ۔ اس کے جواب میں ہندوستان نے پہلی اننگز میں 365 رن بنائے ۔ پنت نے شاندار 101 رن بنائے ، لیکن کھیل کے تیسرے دن واشنگٹن سندر اپنی سنچری پوری نہیں کرسکے اور وہ 96 رنوں پر ناٹ آوٹ رہے ۔ اکشر پٹیل نے بھی 43 رنوں کی اچھی اننگز کھیلی ۔

انگلینڈ کی دوسری اننگز بھی مایوس کن رہی اور پوری ٹیم 135 رن پر ہی ڈھیر ہوگئی ۔ سلامی بلے بازی کرالی صرف پانچ رن بناکر اشون کے شکار بن گئے ۔ اس کے بعد اشون نے جانی بیرسٹو کو بھی پہلی ہی گیند پر آوٹ کردیا ۔ سبلے بھی 21 گیندوں تک ہی وکٹ پر ٹک پائے اور انہیں اکشر پٹیل نے آوٹ کیا ۔ بین اسٹوکس سے انگلینڈ کو اچھی بلے بازی کی امید تھی ، لیکن اس آل راونڈر نے ٹیم کو مایوس کیا ۔ اسٹوکس نے نو گیندوں پر دو رن بنائے ۔

آلی پوپ کو بھی اکشر پٹیل نے پنت کے ہاتھوں اسٹمپ آوٹ کرادیا ۔ انگلینڈ کو سب سے بڑا جھٹکا اشون نے دیا ، جنہوں نے کپتان جو روٹ کو 30 کے نجی اسکور پر ایل بی ڈبلیو آوٹ کیا ۔ روٹ کے آوٹ ہوتے ہی انگلینڈ نے صرف 65 رنوں پر 6 وکٹ گنوادئے ۔ بین فوکس اور ڈین لارینس نے ضرور کچھ جدوجہد کی ، لیکن اکشر پٹیل نے پہلے فوکس اور اس کے بعد بیس کو آوٹ کرکے اننگز میں اپنے پانچ وکٹ پورے کئے ۔ اس کے بعد اشون نے انگلینڈ کے جیک لیچ اور ڈین لارینس کو ایک ہی اوور میں آوٹ کرکے اپنے پانچ وکٹ پورے کئے اور اس کے ساتھ ہی ہندوستان کو اننگز اور 25 رنوں سے بڑی جیت مل گئی ۔

نیوز ایجنسی یو این آئی کے ان پٹ کے ساتھ ۔ 
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Mar 06, 2021 09:11 PM IST