ہوم » نیوز » اسپورٹس

IPL 2020 : راجستھان نے چنئی کو سات وکٹوں سے دی مات ، ٹیبل پوائنٹس میں آخری پوزیشن پر پہنچی CSK

راجستھان کی دس میچوں میں یہ چوتھی جیت ہے اور وہ آٹھ پوائنٹس کے ساتھ پانچویں مقام پر پہنچ گئی ہے ۔ حالانکہ پلے آف کے لئے ابھی اسے بچے ہوئے میچ جیتنے ہوں گے ۔ چنئی کو دس میچوں میں ساتویں شکست کا سامنا کرنا پڑا اور وہ فہرست میں آٹھویں مقام پر کھسک گئی ہے

  • UNI
  • Last Updated: Oct 19, 2020 11:52 PM IST
  • Share this:
IPL 2020 : راجستھان نے چنئی کو سات وکٹوں سے دی مات ، ٹیبل پوائنٹس میں آخری پوزیشن پر پہنچی CSK
IPL 2020 : راجستھان نے چنئی کو سات وکٹوں سے دی مات ، ٹیبل پوائنٹس میں آخری پوزیشن پر پہنچی CSK

چنئی سپرکنگس کو اپنے کپتان مہندر سنگھ دھونی کے 200 ویں میچ میں مایوس کن بلے بازی کی وجہ سے راجستھان رائلس کے ہاتھوں پیر کو سات وکٹ سے زبردست شکست کا سامنا کرنا پڑا ۔ چنئی کی امیدوں کو اس شکست سے گہرا صدمہ پہنچا جبکہ راجستھان نے اس ہمت بڑھانے والی فتح سے اپنی امیدوں کو برقرار رکھا۔ راجستھان نے اپنے اسپنروں کی شاندار کارکردگی سے چنئی کو بیس اووروں میں پانچ وکٹ پر 125 رنوں کے معمولی اسکور پر روک دیا اور پھر 17.3 اووروں میں تین وکٹ پر 126 رن بنا کر یکطرفہ جیت حاصل کرلی ۔


راجستھان کی دس میچوں میں یہ چوتھی جیت ہے اور وہ آٹھ پوائنٹس کے ساتھ پانچویں مقام پر پہنچ گئی ہے ۔ حالانکہ پلے آف کے لئے ابھی اسے بچے ہوئے میچ جیتنے ہوں گے ۔ چنئی کو دس میچوں میں ساتویں شکست کا سامنا کرنا پڑا اور وہ فہرست میں آٹھویں مقام پر کھسک گئی ہے ۔ چنئی اب پلے آف کےمقابلہ سے باہر ہوچکی ہے اور کوئی چمتکار ہی اسے پلے آف میں پہنچا سکتی ہے ۔


چنئی کے لئے چھوٹے اسکور کا بچاؤ کرتے ہوئے ایک امید تب تک جگی تھی جب اس نے راجستھان کے تین وکٹ محض اٹھائیس رن پر گرا دئے تھے ، لیکن کپتان اسٹیو اسمتھ اور جوس بٹلر نے اس کے بعد محتاط انداز میں کھیلتے ہوئے راجستھان کو جیت کی منزل تک پہنچا دیا ۔ بٹلر نے جارحانہ تیوروں کے ساتھ کھیلتے ہوئے محض 48 گیندوں پر سات چوکے اور دو چھکے لگا کر ناٹ آوٹ 70 رن لگائے اور ٹیم کو آسان جیت دلائی ۔


دھونی کے لئے انفرادی طور سے یہ میچ کامیابی والا رہا ، لیکن ٹیم کے لحاظ سے مایوس کن رہا ۔
دھونی کے لئے انفرادی طور سے یہ میچ کامیابی والا رہا ، لیکن ٹیم کے لحاظ سے مایوس کن رہا ۔


اسمتھ صبر کے ساتھ کھیلتے ہوئے 34 گیندوں پر دو چوکوں کی مدد سے 26 رن بنا کر ناٹ آوٹ رہے ۔ بٹلر اور اسمتھ نے چوتھے وکٹ کے لئے 98 رن کی شراکت داری کی ۔ بین اسٹوکس گیارہ گیندوں میں تین چوکوں کی مدد سے 19، روبن اتھپا چار اورسنجو سیمسن کھاتہ کھولے بغیر آؤٹ ہوئے ۔ لیکن اس کے بعد بٹلر اور اسمتھ نے چنئی کو کوئی اور موقع نہیں دیا ۔ دیپک چاہر نے دو اور جوش ہیزل ووڈ نے ایک وکٹ لیا ۔

دھونی کے لئے انفرادی طور سے یہ میچ کامیابی والا رہا ، لیکن ٹیم کے لحاظ سے مایوس کن رہا ۔ دھونی کا آئی پی ایل میں یہ 200 واں میچ تھا اور یہ کامیابی حاصل کرنے والے پہلے کھلاڑی بنے ۔ دھونی نے اپنی 28 رن کی اننگز کے دوران چنئی کی طرف سے کھیلتے ہوئے 4000 رن بھی پورے کئے۔

انہوں نے راجستھان کی اننگز میں دو کیچ لپکے اور آئی پی ایل میں وکٹ کے پیچھے 150 شکار پورے کرنے والے پہلے وکٹ کیپر بنے ۔ لیکن ٹیم کی شکست تین بار کے چمپئن کپتان کے لئے مایوس کن رہی ۔ دھونی نے آئی پی ایل میں اپنا پہلا، 50واں ، 100 واں، 150 واں، میچ جیتا تھا ، لیکن 200 واں میچ ہار گئے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Oct 19, 2020 11:52 PM IST