ہوم » نیوز » اسپورٹس

پاکستان کے کرکٹر عمر اکمل پر گھر کے باہر حملہ ، برطانیہ کا بھی ایک شخص حراست میں

پاکستان کے کرکٹر عمر اکمل (Umar Akmal) پر گھر کے باہر دو لوگوں نے حملہ کیا ۔ حالانکہ حملہ کرنے والے دونوں افراد کرکٹ فین بتائے جارہے ہیں ۔ سیلفی لینے کے دوران یہ واقعہ پیش آیا ۔ پولیس نے اس معاملہ میں دولوگوں کو حراست میں لیا ہے ۔

  • Share this:
پاکستان کے کرکٹر عمر اکمل پر گھر کے باہر حملہ ، برطانیہ کا بھی ایک شخص حراست میں
پاکستان کے کرکٹر عمر اکمل پر گھر کے باہر حملہ ، برطانیہ کا بھی ایک شخص حراست میں ۔ (UMAR AKMAL INSTAGRAM)

پاکستانی کرکٹر عمر اکمل پر گھر کے باہر حملہ ہوا ہے ۔ اس بارے میں کھلاڑی نے پولیس میں شکایت درج کرائی ہے ، جس کے بعد پولیس نے دونوں کو حراست میں لیا ہے ۔ حراست میں لئے گئے دو میں سے ایک شخص برطانیہ کا ہے ۔ حالانکہ عمر اکمل پہلے بھی تنازعات میں رہ چکے ہیں ۔ ان پر بدعنوانی کے معاملات کو چھپانے کا الزم لگا تھا ۔ اس کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ نے ان پر 18 مہینے کی پابندی عائد کردی تھی ۔


جانکاری کے مطابق عمر اکمل پر حملہ کرنے والے دونوں افراد کرکٹر کے فینس ہیں ۔ وہ ان کے ساتھ سیلفی رہے تھے ، لیکن اس درمیان کہا سنی ہونے کے بعد یہ واقعہ پیش آیا ۔ عمر اکمل نے پولیس کو معاملہ سے وابستہ ویڈیو ثبوت بھی دیا ہے ۔ پولیس نے کرکٹر کی شکایت کے بعد دو افراد کو حراست میں لے لیا ۔ حراست میں لئے گئے افراد میں سے ایک برطانیہ اور ایک پاکستان کا ہے ۔ یہ معاملہ ان کے کراچی میں واقع گھر کے باہر پیش آیا ۔


بورڈ کرچکا ہے معطل


وہیں دوسرے فریق کے لوگوں نے عمر اکمل پر الزام لگایا ہے کہ انہوں نے سیلفی لینے کے دوران کچھ لوگوں کے ساتھ مل کر ان کے ساتھ مار پیٹ کی ۔ معاملہ کی جانچ جاری ہے ۔ اس سے پہلے پاکستانی کرکٹ بورڈ نے گزشتہ دنوں عمر اکمل کا ایک ویڈیو جاری کیا تھا ، جس میں عمر اکمل نے اپنے ان کاموں کیلئے کرکٹ فینس سے معافی مانگی تھی ، جن کو لے کر ان پر پابندی عائد کردی گئی تھی ۔ پاکستان سپرلیگ سیزن پانچ سے پہلے مشتبہ سرگرمیوں میں شامل ہونے کیلئے پی سی بی کے ذریعہ قصوروار پائے جانے کے بعد عمر اکمل کو معطل کردیا گیا تھا ۔

بتادیں کہ عمر اکمل پہلے بھی تنازعات میں رہ چکے ہیں ۔ اپنی پہلی ٹیسٹ اننگز میں ہی سنچری بنانے والے عمر اکمل ڈسپلن شکنی کرنے والے کرکٹر رہے ہیں ۔ پی سی بی کے سابق چیئرمین نجم سیٹھی نے تو انہیں ذہنی امراض کے ڈاکٹر سے علاج کروانے تک کا مشورہ دیدیا تھا ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 10, 2021 06:35 PM IST