உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    محمد سمیع کی کورونا رپورٹ آئی نگیٹو، BCCI کے ٹیم اعلان سے ایک گھنٹے بعد آئی 'اچھی خبر'

    محمد سمیع کی کورونا رپورٹ آئی نگیٹو، BCCI کے ٹیم اعلان سے ایک گھنٹے بعد آئی 'اچھی خبر' (Shami Instagram)

    محمد سمیع کی کورونا رپورٹ آئی نگیٹو، BCCI کے ٹیم اعلان سے ایک گھنٹے بعد آئی 'اچھی خبر' (Shami Instagram)

    IND vs SA T20I Series: ٹی ٹوینٹی ورلڈ کپ سے پہلے ہندوستانی کرکٹ ٹیم کیلئے ایک اچھی خبر سامنے آئی ہے ۔ ہندوستان کے اسٹار تیز گیند باز محمد سمیع کی کورونا وائرس کے انفیکشن کی جانچ رپورٹ نگیٹو آئی ہے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Mumbai | New Delhi | Chennai
    • Share this:
      نئی دہلی : ٹی ٹوینٹی ورلڈ کپ سے پہلے ہندوستانی کرکٹ ٹیم کیلئے ایک اچھی خبر سامنے آئی ہے ۔ ہندوستان کے اسٹار تیز گیند باز محمد سمیع کی کورونا وائرس کے انفیکشن کی جانچ رپورٹ نگیٹو آئی ہے ۔ اس کی جانکاری انہوں نے خود دی ہے ۔ 32 سال کے اس گیند باز نے انسٹاگرام اسٹوری میں اپنی نگیٹو رپورٹ بھی پوسٹ کی ہے ۔ محمد سمیع دس دن پہلے اس وائرس کی زد میں آئے تھے ۔ اس کے بعد وہ آسٹریلیا اور پھر جنوبی افریقہ کے ساتھ ہونے والی ٹی ٹوینٹی سیریز سے باہر ہوگئے تھے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: پہلے لیا پاکستان کے کپتان بابر اعظم کا وکٹ، اب ٹیم انڈیا کے اسپنر روی بشنوئی نے کھولا راز


      بتادیں کہ اس سے کچھ گھنٹے پہلے ہی ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ نے جنوبی افریقہ کے خلاف تین میچوں میں کی ٹی ٹوینٹی بین الاقوامی سیریز کے لئے محمد سمیع کی جگہ تجربہ کار گیند باز امیش یادو کو ٹیم میں شامل کیا ہے ۔ اس سے پہلے بھی آسٹریلیا کے خلاف بھی یادو کو طویل عرصہ کے بعد کرکٹ کے چھوٹے فارمیٹ میں واپسی کرنے کا موقع ملا تھا، لیکن وہ کچھ خاص کردار ادا نہیں کرسکے تھے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: ٹی20 عالمی کپ: شاہد آفریدی نے کہا، پاکستان کے پاس ہارڈک پانڈیا جیسا فنیشر نہیں


      سمیع نے اپنی کورونا جانچ رپورٹ کی تصویر کو شیئر کرتے ہوئے لکھا: نگیٹو ۔ بتادیں کہ وہ 17 ستمبر کو کورونا پازیٹیو ہوگئے تھے ۔ اس کے بعد انہیں آسٹریلیا کے خلاف تین میچوں کی گھریلو سیریز کی ٹیم سے باہر ہوگئے تھے ۔

       

      محمد سمیع ٹی ٹوینٹی ورلڈ کپ کیلئے ہندوستانی ٹیم کے اسٹینڈ بائی لسٹ میں شامل کھلاڑی ہیں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: