ہوم » نیوز » اسپورٹس

IPL 2020 سے پہلے بڑے تنازع میں پھنسے ایم ایس دھونی ، فینس نے کہا : شرم کرو ، جانئے کیا ہے معاملہ

انڈین پریمیئر لیگ (IPL 2020) کے تیرہویں سیزن سے پہلے چنئی سپر کنگس کے کپتان ایم ایس دھونی چینی کمپنی اوپو کے اشتہار (MS Dhoni Oppo) میں نظر آئے ۔

  • Share this:
IPL 2020 سے پہلے بڑے تنازع میں پھنسے ایم ایس دھونی ، فینس نے کہا : شرم کرو ، جانئے کیا ہے معاملہ
IPL 2020 سے پہلے بڑے تنازع میں پھنسے ایم ایس دھونی ، فینس نے کہا : شرم کرو ، جانئے کیا ہے معاملہ

آئی پی ایل 2020 سے پہلے چنئی سپرکنگس کے کپتان مہندر سنگھ دھونی تنازعات میں پھنستے نظر آرہے ہیں ۔ سوشل میڈیا پر مسلسل دھونی کے خلاف بیان بازی کا دور جاری ہے ۔ دراصل ایم ایس دھونی کے ایک اشہتار کا ٹیزر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ ہوا ہے ۔ دھونی چین کی موبائل کمپنی اوپو کے اشہتار میں نظر آرہے ہیں ۔ دھونی کے اس اشتہار سے فینس کافی ناراض ہوگئے ہیں اور اس پر سخت رد عمل ظاہر کررہے ہیں ۔


چینی کمپنی اوپو کا یہ اشتہار ان کے نئے اوپو رینو 4 پرو کو لے کر ہے ۔ اوپو نے دھونی کے ایک سال بعد واپسی کرنے کی تھیم پر یہ اشتہار بنایا ہے ۔ اوپو دھونی پر ایک خصوصی پروگرام 24 ستمبر کو ریلیز کرسکتا ہے ۔ اوپو نے اپنے ٹویٹر اکاونٹ پر ویڈیو شیئر کرتے ہوئے لکھا : یہ وہ شخص ہے جسے ہم نے گزشتہ ایک سال تک یاد کیا ، کپتان ایم ایس دھونی ہمیں سبھی رکاوٹوں سے لڑنے اور اپنے پیروں پر کھڑا ہونے کی ترغیب دیتے ہیں ۔ 24 ستمبر کو تیار رہئے ان کے اس جذباتی سفر کو دیکھنے کیلئے ۔




چینی کمپنیوں کی ہورہی ہے مخالفت

دھونی کے اوپو کمپنی کے ساتھ اشتہار کرنے پر فینس ان کے خلاف سخت تبصرے کررہے ہیں ۔ بتادیں کہ جب سے گلوان وادی میں ہندوستان اور چینی فوج کے درمیان جھڑپ ہوئی ہے ، تبھی سے چینی کمپنیوں کے خلاف ہندوستانی حکومت اور ملک کے عوام نے مورچہ کھول رکھا ہے ۔ اسی دباو میں بی سی سی آئی کو اپنے آئی پی ایل اسپانسر ویوو کا کنٹریکٹ ایک سال کیلئے سسپینڈ کرنا پڑا تھا ۔



سچن سے بھی ناراض ہیں لوگ

بتادیں کہ سچن تیندولکر کے خلاف بھی سوشل میڈیا پر لوگوں نے محاذ کھول رکھا ہے ۔ دراصل سچن تیندولکر بھی چینی کمپنی پے ٹی ایم فرسٹ کے برانڈ امبیسڈر بنے ہیں ۔ پے ٹی ایم کا براہ راست تعلق چین سے ہے ۔ چینی کمپنی علی بابا کی پے ٹی ایم میں بڑی سرمایہ کاری ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Sep 18, 2020 10:02 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading