ہوم » نیوز » اسپورٹس

INDvsNZ : نیوزی لینڈ نے کلین سویپ کرکے برابر کیا حساب ، ٹیم انڈیا کو ملی 31 سال کی سب سے شرمناک ہار

ہندستان نے پہلے بلے بازی کرتے ہوئے 50 اوور میں سات وکٹ پر 296 رن کا مضبوط اسکور بنایا ، لیکن فارم میں چل رہے کیوی بلے بازوں کے سامنے یہ اسکور بھی چھوٹا ثابت ہوا ۔ میزبان ٹیم نے 47.1 اوور میں پانچ وکٹ پر 300 رن بنا کر یکطرفہ کامیابی حاصل کر لی ۔

  • UNI
  • Last Updated: Feb 11, 2020 07:12 PM IST
  • Share this:
INDvsNZ : نیوزی لینڈ نے کلین سویپ کرکے برابر کیا حساب ، ٹیم انڈیا کو ملی 31 سال کی سب سے شرمناک ہار
نیوزی لینڈ نے کلین سویپ کرکے برابر کیا حساب ، ٹیم انڈیا کو ملی 31 سال کی سب سے شرمناک ہار

لوکیش راہل (112) کی شاندار سنچری بھی ہندستان کو تیسرے اور آخری ون ڈے میں منگل کو شکست سے نہیں بچا سکی اور میزبان نیوزی لینڈ نے اوپنر ہنری نکولس (80) ، مارٹن گپٹل (66) اور کولن ڈی گرینڈهوم (ناٹ آؤٹ 58) کی نصف سنچریوں کی بدولت اپنا مقابلہ پانچ وکٹ سے جیت کر تین میچوں کی سیریز کو 3-0 سے کلین سویپ کر لیا۔ نیوزی لینڈ نے اس کلین سویپ سے ہندوستان سے ٹی -20 سیریز میں ملی 0-5 کی کلین سویپ کا بدلہ چکا دیا اور ساتھ ہی ہندوستان کے خلاف تین یا اس سے زیادہ میچوں کی ون ڈے سیریز کے لیے پہلی بار کلین سویپ کر لی ۔ ہندوستان نے گزشتہ نیوزی لینڈ کے دورے میں ون ڈے سیریز 4-1 سے جیتی تھی ، لیکن اس بار اسے تینوں ہی میچوں میں شکست کا سامنا کرنا پڑا ۔


ہندستان نے پہلے بلے بازی کرتے ہوئے 50 اوور میں سات وکٹ پر 296 رن کا مضبوط اسکور بنایا ، لیکن فارم میں چل رہے کیوی بلے بازوں کے سامنے یہ اسکور بھی چھوٹا ثابت ہوا ۔ میزبان ٹیم نے 47.1 اوور میں پانچ وکٹ پر 300 رن بنا کر یکطرفہ کامیابی حاصل کر لی ۔ ٹی  20 اور ون ڈے سیریز ختم ہونے کے بعد دونوں ٹیمیں اب 21 فروری سے شروع ہونے والی دو ٹیسٹ میچوں کی سیریز میں اترےگی ۔ پہلا ٹیسٹ 21 فروری سے ویلنگٹن میں اور دوسرا ٹیسٹ 29 فروری سے کرائسٹ چرچ میں کھیلا جائے گا۔ ہندستان کے ون ڈے تاریخ میں یہ تیسرا موقع ہے جب اس کے تین یا اس سے زیادہ میچوں کی سیریز میں کلین سویپ کا سامنا کرنا پڑا ۔ ویسٹ انڈیز نے 1983-84 میں ہندوستان کو 5-0 سے اور پھر 1988-89 میں 5-0 سے شکست دی تھی۔ ہندوستان کو اس طرح 31 سال بعد کلین سویپ کا سامنا کرنا پڑا۔ اس دوران ہندوستان کو 2006-07 میں جنوبی افریقہ سے پانچ میچوں کی سیریز 0-4 سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا ۔ تاہم اس سیریز کا ایک میچ منسوخ رہا تھا ۔


ہندستان پہلی بار نیوزی لینڈ سے 0-3 سے ہارا ہے۔ ہندستان کے لئے یہ ہار اس لئے شرمناک رہی کیونکہ اس نے ٹی -20 سیریز 5-0 سے جیتی تھی اور اس ون ڈے سیریز میں جیت کا مضبوط دعویدار مانا جا رہا تھا ۔ اس سیریز میں ہندوستان کی سب سے بڑی کمزوری اس کی بولنگ رہی اور اس کے نمبر ایک ون ڈے بولر جسپريت بمراه کو مکمل سیریز میں ایک بھی وکٹ نہیں ملا۔ بمراه نے اس میچ میں 10 اوور میں 50 رنز دیے اور خالی ہاتھ رہے۔ تیز گیند باز نوديپ سینی آٹھ اوور میں 68 رن لٹاكر کوئی وکٹ نہیں لے پائے ۔ شاردل ٹھاکر نے 9.1 اوورس میں 87 رنز لٹاكر محض ایک وکٹ لیا۔ لیگ اسپنر یجویندر چہل 10 اوور میں 47 رن پر تین وکٹ لے کر سب سے کامیاب رہے ۔ لیفٹ آرم اسپنر رویندر جڈیجہ نے 10 اوور میں 45 رن پر ایک وکٹ لیا۔


بڑے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے گپٹل اور نکولس نے پہلے وکٹ کے لئے 16.3 اوور میں 106 رن جوڑ کر میزبان کو ٹھوس بنیاد دی ۔ گپٹل نے 46 گیندوں پر 66 رنز کی دھماکہ خیز اننگز میں چھ چوکے اور چار چھکے لگائے۔ کپتان کین ولیمسن کندھے کی چوٹ کی وجہ سے پہلے دو میچوں میں باہر رہے تھے ، لیکن اس میچ میں لوٹ کر انہوں نے 31 گیندوں میں دو چوکوں کی مدد سے 22 رنز بنائے ۔ چہل نے گپٹل کو بولڈ کر کے ہندوستان کو پہلی کامیابی دلائی۔ چہل نے پھر ولیمسن کو مینک اگروال کو ہاتھوں کیچ کراکر دوسرا وکٹ لیا ۔ ہندوستان کے لئے اب تک سر درد رہے راس ٹیلر کو جڈیجہ نے کپتان وراٹ کوہلی کے ہاتھوں کیچ کرا دیا ۔ ٹیلر نے 18 گیندوں پر 12 رنز بنائے ۔ ٹھاکر نے نکولس کو وکٹ کے پیچھے راہل کے ہاتھوں کیچ کرایا ۔ نکولس نے 103 گیندوں پر نو چوکوں کی مدد سے 80 رنز بنائے ۔ نیوزی لینڈ کا چوتھا وکٹ 189 کے اسکور پر گرا ۔ اس وقت ہندستان کو جیت کی امید نظر آنے لگی تھی ۔ جیمز نیشام 25 گیندوں میں 19 رنز بنا کر چہل کا تیسرا شکار بنے اور ان کا وکٹ 40 ویں اوور میں 220 کے اسکور پر گرا۔ لیکن ٹام لاتھم اور گرینڈهوم نے چھٹے وکٹ کے لئے 80 رن کی ناٹ آؤٹ ساجھےداری کرکے 17 گیند باقی رہتے ہی میچ ختم کر دیا۔

گرینڈهوم نے 28 گیندوں پر چھ چوکے اور تین چھکے اڑاتے ہوئے ناقابل شکست 58 رنز بنائے جبکہ لاتھم نے 34 گیندوں پر تین چوکوں کے سہارے ناٹ آؤٹ 32 رنز بنائے۔ نکولس کو پلیئر آف دی میچ اور ٹیلر کو پلیئر آف دی سیریز کا ایوارڈ ملا ۔ اس مقابلے میں وکٹ کیپر بلے باز لوکیش راہل (112) کی شاندار سنچری آخر میں ضائع چلی گئی ۔ گیند بازوں نے ان کی محنت پر پانی پھیر دیا۔ راہل نے 113 گیندوں میں نو چوکے اور دو چھکوں کی مدد سے 112 رنز بنائے۔ شريس ایئر نے 63 گیندوں میں 62 رن کی اننگز میں نو چوکے لگائے ۔ اوپنر پرتھوی شا نے 42 گیندوں پر 40 رنز میں تین چوکے اور دو چھکے لگائے جبکہ منیش پانڈے نے 48 گیندوں میں دو چوکوں کے سہارے 42 رن بنائے ۔ کپتان وراٹ کوہلی نے پھر مایوس کیا اور 12 گیندوں میں نو رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے ۔ مینک اگروال ایک رن بنا کر آؤٹ ہوئے جبکہ جڈیجہ آٹھ رن پر ناٹ آؤٹ رہے۔ شاردل ٹھاکر نے سات اور نوديپ سینی نے ناٹ آؤٹ آٹھ رن بنائے۔ نیوزی لینڈ کی جانب سے بینیٹ نے 10 اوور میں 64 رن دے کر چار وکٹیں حاصل کیں ۔ جیمیسن نے 53 رنز اور نیشام نے 50 رن دے کر ایک ایک وکٹ لیا۔
First published: Feb 11, 2020 07:12 PM IST
  • India
  • World

India

  • Active Cases

    6,039

     
  • Total Confirmed

    6,761

     
  • Cured/Discharged

    515

     
  • Total DEATHS

    206

     
Data Source: Ministry of Health and Family Welfare, India
Hospitals & Testing centres

World

  • Active Cases

    1,205,144

     
  • Total Confirmed

    1,682,220

    +78,568
  • Cured/Discharged

    375,093

     
  • Total DEATHS

    101,983

    +6,291
Data Source: Johns Hopkins University, U.S. (www.jhu.edu)
Hospitals & Testing centres