உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Asia cup 2022: پاکستان کے خلاف میچ سے پہلے ٹیم انڈیا کی پریشانی میں اضافہ، 19 سال کا پاکستانی گیند باز کرسکتا ہے کھیل خراب

    Asia cup 2022: پاکستان کے پاس شاہین شاہ آفریدی کے علاوہ بھی کئی خطرناک گیند باز ہیں۔

    Asia cup 2022: پاکستان کے پاس شاہین شاہ آفریدی کے علاوہ بھی کئی خطرناک گیند باز ہیں۔

    Asia cup 2022: شاہین شاہ آفریدی کی غیر موجودگی سے ایشیا کپ میں پاکستان کی گیند بازی تھوڑی کمزور ضرور ہوگی، لیکن اس کے پاس ٹیم انڈیا کا ٹینشن بڑھانے والے گیند باز موجود ہیں۔ اس میں 19 سال کا گیند باز بھی شامل ہے، جس نے حال ہی میں نیدر لینڈ کے خلاف ونڈے سیریز میں ڈیبیو کیا اور تین میچوں میں 10 وکٹ حاصل کئے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی: ایشیا کپ کے کوالیفائر مقابلے شروع ہوچکے ہیں۔ چار ٹیموں کے درمیان مین ڈرا میں جگہ بنانے کے لئے زور آزمائش ہو رہی ہے۔ حالانکہ سب کو انتظار 28 اگست کو ہندوستان اور پاکستان کے درمیان ہونے والے ہائی وولٹیج مقابلے کا ہے۔ اس میچ سے پہلے پاکستان کو بڑا جھٹکا لگا ہے۔ تیز گیند باز شاہین شاہ آفریدی گھٹنے کی چوٹ کے سبب ایشیا کپ سے ہی باہر ہوگئے ہیں۔

      شاہین شاہ آفریدی کے زخمی ہونے کے سبب بھلے ہی ٹیم انڈیا نے راحت کی سانس لی ہوگی، لیکن اس ایک گیند باز کی غیر موجودگی سے ہندوستان کی پریشانی کم ہوجائے گی، ایسا نہیں لگتا ہے۔ کیونکہ پاکستان کے پاس تیز گیند بازوں کی بھرمار ہے، جو ایشیا کپ کے مقابلے میں ٹیم انڈیا کی ٹینشن بڑھا سکتے ہیں۔ ایسے ہی ایک گیند باز ہیں 19 سال کے نسیم شاہ۔

      نسیم شاہ پاکستانی ٹیم کے ساتھ نیدر لینڈ دورے پر گئے ہیں اور انہوں نے اسی سیریز میں ہی اپنا ونڈے ڈیبیو کیا ہے، لیکن تین میچوں میں ہی اس گیند باز نے اپنی قابلیت ثابت کردی۔ نسیم شاہ نے نیدر لینڈ کے خلاف تیسرے اور آخری ونڈے میں کمال کی گیند بازی کی۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      Asia Cup 2022: ٹی20 میں 100 وکٹ حاصل کرنے والے تیز گیند باز کو ملی پاکستانی ٹیم میں جگہ، پڑھیں پورا ٹی20 کیریئر

      یہ بھی پڑھیں۔

      Asia cup 2022: پاکستان کے خلاف میچ سے پہلے ٹیم انڈیا کی پریشانی میں اضافہ، 19 سال کا گیند باز کرسکتا ہے کھیل خراب 

      اس میچ میں پاکستانی ٹیم پر شکست کا خظرہ منڈلا رہا تھا۔ مہمان ٹیم نے پہلے بلے بازی کرتے ہوئے 206 رن ہی بنائے تھے۔ اس ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے ایک وقت نیدر لینڈ کی ٹیم نے 6 وکٹ کے نقصان پر 172 رن بنا لئے تھے۔ اسے آخری 30 گیندوں میں 35 رنوں کی ضرورت تھی اور ٹام کپور 61 رن بناکر کھیل رہے تھے۔ لیکن، ان کے آوٹ ہوتے ہی نسیم شاہ نے نیدر لینڈ پر شکنجہ کس دیا اور 49ویں اوور میں 4 گیندوں کے اندر 2 وکٹ حاصل کرکے نیدرلینڈ کی اننگ کو 197 رنون پر ہی سمیٹ دیا۔ اس طرح نیدر لینڈ کی ٹیم 9 رن سے میچ ہار گئی اور پاکستان نے تیسرا اور آخری ونڈے جیت لیا اور سیریز میں نیدر لینڈ کا کلین سوئپ کردیا۔

      نسیم شاہ نے حاصل کئے 5 وکٹ

      نیدر لینڈ کے خلاف ’مین آف دی میچ‘ رہے نسیم شاہ نے 33 رن دے کر 5 وکٹ حاصل کئے۔ وہیں، محمد وسیم نے جونیئر نے 36 رن دے کر 4 وکٹ اپنے نام کئے۔ اس جیت کے ساتھ پاکستان نے تین میچوں کی سیریز 0-3 سے کلین سوئپ کی۔ کپتان بابر اعظم نے 125 گیندوں پر 7 چوکے اور 2 چھکے لگائے۔ وہیں، فخر زماں نے 26 اور محمد نواز نے 27 رنوں کا تعاون دیا۔ نیدر لینڈ کے سلامی بلے باز وکرم جیت سنگھ (50 رن) اور ٹام کپور (62 رن) کی نصف سنچری اننگ بھی ٹیم کو جیت تک نہیں لے جاسکیں۔ وکرم جیت نے 85 گیندوں کی اپنی اننگ میں 7 چوکے لگائے۔ ٹام کپور نے 105 گیندیں کھیلیں اور 4 چوکوں کی مدد سے 62 رن بنائے۔ تیجا نے 32 گیندوں پر 2 چوکے لگائے۔ تیجا اور ٹام کپور نے چھٹے وکٹ کے لئے 56 رن جوڑے۔ ان کے علاوہ موسیٰ احمد (11) کی دہائی کے اعدادوشمار کو چھو سکے۔ پاکستان نے بھی 6 گیند بازوں کو آزمایا، لیکن کامیابی نسیم شاہ اور محمد وسیم کو مل سکیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: