உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    16 مئی: آئی پی ایل تاریخ کا کالا دن، میچ فکسنگ کے الزام میں سری سنت سمیت 3 ہندوستانی کرکٹر ہوئے تھےگرفتار

    16 مئی: آئی پی ایل تاریخ کا کالا دن، میچ فکسنگ کے الزام میں سری سنت سمیت 3 ہندوستانی کرکٹر ہوئے تھے گرفتار

    16 مئی: آئی پی ایل تاریخ کا کالا دن، میچ فکسنگ کے الزام میں سری سنت سمیت 3 ہندوستانی کرکٹر ہوئے تھے گرفتار

    آئی پی ایل دنیا کی مشہور ٹی20 کرکٹ لیگ میں شمار ہے۔ یہ دنیا کی سب سے امیر کرکٹ لیگ ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اس میں دنیا کے عظیم کھلاڑی کھیلتے رہے ہیں، جس میں کئی تو اپنی اپنی قومی ٹیم کے کپتان بھی شامل ہیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی: آئی پی ایل دنیا کی مشہور ٹی20 کرکٹ لیگ میں شمار ہے۔ یہ دنیا کی سب سے امیر کرکٹ لیگ ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اس میں دنیا کے عظیم کھلاڑی کھیلتے رہے ہیں، جس میں کئی تو اپنی اپنی قومی ٹیم کے کپتان بھی شامل ہیں۔ اس لیگ پر حالانکہ 9 سال پہلے میچ فکسنگ کا داغ لگا تھا۔ اتنا ہی نہیں، فکسنگ کے الزام ہندوستان کے 3 کرکٹروں کو گرفتار کو گرفتار تک کیا گیا، جن میں اس وقت کے اسٹار تیز گیند باز ایس شری سنت بھی شامل تھے۔ 16 مئی کو اس لیگ کا کالا دیوس بھی کہا جاسکتا ہے۔

      آئی پی ایل کے چھٹے سیزن میں فکسنگ کا بھوت نظر آیا اور کئی کھلاڑیوں پر اس میں شامل ہونے کے الزام لگے۔ سابق چمپئن راجستھان رائلس کے 3 کھلاڑیوں ایس شری سنت، انکت چوہان اور اجیت چندیلا کو دہلی پولیس نے گرفتار کیا تھا۔ اس کے علاوہ بی سی سی آئی کے سابق صدر اور چنئی سپرکنگس کے مالک این شری نواسن کے داماد گروناتھ میپن پر بھی دھوکہ دہی کے الزام لگے۔ اسی کے سبب شری نواسن پر بھی عہدہ چھوڑنے کا دباو بن گیا تھا۔

      شری سنت سمیت ان تینوں کھلاڑیوں کے خلاف لوگ سڑکوں پر اترے اور کافی جگہ احتجاجی مظاہرے ہوئے۔ تب لوگوں کا کہنا تھا کہ کرکٹ کو وہ مذہب کی طرح مانتے ہیں اور ایسے میں کرکٹ کو بچانا چاہئے۔ کئی کرکٹ مداحوں نے آئی پی ایل پر ہی پابندی لگانے کا مطالبہ کیا تھا۔ حالانکہ لیگ تو لگتی رہی، لیکن راجستھان رائلس پر 2 سال کی پابندی لگا دی گئی۔

      اس کے علاوہ مہندر سنگھ دھونی کی کپتانی والی ٹیم چنئی سپرکنگس پر بھی 2 سال کی پابندی لگی۔ آئی پی ایل میں فکسنگ کے سبب بی سی سی آئی نے گرفتار ہوئے تینوں کھلاڑیوں پر بڑی کارروائی کی اور ان پر تاحیات پابندی لگا دی گئی۔ اسی کے سبب ان کا کیریئر برباد ہوگیا اور پھر کبھی قومی ٹیم میں کھیل نہیں پائے۔

      سری سنت نے حالانکہ لمبی قانونی لڑائی لڑی۔ وہ کرکٹ کے میدان پر واپسی میں کامیاب تو رہے، لیکن پھر کبھی بلو جرسی کے خواب ادھورا ہی رہ گیا۔ وہ کیرلا کے لئے وجے ہزارے ٹرافی کے گزشتہ سیزن (سال 2021) میں کھیلے، لیکن انکت چوہان اور چندیلا کا کیریئر چوپٹ ہوگیا۔ عدالت نے ان دونوں کو بعد میں کلین چٹ تو دی، لیکن بی سی سی آئی نے ان پر لگی پابندی کو نہیں ہٹائی۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: