ہوم » نیوز » اسپورٹس

پاکستان کے اس بڑے بلے باز کو ہوئی 17 ماہ کی جیل ، کیا تھا یہ گھنونا جرم

جمشید پر فروری 2018 میں دبئی میں پاکستان سپر لیگ میں اسلام آباد یونائیٹڈ اور پشاور زلمی کے درمیان ہوئے مقابلے کے دوران کھلاڑیوں کو بہتر کارکردگی نہیں کرنے کے لئے اکسانے کا الزام ثابت ہوا ہے ۔

  • UNI
  • Last Updated: Feb 08, 2020 11:36 PM IST
  • Share this:
پاکستان کے اس بڑے بلے باز کو ہوئی 17 ماہ کی جیل ، کیا تھا یہ گھنونا جرم
پاکستان کے اس بڑے بلے باز کو ہوئی 17 ماہ کی جیل ، کیا یہ تھا یہ گھنونا جرم

پاکستان (Pakistan) کے بلے باز نصیر جمشید (Nasir Jamshed) کو اسپاٹ فکسنگ  (Spot Fixing) کے الزام میں 17 ماہ کی قید کی سزا سنائی گئی ہے ۔ جمشید کو برطانوی شہری یوسف انور اور محمد اعجاز کے ساتھ سازش رچنے کے الزام میں نیشنل کرائم ایجنسی (این سی اے) نے گرفتار کیا تھا ۔ جمشید کو 17 ماہ ، انور کو 40 ماہ اور اعجاز کو 30 ماہ کی سزا سنائی گئی ہے۔


جمشید پر فروری 2018 میں دبئی میں پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) میں اسلام آباد یونائیٹڈ اور پشاور زلمی کے درمیان ہوئے مقابلے کے دوران کھلاڑیوں کو بہتر کارکردگی نہیں کرنے کے لئے اکسانے کا الزام ثابت ہوا ہے ۔ ان تینوں لوگوں نے اپنا جرم قبول کیا تھا ، جس کے بعد ان لوگوں کو گرفتار کیا گیا تھا ۔ جمشید پر پی ایس ایل میں کھلاڑیوں کو اسپاٹ فکسنگ کے لئے اکسانے کا بھی الزام تھا ۔


جمشید کو 17 ماہ ، انور کو 40 ماہ اور اعجاز کو 30 ماہ کی سزا سنائی گئی ہے۔
جمشید کو 17 ماہ ، انور کو 40 ماہ اور اعجاز کو 30 ماہ کی سزا سنائی گئی ہے۔


انہوں نے شرجيل خان کو اسلام آباد کی ٹیم کے لئے دوسرے اوور میں دو ڈاٹ گیند پھینکنے کے لئے کہا تھا ۔ حالانکہ اس کے لئے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے شرجيل پر پانچ سال کی پابندی عائد کردی تھی ۔ قبل ازیں پی سی بی کی اینٹی کرپشن برانچ نے تحقیقات کے بعد جمشید پر 10 برسوں کی پابندی عائد کردی تھی ۔ جمشید نے پاکستان کے لئے دو ٹیسٹ ، 48 ون ڈے اور 18 ٹی 20 میچ کھیلے ہیں ۔
First published: Feb 08, 2020 09:52 PM IST